ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

پارلیمانی کمیٹی سے ورون گاندھی اور ونود کھنہ سمیت 12 ممبران پارلیمنٹ کی چھٹی

نئی دہلی۔ حکومت نے پارلیمانی کمیٹیوں سے غیر حاضر رہنے والے اپنے ممبران پارلیمنٹ پر سخت کارروائی کی ہے۔

  • IBN Khabar
  • Last Updated: Mar 16, 2016 12:31 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
پارلیمانی کمیٹی سے ورون گاندھی اور ونود کھنہ سمیت 12 ممبران پارلیمنٹ کی چھٹی
نئی دہلی۔ حکومت نے پارلیمانی کمیٹیوں سے غیر حاضر رہنے والے اپنے ممبران پارلیمنٹ پر سخت کارروائی کی ہے۔

نئی دہلی۔ حکومت نے پارلیمانی کمیٹیوں سے غیر حاضر رہنے والے اپنے ممبران پارلیمنٹ پر سخت کارروائی کی ہے۔ حکومت نے 3 اہم کمیٹیوں کے اجلاسوں سے غائب رہنے والے بی جے پی کے 12 ممبران پارلیمنٹ کو ہٹا دیا ہے۔ کمیٹیوں سے ہٹائے گئے ممبران پارلیمنٹ میں ایس ایس اہلووالیہ، ورون گاندھی، کیرتی آزاد، ونود کھنہ، نند کمار چوہان، سنجے جیسوال، اوم بڑلا، گنیش سنگھ، دشینت سنگھ، رمیش پوکھریال نشنک اور پنکج چودھری شامل ہیں ۔ بی جے پی نے 12 ممبران پارلیمنٹ کو جن کمیٹیوں سے ہٹا دیا ہے ان میں پبلک اکاؤنٹس کمیٹی (پی اے سی)، اسٹیمیٹ کمیٹی اور کمیٹی آن پبلک انڈرٹیکنگ شامل ہے۔


سب سے زیادہ چھ ممبران پارلیمنٹ کو اسٹیمیٹ کمیٹی سے ہٹایا گیا ہے۔ اس سے اسٹیمیٹ کمیٹی سے ونود کھنہ، درشنا وکرم جڈوه، سنجے جیسوال، کیرتی آزاد، اوم بڑلا اور گنیش سنگھ ہٹائے گئے ہیں۔ پی اے سی سے ایس ایس اہلووالیہ، دشینت سنگھ اور رمیش پوکھریال نشنک کو ہٹایا گیا ہے۔ کمیٹی آن پبلک انڈرٹیکنگ سے ورون گاندھی، نند کمار سنگھ چوہان اور پنکج چودھری کو ہٹایا گیا ہے۔ پارلیمانی امور کے وزیر وینکیا نائیڈو کے مطابق بی جے پی ممبران پارلیمنٹ کو بار بار اس بارے میں ہدایت دی جاتی رہی ہے۔ نائیڈو نے منگل کو ہوئی بی جے پی پارلیمانی کمیٹی کے اجلاس میں بھی ممبران پارلیمنٹ کو پارليمانی کمیٹیوں میں دل لگا کر کام کرنے کی نصیحت کی تھی۔


غور طلب ہے کہ آدھار بل پاس کئے جانے کے دوران بھی بڑی تعداد میں بی جے پی رہنما پارلیمنٹ میں موجود نہیں تھے۔ اس سے پارٹی کی فکر بڑھ گئی تھی۔ پارٹی کا کہنا ہے کہ اس طرح کی کارروائی ضروری تھی، تاکہ ایک سخت پیغام دیا جا سکے۔


 
First published: Mar 16, 2016 10:58 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading