உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    دہلی : بوانا حادثہ میں فیکٹری مالک گرفتار، پولیس جانچ میں مصرف ، وزیر اعلی نے کیا معاوضہ کا اعلان

    آگ میں جھلسے ایک شخص نے بتایا کہ فیکٹری میں پیکنگ کا کام چل رہا تھا۔ اسی وقت باہر سے کسی نے پٹاخہ جلاکر اندر پھینک دیا۔

    آگ میں جھلسے ایک شخص نے بتایا کہ فیکٹری میں پیکنگ کا کام چل رہا تھا۔ اسی وقت باہر سے کسی نے پٹاخہ جلاکر اندر پھینک دیا۔

    راجدھانی دہلی کے بوانا صنعتی علاقے میں کل لگی بھانک آتشزدگی کے معاملہ میں پولیس نے پٹاخہ فیکٹری کے مالک منوج جین کو گرفتار کر لیا ہے۔

    • UNI
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : راجدھانی دہلی کے بوانا صنعتی علاقے میں کل لگی بھانک آتشزدگی کے معاملہ میں پولیس نے پٹاخہ فیکٹری کے مالک منوج جین کو گرفتار کر لیا ہے۔ روہنی ضلع کے پولیس ڈپٹی کمشنر رجنیش گپتا نے آج بتایا کہ فیکٹری مالک منوج جین کو کل دیر رات گرفتار کر لیا گیا۔ اس فیکٹری کے مالک منوج جین اور للت گوئل ہیں۔ للت گوئل منوج کا قریبی دوست اور پڑوسی بھی ہے لیکن منوج کا دعوی ہے کہ وہ تنہا ہی اس فیکٹری کا مالک ہے۔
      دوسری جانب آتشزدگی کے بارے میں آگ میں جھلسے ایک شخص نے بتایا کہ فیکٹری میں پیکنگ کا کام چل رہا تھا۔ اسی وقت باہر سے کسی نے پٹاخہ جلاکر اندر پھینک دیا۔ پولیس اگرچہ اب اس کی جانچ کر رہی ہے کہ فیکٹری میں آتش بازی بنانے کا لائسنس ہے یا نہیں۔
      انہوں نے بتایا کہ منوج جین نے یکم جنوری کو اس فیکٹری کرایہ پر حاصل کیا تھا اور اس نے یہ بھی بتایا کہ ہولی اور کسی خاص پروگرام میں سپلائی کے لئے پٹاخوں کی پیکنگ کی جا رہی تھی۔حادثہ کے مقام سے ملنے والےمواد میں بھی اس کی تصدیق ہوئی ہے۔پولیس ڈپٹی کمشنر نے بتایا کہ پانچ لاشوں کی شناخت کر لی گئی ہے اور دیگر کی شناخت کے لئے کوشش کی جا رہی ہے۔
      ادھر، وزیر اعلی اروند کجریوال نے کل دیر رات حادثہ کے مقام کادورہ کیا اور مرنے والوں کے اہل خانہ کو پانچ پانچ لاکھ اور زخمیوں کو ایک ایک لاکھ روپے کی امداد کا اعلان کیا۔قابل غور ہے کہ کل شام بوانا صنعتی علاقے کے سیکٹر پانچ کی ایک پٹاخہ فیکٹری کے تہہ خانہ اور پہلی منزل پر لگی خوفناک آگ میں 17 افراد کی موت ہو گئی تھی۔
      First published: