ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

اب ہریانہ حکومت میوات میں فروخت ہورہی بریانی کی کرے گی جانچ ، بیف ملنے پر ہوگی کارروائی

حکومت نے ریاست کے سب سے بڑے مسلم اکثریتی علاقہ میوات میں فروخت ہونے والی بریانی کی جانچ کروانے کا فیصلہ کیا ہے کہ کہیں اس میں بیف تو نہیں ہے ۔ یعنی حکومت میوات میں بریانی کی ہر دکان میں جا کر جانچ کرے گی کہ اس میں گائے کا گوشت تو نہیں ہے۔

  • IBN Khabar
  • Last Updated: Sep 06, 2016 07:34 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
اب ہریانہ حکومت میوات میں فروخت ہورہی بریانی کی کرے گی جانچ ، بیف ملنے پر ہوگی کارروائی
حکومت نے ریاست کے سب سے بڑے مسلم اکثریتی علاقہ میوات میں فروخت ہونے والی بریانی کی جانچ کروانے کا فیصلہ کیا ہے کہ کہیں اس میں بیف تو نہیں ہے ۔ یعنی حکومت میوات میں بریانی کی ہر دکان میں جا کر جانچ کرے گی کہ اس میں گائے کا گوشت تو نہیں ہے۔

میوات : ہریانہ کی منوهرلال کھٹر حکومت نے ایک انتہائی متنازع فیصلہ کیا ہے، جس کی چوطرفہ تنقید شروع ہوگئی ہے ۔ حکومت نے ریاست کے سب سے بڑے مسلم اکثریتی علاقہ میوات میں فروخت ہونے والی بریانی کی جانچ کروانے کا فیصلہ کیا ہے کہ کہیں اس میں بیف تو نہیں ہے ۔ یعنی حکومت میوات میں بریانی کی ہر دکان میں جا کر جانچ کرے گی کہ اس میں گائے کا گوشت تو نہیں ہے۔ اگر ایسا پایا جاتا ہے تو کارروائی کی جائے گی۔

یہ فیصلہ منگل کو میوات میں ہریانہ گئو سیوا کمیشن کے صدر بھانی رام منگلا نے کیا۔ اس موقع پر کاؤ پروٹیكشن ٹاسک فورس کی انچارج اور سینئر آئی پی ایس افسر بھارتی ارورہ بھی موجود تھیں ۔ انہوں نے اجلاس میں موجود پولیس حکام سے کہا کہ جن جن دیہات میں بریانی فروخت ہو رہی ہے ، وہاں سے فوری طور پر نمونے جمع کرنا شروع کر دیں۔ نمونوں کی جانچ سے پتہ چلے گا کہ بریانی میں کس جانور کا گوشت استعمال کیا جا رہا ہے۔

کھٹر حکومت کے اس فیصلہ کی میوات کے کانگریسی لیڈر آفتاب احمد نے شدید نکتہ چینی کی ہے ۔ آفتاب احمد نے کہا کہ بی جے پی حکومت مسلم برادری کو بدنام کرنے کے لئے ایسے اقدامات کررہی ہے۔ وہ میوات میں آر ایس ایس کا ایجنڈا تھوپنا چاہ رہی ہے، جس کی کانگریس مخالفت کرے گی۔ تعجب کی بات ہے کہ اب حکومت لوگوں کی بریانی تک چیک کرے گی۔

First published: Sep 06, 2016 07:33 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading