ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

بی جے پی کےمنشورمیں دفعہ 370 اوردفعہ 35 اے منسوخ کرنےکےعزم کا اعادہ

بی جے پی نے اپنے انتخابی منشورمیں جموں و کشمیرکوخصوصی درجہ عطا کرنے والی آئین ہند کی دفعہ 370 اور دفعہ35 اے کومنسوخ کرنےکا وعدہ دوہرایا ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Apr 08, 2019 04:12 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
بی جے پی کےمنشورمیں دفعہ 370 اوردفعہ 35 اے منسوخ کرنےکےعزم کا اعادہ
بی جے پی نے انتخابی منشور جاری کیا

 بھارتیہ جنتا پارٹی ( بی جے پی ) نے اپنے انتخابی منشورمیں جموں و کشمیرکوخصوصی درجہ عطا کرنے والی آئین ہند کی دفعہ 370 اوردفعہ35 اے کو منسوخ کرنے کا وعدہ دوہرایا ہے۔ بی جے پی نے جموں وکشمیرکےخصوصی درجےکی ضامن دفعہ 370 کے حوالےسےاپنےانتخابی منشورمیں کہا ہےکہ'ہم جن سنگھ کےدورسےدفعہ 370 کو ہٹانے کے عزم پرقائم ہیں'۔


انتخابی منشورمیں دفعہ 35 اے کوجموں وکشمیرکی خواتین اورغیرریاستی باشندوں کےلئے 'امتیازی شق' قراردیتےہوئےکہا گیا ہےکہ 'دفعہ 35 اے جموں وکشمیرکی تعمیروترقی کی راہ میں ایک رکاوٹ ہے، ریاست کےتمام باشندوں کےلئے پُرامن ماحول کے قیام کویقینی بنانے کےلئے تمام اقدام کئےجائیں گے، مہاجرپنڈتوں کی وطن واپسی کویقینی بنایا جائےگا اورمغربی پاکستان، پاکستان زیرقبضہ کشمیراورچھمب کےمہاجروں کی بازآباد کاری کے لئےمالی مدد فراہم کی جائے گی'۔


قابل ذکر ہےکہ بی جے پی نے پیرکے روزقومی راجدھانی نئی دہلی میں واقع پارٹی ہیڈ کوارٹرپرپارٹی کے قومی صدرامت شاہ، وزیراعظم نریندرمودی، وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ، وزیرخارجہ سشما سوراج، وزیرداخلہ ارون جیٹلی اوردیگرسینئرلیڈروں کی موجودگی میں 'سنکلپ پتر' کے نام سےانتخابی منشورجاری کیا۔ جہاں انتخابی منشورمیں دفعہ 370 اور دفعہ 35 اے کومنسوخ کرنے کا وعدہ دوہرایا گیا ہے وہیں وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ نے منشورکی اجرائی تقریب سے خطاب کرتے ہوئےکہا کہ ہرایک ریاست کی شناخت کو تحفظ فراہم کیا جائے گا۔


انہوں نے کہا 'ہم کسی بھی ریاست کی ثقافتی اور لسانی شناخت پر آنچ نہیں آنے دیں گے۔ ہر ایک ریاست کی پہچان اور شناخت کی حفاظت کریں گے'۔ بتادیں کہ دفعہ 35 اے اور دفعہ 370 کے خلاف دائر متعدد عرضیاں اس وقت سپریم کورٹ میں زیر سماعت ہیں۔ دفعہ 35 اے غیرریاستی شہریوں کو جموں وکشمیر میں مستقل سکونت اختیار کرنے، غیر منقولہ جائیداد خریدنے، سرکاری نوکریاں حاصل کرنے، ووٹ ڈالنے کےحق اوردیگرسرکاری مراعات سے دوررکھتی ہے۔


بتایا جارہا ہے کہ 1953 میں جموں وکشمیرکےاُس وقت کے وزیراعظم شیخ محمد عبداللہ کی غیرآئینی معزولی کے بعد وزیراعظم جواہر لعل نہرو کی سفارش پر صدارتی حکم نامے کے ذریعہ آئین میں دفعہ 35 اے کو بھی شامل کیا گیا، جس کی روسے بھارتی وفاق میں کشمیرکو ایک علیحدہ حیثیت حاصل ہے۔10 اکتوبر2015 کو جموں وکشمیر ہائی کورٹ نے اپنے ایک تاریخی فیصلے میں دفعہ 370 کو ناقابل تنسیخ وترمیم قراردیتے ہوئے کہا تھا کہ 'دفعہ (35 اے ) جموں وکشمیرکے موجودہ قوانین کو تحفظ فراہم کرتی ہے'۔


ملی ٹینسی کے تئیں زیرو ٹالرنس کے حوالے سے منشورمیں کہا گیا ہے 'ملی ٹینسی اورانتہا پسندی کے خلاف جاری زیروٹالیرنس کی پالیسی پربرابرعمل کیا جائے گا اوردہشت گردی کا مقابلہ کرنے کے لئے سیکورٹی فورسزکوکھلی آزدی دینے کی پالیسی بھی جاری رکھی جائے گی'۔ انتخابی منشورمیں کہا گیا کہ بی جے پی نے گذشتہ پانچ برسوں کے دوران جموں وکشمیرمیں مضبوط پالیسی اورفیصلہ کن کارروائیاں عمل میں لاتے ہوئے قیام امن کے لئے جملہ ضروری اقدامات کئے ہیں۔ سرحدی تحفظ کو یقینی بنانے کے حوالے سے منشورمیں کہا گیا ہے کہ سرحدی تحفظ کو مضبوط بنانے کے لئے سرحدی علاقوں میں تعمیری و دیگر ضروری انفراسٹرکچرکوپیدا کرنے پرتوجہ مرکوزکی جائے۔


وزیرداخلہ راجناتھ سنگھ نے تقریب سے اپنے خطاب میں کہا 'جہاں تک دہشت گردی کا سوال ہے، اس کے تئیں ہماری زیرو ٹالرنس کی پالیسی تھی، ہے اوررہے گی۔ ملک کی سیکورٹی کے ساتھ کوئی سمجھوتہ نہیں کیا جائے گا'۔

First published: Apr 08, 2019 03:57 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading