ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

دہلی پولیس کمشنر بی ایس بسی نے جے این یو تنازع پر کیا یہ دعوی

نئی دہلی : دہلی پولیس کمشنر بی ایس بسی نے آج کہا کہ اس بات کے پختہ ثبوت ملے ہیں کہ جواہر لعل نہرو یونیورسٹی کے طالب علم یونین کے صدر کنہیا کمار نے اپنی تقریر کے دوران ملک مخالف نعرے لگائے تھے۔

  • UNI
  • Last Updated: Feb 15, 2016 06:03 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
دہلی پولیس کمشنر بی ایس بسی نے جے این یو تنازع پر کیا یہ دعوی
نئی دہلی : دہلی پولیس کمشنر بی ایس بسی نے آج کہا کہ اس بات کے پختہ ثبوت ملے ہیں کہ جواہر لعل نہرو یونیورسٹی کے طالب علم یونین کے صدر کنہیا کمار نے اپنی تقریر کے دوران ملک مخالف نعرے لگائے تھے۔

نئی دہلی : دہلی پولیس کمشنر بی ایس بسی نے آج کہا کہ اس بات کے پختہ ثبوت ملے ہیں کہ جواہر لعل نہرو یونیورسٹی کے طالب علم یونین کے صدر کنہیا کمار نے اپنی تقریر کے دوران ملک مخالف نعرے لگائے تھے۔


مسٹر بسی نے یہ بات جے این یو کے اساتذہ کے اس الزام کی تردید کرتے ہوئے کہی، جس میں انہوں نے کہا تھا کہ کنہیا کے خلاف غداری کا مقدمہ درج کیا جانا غلط ہے کیونکہ یہ صرف خیالات کے اختلافات کا معاملہ تھا۔


مسٹر بسی نے کہا کہ پولیس معاملے کی تفصیل سے جانچ پڑتال کر رہی ہے۔ اس کیس کے دیگر ملزمان سے بھی پوچھ گچھ کی جا رہی ہے اور ہر چیز کا تجزیہ کیا جا رہا ہے۔ اس سوال پر کہ ایسی بھی خبریں آ رہی ہیں، جس میں کہا جا رہا ہے کہ اکھل بھارتیہ ودیارتھی پریشد کے ارکان نے بھی اس دن احاطے میں ملک مخالف نعرے لگائے تھے۔


مسٹر بسی نے کہا کہ ابھی تک ایسا کوئی ثبوت نہیں ملا ہے، اس میں سب سے پوچھ گچھ کی جا رہی ہے۔ اگر یہ پایا گیا کہ اے بی وی پی کے ارکان نے ایسا کچھ کیا تھا تو ان کے خلاف بھی کارروائی ہوگی۔


واضح رہے کہ جے این یو میں 9 فروری کو ایک پروگرام کے دوران ملک مخالف نعرے لگائے جانے کا یہ معاملہ وزیر داخلہ راج ناتھ سنگھ کے کل کے اس بیان کے بعد اورطول پکڑ گیا، جس میں انہوں نے کہا تھا کہ جے این یو میں ہوئے واقعہ کو لشکر طیبہ کے سرغنہ حافظ سعید کی حمایت ملی ہے۔


وزیر داخلہ کے اس بیان کے فورا بعد مارکسی کمیونسٹ پارٹی کے جنرل سکریٹری سیتارام یچوری نے انہیں کھلا چیلنج دیتے ہوئے کہا کہ انہیں اس سلسلے میں پختہ ثبوت دینا چاہئے، ایسے ثبوت جو من گھڑت نہ ہوں۔

First published: Feb 15, 2016 06:03 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading