ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

جامعہ کے پروفیسر ایس ایم اختر بنائیں گے اجودھیا میں بننے والی مسجد کا نقشہ، رکھیں گے اس بات کا خیال

بتا دیں کہ ڈاکٹر ایس ایم اختر نے لکھنئو یونیورسیٹی سے پڑھائی کی ہے۔ وہ پہلے ایسے اسکالر رہے ہیں جنہیں آرکیٹکچر، ٹاون پلاننگ اور پبلک ایڈمنسٹریشن میں ڈی لٹ کی ڈگری ملی۔ بی ایس سی، ایل ایل بی، پی ایچ ڈی اور ڈی لٹ سبھی ڈگریاں انہوں نے لکھنئو یونیورسیٹی سے حاصل کی ہیں۔

  • Share this:
جامعہ کے پروفیسر ایس ایم اختر بنائیں گے اجودھیا میں بننے والی مسجد کا نقشہ، رکھیں گے اس بات کا خیال
جامعہ کے پروفیسر ایس ایم اختر بنائیں گے اجودھیا میں بننے والی مسجد کا نقشہ

اجودھیا۔ اجودھیا میں رام مندر (Ram Mandir) کی تعمیر شروع ہو گئی ہے اور مسجد کی تعمیر کا کام بھی تیزی پکڑ چکا ہے۔ اجودھیا کے روناہی میں مسجد کی تعمیر کی جائے گی۔ اس کا نقشہ بنانے کے لئے جامعہ ملیہ اسلامیہ  (Jamia Milia Islamia ) کے پروفیسر ڈاکٹر ایس ایم اختر  (Dr SM Akhtar) کو منتخب کیا گیا ہے۔ ڈاکٹر اختر کا آرکیٹیکچر، ٹاون پلاننگ، سوشل سائنس اور ماحولیات کے شعبے میں شاندار تجربہ اور کام رہا ہے۔ وہ جامعہ کے آرکیٹیکچر محکمہ کے صدر ہیں۔ اس موضوع پر وہ کئی کتابیں لکھ چکے ہیں اور اس سے متعلق ملک کے کئی اداروں کی قیادت کر چکے ہیں۔


بتا دیں کہ ڈاکٹر ایس ایم اختر نے لکھنئو یونیورسیٹی سے پڑھائی کی ہے۔ وہ پہلے ایسے اسکالر رہے ہیں جنہیں آرکیٹکچر، ٹاون پلاننگ اور پبلک ایڈمنسٹریشن میں ڈی لٹ کی ڈگری ملی۔ بی ایس سی، ایل ایل بی، پی ایچ ڈی اور ڈی لٹ سبھی ڈگریاں انہوں نے لکھنئو یونیورسیٹی سے حاصل کی ہیں۔ آرکیٹیکچر اور ٹاون پلاننگ پر وہ 7 کتابیں لکھ چکے ہیں۔ 2 اور چھپنے والی ہیں۔


64 سال کے ڈاکٹر اختر کا لکھنئو سے پرانا ناطہ رہا ہے۔ ان کی پیدائش اسی شہر میں ہوئی۔ عیش باغ کے رہنے والے ڈاکٹر اختر نے نیوز 18 سے خاص بات چیت کی۔ اس بات چیت میں انہوں نے بتایا کہ اجودھیا میں بننے والی مسجد انسانیت، ہندستانیت اور اسلام کی مشترکہ مثال ہو گی۔


سوال۔ مسجد کے نقشے میں کن خاص باتوں کا خیال رکھیں گے؟

جواب۔ دیکھئے ابھی تو بہت کچھ کہنا جلدبازی ہو گی لیکن تین خاص باتوں کا دھیان رکھا جائے گا۔ پہلا، انسانیت، دوسرا، ہندستانیت اور تیسرا اسلام۔ دیکھئے، جو بھی زخم ہیں، شکایتیں ہیں اور دوریاں ہیں وہ ختم ہونی چاہئیں۔ دل سے دل جڑنے چاہئیں۔ اس مسجد سے یہ اپروچ میری ہو گی کہ لوگ آپس میں جڑیں۔ اور ظاہر سی بات ہے کہ جب آپ انسانی اقدار کا خیال رکھتے ہیں یا ہندستانیت کا خیال رکھتے ہیں تو آپ اسلام کا بھی خیال کرتے ہیں۔ یہ تینوں چیزیں ایک ہی ہیں۔

سوال۔ اجودھیا میں بننے والی مسجد پر کیا پہلے کی کسی بلڈنگ کی چھاپ ہو گی؟

جواب۔ لوگوں کو ایسا لگتا ہے کہ ہر عمارت پہلے کی کسی دوسری عمارت کی طرح ہوتی ہے یا ہوگی۔ لیکن، فن تعمیرات میں ایسی نقل نہیں ہوتی ہے۔ ہر فن تعمیرات اوریجنل اور نیاپن لئے ہوئے ہوتا ہے۔

سوال۔ آپ کو یہ ذمہ داری کب سونپی گئی؟

جواب۔ آپ سے بات چیت کے چند منٹ پہلے ہی مجھے یہ حکم دیا گیا۔

سوال۔ اس سے پہلے آپ نے اور کن کن عمارتوں کی ڈیزائن کی ہے؟

جواب۔ دیکھئے، ابھی تو جلدبازی میں بتا پانا ممکن نہیں ہے، لیکن تمام تعمیرات میں میں نے تعاون دیا ہے۔

سوال۔ لکھنئو سے کیسا رشتہ رہا ہے؟

جواب۔ لکھنئو میں میری پیدائش ہوئی ہے۔ حضرت گنج میں ابھی بھی میرا دفتر ہے۔

 
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Sep 02, 2020 08:58 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading