ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

سسر سے حلالہ معاملہ : متاثرہ خاتون کو عدالت سے بڑی راحت ، ملزموں کے لئے تمام دروازے بند

سسر کے ساتھ حلالہ کا الزام لگانے والی متاثرہ خاتون کو پیر کو ہراسانی معاملے میں کورٹ سے بڑی راحت ملی ہے۔ پولیس متاثرہ کی جانب سے حلالہ معاملے میں ریپ کا مقدمہ بھی درج کر چکی ہے ۔

  • Share this:
سسر سے حلالہ معاملہ :  متاثرہ خاتون کو عدالت سے بڑی راحت ، ملزموں کے لئے تمام دروازے بند
متاثر ہ خاتون

سسر کے ساتھ حلالہ کا الزام لگانے والی متاثرہ خاتون کو پیر کو ہراسانی معاملے میں کورٹ سے بڑی راحت ملی ہے۔ ملزم فریق کی جانب سے اعتراضات  دائر نہ کرنے پر اے سی جے ایم ۔ پانچ کورٹ نے متاثرہ کے حق میں یکطرفہ فیصلہ سناتے ہوئے ساتھ ستمبر کو کورٹ میں ثبوت پیش کرنے کی تاریخ دی ہے۔


واضح ہو کہ بریلی کی رہنے والی حلالہ متاثرہ نے سال 2017 میں ہراسانی (گھریلو تشدد) کا کیس درج کیا تھا۔ اس میں شوہر ، دیور ، نند ، ساس اور سسر کو ملزم بنایا۔ یہ کیس شوبھی گپتا اے سی جے ایم۔ پانچ کی کورٹ میں چل رہا ہے۔ کورٹ نے ملزموں کو اعتراضات دائر کرنے کے کئی مواقع دئے پر انہوں نے کوئی  درخواست دائر نہیں کی۔


جبکہ مسلسل کارروائی ملتوی کی عرضی دی جاتی رہی۔ کورٹ نے اپنے حکم میں کہا کہ ملزمین بار بار معاملے کو ٹال رہے ہیں۔ اب ان کے اعتراضات دائر کرنے کا موقع ختم کیا جاتا ہے۔ وہیں اس معاملے میں متاثرہ کی جانب سے عبوری گزارہ بھتہ دینے کا مطالبہ بھی کیا گیا ہے۔ کورٹ میں متاثرہ نے یہ الزام لگایا  کہ ملزمین اس کے جہیز کا سامان خرد ۔ برد کر رہے ہیں۔لہذا جہیز کا سامان واپس دلایا جائے۔


بتا دیں کہ پولیس متاثرہ کی جانب سے حلالہ معاملے میں ریپ کا مقدمہ درج کر چکی ہے لیکن ہائی کورٹ نے کارروائی پر روک لگاتے ہوئے سماعت کیلئے کاؤنسلنگ سینٹر بھیج دیا ہے۔
بتا دیں کہ خاتون کا الزام تھا کہ اس کے شوہر نے اسے تین طلاق دینے کے بعد اپنے والد کے ساتھ حلالہ کرنے پر مجبور کیا۔ سسر کے طلاق دینے کے بعد جب وہ عدت کا وقت گزار رہی تھی اسی دوران اس کے شوہر نے اس کے ساتھ کئی مرتبہ زبردستی (جبراً) ریپ کیا۔ اس درمیان جب وہ حاملہ ہو گئی تو اپنے گناہوں کا راز سب کے سامنے کھلنے کے ڈر سے اسے قید کر لیا گیا اور جبراً اسقاط حمل کرانے کی کوشش کی گئی۔
First published: Aug 09, 2018 08:15 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading