ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ایک اور بی جے پی لیڈر کا متنازع بیان ، رات میں گانجا پی کر صبح علم بانٹتے ہیں جے این یو کے پروفیسر

نئی دہلی : جے این یو کے طلبہ کو موقع پرست قرار دیتے ہوئے بی جے پی لیڈروں نے یونیورسٹی کے بائیں بازو کی طلبہ جماعتوں پر ملک مخالف ہونے کا الزام لگایا ہے ۔ جے این یو کیمپس میں اے بی وی پی کے طلبہ سے خطاب کرتے ہوئے بی جے پی لیڈر رامیشور چورسیا نے یونیورسٹی پروفیسروں پر جم کر نشانہ سادھا۔

  • Pradesh18
  • Last Updated: Mar 11, 2016 11:26 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ایک اور بی جے پی لیڈر کا متنازع بیان ، رات میں گانجا پی کر صبح علم بانٹتے ہیں جے این یو کے پروفیسر
نئی دہلی : جے این یو کے طلبہ کو موقع پرست قرار دیتے ہوئے بی جے پی لیڈروں نے یونیورسٹی کے بائیں بازو کی طلبہ جماعتوں پر ملک مخالف ہونے کا الزام لگایا ہے ۔ جے این یو کیمپس میں اے بی وی پی کے طلبہ سے خطاب کرتے ہوئے بی جے پی لیڈر رامیشور چورسیا نے یونیورسٹی پروفیسروں پر جم کر نشانہ سادھا۔

نئی دہلی : جے این یو کے طلبہ کو موقع پرست قرار دیتے ہوئے بی جے پی لیڈروں نے یونیورسٹی کے بائیں بازو کی طلبہ جماعتوں پر ملک مخالف ہونے کا الزام لگایا ہے ۔ جے این یو کیمپس میں اے بی وی پی کے طلبہ سے خطاب کرتے ہوئے بی جے پی لیڈر رامیشور چورسیا نے یونیورسٹی پروفیسروں پر جم کر نشانہ سادھا۔

چورسیا نے کہا کہ جے این یو کے پروفیسر رات میں چھپ کر گانجا پیتے ہیں اور صبح تعلیم دیتے ہیں۔ ملک میں آج قوم پرستی بمقابلہ ملک مخالف بحث کا ایک موضوع بن گیا ہے۔ وہیں جے این یو طلبہ یونین کے صدر رہ چکے بی جے پی لیڈر سندیپ مہاپاتر نے کہا کہ آزادی لفظ بہت زیادہ استعمال کیا جا چکا ہے۔

یونیورسٹی کے فیکلٹی ممبر ڈاکٹر امت سنگھ نے کہا کہ سروے کے مطابق جے این یو میں جنسی تشدد کے سب سے زیادہ کیس درج کئے گئے۔ ہم لوگوں کو یونیورسٹی کی مثبت تنقید کرنے کی ضرورت ہے۔ ان لیڈروں کو اے بی وی پی نے مدعو کیا تھا۔ کمل سندیش کے ایڈیٹر ڈاکٹر شیو شکتی نے کہا کہ ان طالب علموں کی وجہ سے جے این یو کی شبیہ کو بہت زیادہ نقصان پہنچا ہے۔ انہوں نے جے این یو کے طالب علموں کو موقع پرست قرار دیا ۔

First published: Mar 11, 2016 11:25 AM IST