உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Asani: خلیج بنگال کا سمندری طوفان ’اسانی‘ میں شدت، مشرقی ساحل میں حرکت کرنے کی پیش قیاسی

    فائل فوٹو

    فائل فوٹو

    یہ سسٹم صبح 5.30 بجے جنوب مشرقی خلیج بنگال پر کار نکوبار (نکوبار جزائر) سے تقریباً 450 کلومیٹر مغرب شمال مغرب میں، پورٹ بلیئر (انڈیمان جزائر) سے 380 کلومیٹر مغرب میں، وشاکھاپٹنم (آندھرا پردیش) سے 970 کلومیٹر جنوب مشرق میں اور 1030 کلومیٹر اور پوری (اڈیشہ) کے جنوب جنوب مشرق میں تھا۔

    • Share this:
      ہندوستانی محکمہ موسمیات (IMD) نے کہا کہ اتوار کو جنوب مشرقی خلیج بنگال (Southeast Bay of Bengal) میں گہرا دباؤ گزشتہ 6 گھنٹوں کے دوران 16 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار کے ساتھ مغرب-شمال مغرب کی طرف بڑھ گیا اور ایک طوفان آسانی (جسے ’آسانی‘ ہی کہا جاتا ہے) میں شدت اختیار کر گیا۔

      یہ سسٹم صبح 5.30 بجے جنوب مشرقی خلیج بنگال پر کار نکوبار (نکوبار جزائر) سے تقریباً 450 کلومیٹر مغرب شمال مغرب میں، پورٹ بلیئر (انڈیمان جزائر) سے 380 کلومیٹر مغرب میں، وشاکھاپٹنم (آندھرا پردیش) سے 970 کلومیٹر جنوب مشرق میں اور 1030 کلومیٹر اور پوری (اڈیشہ) کے جنوب جنوب مشرق میں تھا۔

      اس کے شمال مغرب کی طرف بڑھنے اور اگلے 24 گھنٹوں کے دوران مشرقی وسطی خلیج بنگال میں مزید شدت اختیار کرنے کا امکان ہے۔ ہندوستان کے محکمہ موسمیات نے کہا کہ یہ سسٹم 10 مئی کی شام تک شمال مغرب کی طرف بڑھنے اور مغرب تک پہنچنے کا قوی امکان ہے۔ مرکزی اور ملحقہ شمال مغربی خلیج بنگال شمالی آندھرا پردیش اور اڈیشہ کے ساحلوں سے دور اس کا فاضلہ ہوگا۔ اس کے بعد اس کے شمال-شمال مشرق کی طرف مڑ کر اڈیشہ کے ساحل سے شمال مغربی خلیج بنگال کی طرف بڑھنے کا بہت امکان ہے۔

      آئی ایم ڈی کے ڈی جی مروتنجے موہاپترا نے ہفتے کے روز یہ واضح کیا ہے کہ سمندری طوفان اڈیشہ یا آندھرا پردیش کے ساحل پر لینڈ فال کرنے کا امکان نہیں ہے، لیکن سمندر میں ساحل کے متوازی حرکت کرے گا۔ آئی ایم ڈی نے اپنے تازہ ترین بلیٹن میں کہا ہے کہ یہ نظام اتوار کی شام تک ایک سائیکلونک طوفان کی شکل میں رہے گا اور بعد میں شدید طوفانی طوفان میں شدت اختیار کر جائے گا اور 10 مئی کی رات تک اسی شکل میں برقرار رہے گا۔ اس کے بعد یہ سمندر میں بھاپ کھو دے گا اور 11 اور 12 مئی کو ایک اور سمندری طوفان بن جائے گا۔

      ۔ یہ بھی پڑھئے : جموں و کشمیر کے ارنیا سیکٹر میں نظر آیا پاکستانی ڈرون، BSF کی جوابی کارروائی، واپس لوٹا

      جبکہ 8 مئی کو زیادہ سے زیادہ رفتار کی حد 60 سے 70 کلومیٹر فی گ۔ ھنٹہ رہے گی، جو جھونکے کے ساتھ 80 کلومیٹر فی گھنٹہ ہو جائے گی، اس کی رفتار اتوار کی دوپہر تک 110 کلومیٹر فی گھنٹہ تک جھونکے کے ساتھ 90 سے 100 کلومیٹر فی گھنٹہ تک بڑھ سکتی ہے اور پھر شام تک اس کی رفتار 95 سے 105 کلومیٹر فی گھنٹہ تک پہنچ سکتی ہے۔ 115 کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار کے ساتھ آگے بڑھے گا۔

      ۔ یہ بھی پڑھئے : طالبان حکومت کو تسلیم کرنے سے ازبکستان نہیں ہے تیار،خواتین کےلئے طالبان کا ایک اور فرمان!

      9 مئی کو ہوا کی رفتار 105 سے 115 جھونکے 125 کلومیٹر فی گھنٹہ رہے گی اور پھر 10 مئی کو طوفان کے سمندر میں بہہ جانے کا امکان ہے اور صبح کے اوقات میں ہوا کی رفتار 96-105 جھونکے 115 تک آ جائے گی اور دن کی طرح آہستہ آہستہ کم ہو جائے گی۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: