உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Bihar: بہارکی ’گریجویٹ چائے والی‘ نےکیااپنا ٹی اسٹال بند، بڑے پیمانے پرفوڈ ٹرک کھولےگی

    وائرل فوٹو

    وائرل فوٹو

    اپنے فوڈ ٹرک پر گپتا ایک پیشہ ور چائے بنانے والے کی خدمات حاصل کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔ اب تک وہ چائے کے اسٹال پر تمام کام اکیلے ہی سنبھالتی ہے، لیکن فوڈ ٹرک پر وہ دوسرے لوگوں کو بھی ملازمت دینے کا ارادہ رکھتی ہے۔

    • Share this:
      بہار سے تعلق رکھنے والی اکنامکس گریجویٹ پرینکا گپتا (Priyanka Gupta) نے حال ہی میں پٹنہ ویمن کالج (Patna Women’s College) کے قریب چائے کا اسٹال کھولنے کے بعد نوکری نہ ملنے پر وائرل ہو گئی تھی۔ اب ڈی این اے کی رپورٹ کے مطابق وہ اسٹال کو بند کرنے اور سبز چراگاہوں کی طرف جانے کے لیے پوری طرح تیار ہے۔

      گپتا اب فوڈ ٹرک کھولنے کے لیے تیار ہیں۔ وہ چائے کے کاروبار کو بھی ترک نہیں کر رہی ہے۔ فوڈ ٹرک اسنیکس کے ساتھ چائے بھی بیچے گا۔ اطلاعات کے مطابق گپتا کو کسی کی مدد کے ذریعہ فوڈ ٹرک کی پیشکش کی گئی جب وہ سوشل میڈیا پر وائرل ہوگئیں اور سرخیاں بنائیں۔ ابتدائی طور پر اس نے پیشکش سے انکار کر دیا تھا لیکن بعد میں اس نے یہ بات مان لی، لیکن اس شرط پر کہ وہ آہستہ آہستہ ٹرک کے پیسے ادا کرے گی.

      اپنے فوڈ ٹرک پر گپتا ایک پیشہ ور چائے بنانے والے کی خدمات حاصل کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔ اب تک وہ چائے کے اسٹال پر تمام کام اکیلے ہی سنبھالتی ہے، لیکن فوڈ ٹرک پر وہ دوسرے لوگوں کو بھی ملازمت دینے کا ارادہ رکھتی ہے۔ اس نے کہا کہ ٹرک اگلے تین چار دنوں میں پہنچ جائے گا۔ چائے کے ساتھ ساتھ کھانے کے ٹرک پر چند مختلف اسنیکس فروخت کیے جائیں گے۔

      انڈیا ٹوڈے کی ایک رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ اکنامکس گریجویٹ بینک کے مقابلہ جاتی امتحانات میں کامیابی حاصل کرنے کی کوشش کر رہی تھی، لیکن وہ اپنی دو سال کی محنت کے باوجود ناکام رہی۔ اس کے بعد اس نے کالج کے باہر ’چائی والی‘ کے نام سے چائے کی دکان شروع کی۔ اپنے اسٹال میں وہ چائے کے چار جدید طرز کی چائے پیش کرتی ہے، جس میں پان چائے اور چاکلیٹ چائے شامل ہیں۔

      یہ بھی پڑھئے: Covid in Children: کورونا نے پھر پکڑا زور! بچوں میں انفیکشن زیادہ،ڈاکٹروں نے دی ضروری صلاح

      انڈیا ڈاٹ کام کے مطابق اس نے وارانسی میں مہاتما گاندھی کاشی ودیا پیٹھ سے اپنی گریجویشن کی ہے۔ اس نے انڈیا ٹوڈے کو بتایا کہ پچھلے دو سال سے میں مسلسل کوشش کر رہی ہوں کہ بینک کے مقابلہ جاتی امتحانات کو پاس کر سکوں لیکن بے سود۔ لہٰذا گھر واپس جانے کے بجائے میں نے پٹنہ میں ہاتھ کی ٹوکری پر چائے کا اسٹال لگانے کا فیصلہ کیا۔ میں شہر میں اپنا چائے کا اسٹال لگانے میں ہچکچاہٹ محسوس نہیں کر رہا ہوں اور میں اس کاروبار کو اتم نربھر بھارت کی طرف ایک قدم کے طور پر دیکھتا ہوں۔

      مزید پڑھیں: عید پر Rani chatterjee نے پیلی ڈریس میں لوٹی محفل، دیکھیں تصاویر


      چائے کی دکان کے سائن بورڈ پر لکھا ہے کہ آتمنیربر بھارت کی طرف پہل ہے۔ اس کے بارے میں مت سوچو بس شروع کرو۔ حالیہ دنوں میں ایسے لوگوں کی ایک بڑی تعداد ہے۔ جنہوں نے مختلف شعبوں میں گریجویشن کی ہے، ناکام ہونے کے بعد چائے کی دکانیں یا دیگر اسٹارٹ اپ کھولے ہیں۔ مناسب ملازمتیں تلاش کرنے کے لیے ایسا کیا جائے گا۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: