உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    امرناتھ مشرا نے مولانا سلمان ندوی پراجودھیا معاملہ میں رشوت مانگنے کا لگایا الزام

    آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ سے نکالے گئے مولانا سلمان ندوی پر شری روی شنکر کے قریبی امرناتھ مشرا نے اجودھیا معاملہ پررشوت مانگنے کا سنگین الزام لگایا ہے۔

    آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ سے نکالے گئے مولانا سلمان ندوی پر روحانی گرو شری شری روی شنکر کے قریبی رہے امرناتھ مشرا نے اجودھیا معاملہ کو لے کر رشوت مانگنے کا سنگین الزام لگایا ہے۔مسٹر مشرا کے مطابق مسٹر ندوی نے راجیہ سبھا کی رکنیت، دو سو ایکڑاراضی اور کروڑوں روپے کی مانگ کی تھی۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      لکھنؤ۔ آل انڈیا مسلم پرسنل لاء بورڈ سے نکالے گئے مولانا سلمان ندوی پر روحانی گرو شری شری روی شنکر کے قریبی رہے امرناتھ مشرا نے اجودھیا معاملہ کو لے کر رشوت مانگنے کا سنگین الزام لگایا ہے۔مسٹر مشرا کے مطابق مسٹر ندوی نے راجیہ سبھا کی رکنیت، دو سو ایکڑاراضی اور کروڑوں روپے کی مانگ کی تھی۔

      دوسری جانب سلمان ندوی نے مسٹر مشرا کے الزامات کو بے بنیاد اور مضحکہ خیز قرار دیتے ہوئے کہا کہ ان پر سازشاً الزام لگائے جا رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ اس طرح کا الزام لگا کر ان کی ساکھ کو خراب کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے۔ ان کی تو مسٹر مشرا سے کبھی ملاقات ہی نہیں ہوئی ہے۔انہوں نے کہا کہ جلد ہی وہ ملک کے معروف علما کے ساتھ یہاں ملاقات کریں گے۔ اس میں پورے ملک سے علما کو مدعو کیا جائے گا۔

      ادھر، اجودھیا کے مندر مسجد تنازعہ کا بات چیت سے حل نکالنے کیلئے شری شری روی شنکر آئندہ 12 مارچ کو ہندو اور مسلم علما سے ملاقات کریں گے۔شری شری کے نزدیکی اور سابق آئی اے ایس افسر ڈاکٹر ایس پی سنگھ نے اسی سلسلہ میں ایک دن پہلے اجودھیا کا دورہ کیا تھا۔ ا نہوں نے هنومان گڑھی  کے مہنت گیان داس اور کچھ دوسرے لوگوں سے ملاقات کی تھی۔
      First published: