உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Bihar: بیٹے کی لاش کے ساتھ بھی ایسا کھلواڑ! ’اسپتال کے ملازم نے50 ہزار روپے رشوت کی مانگ کی‘

    ’اسپتال کےملازم نے50 ہزارروپے رشوت کی مانگ کی‘

    ’اسپتال کےملازم نے50 ہزارروپے رشوت کی مانگ کی‘

    خبر رساں ایجنسی اے این آئی سے بات کرتے ہوئے متوفی کے والد مہیش ٹھاکر نے کہا کہ کچھ عرصہ قبل میرا بیٹا لاپتہ ہو گیا تھا۔ اب ہمیں فون آیا ہے کہ میرے بیٹے کی لاش سمستی پور کے صدر اسپتال میں ہے۔

    • Share this:
      بہار میں دل دہلا دینے والی ویڈیو سوشل میڈیا پلیٹ فارمز پر وائرل ہوئی ہے جس میں ایک بزرگ جوڑے کو بہار کے سمستی پور شہر کی سڑکوں پر بھیک مانگتے ہوئے دیکھا گیا ہے تاکہ اپنے بیٹے کی لاش کو سرکاری اسپتال سے نکالنے کے لیے رقم کا بندوبست کیا جا سکے۔ جوڑے نے دعویٰ کیا کہ ان کے ساتھ زبردستی کی گئی ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ صدر اسپتال کے ایک ملازم نے مبینہ طور پر بیٹے کی لاش کو حوالے کرنے کے لیے 50,000 روپے مانگا تھا۔

      خبر رساں ایجنسی اے این آئی سے بات کرتے ہوئے متوفی کے والد مہیش ٹھاکر نے کہا کہ کچھ عرصہ قبل میرا بیٹا لاپتہ ہو گیا تھا۔ اب ہمیں فون آیا ہے کہ میرے بیٹے کی لاش سمستی پور کے صدر اسپتال میں ہے۔ اسپتال کے ایک ملازم نے میرے بیٹے کی لاش چھوڑنے کے لیے 50 ہزار روپے مانگے ہیں۔ ہم غریب لوگ ہیں، یہ رقم کیسے ادا کریں گے؟

      مزید پڑھیں: امرناتھ یاترا 2022: سیکورٹی امور کا جائزہ لینے کی غرض سے پولیس کے اعلیٰ افسران خود کر رہے ہیں نگرانی

      اس معاملے کا نوٹس لیتے ہوئے سمستی پور کے سول سرجن ڈاکٹر ایس کے چودھری نے کہا کہ قصوروار پائے جانے والوں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ ہم یقینی طور پر اس معاملے میں سخت کارروائی کریں گے۔ ذمہ دار پائے جانے والوں کو بخشا نہیں جائے گا۔

       

      مزید پڑھیں: UPI-Credit Card لنکنگ کا آر بی آئی نے آج کیا اعلان، کتنے ہونگے چارجز؟ جانیے تفصیلات

      میڈیا رپورٹس کے مطابق زیادہ تر ہیلتھ ورکرز ہسپتال میں کنٹریکٹ پر کام کر رہے ہیں اور کئی بار انہیں تنخواہیں نہیں ملتی ہیں۔ اس لیے وہ مریضوں کے لواحقین سے پیسے مانگتے ہیں۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: