ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

دہلی اسمبلی میں حزب اختلاف کے رہنما کو مارشل کے ذریعے ایوان سے باہر کیا گیا

نئی دہلی۔ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے ممبر اسمبلی اوم پرکاش شرما کے عام آدمی پارٹی (آپ) کی خاتون ممبران اسمبلی کے خلاف کئے گئے مبینہ تبصرہ کے بارے میں دہلی اسمبلی میں آج جم کر ہنگامہ ہوا اور دونوں طرف سے قریب 25 منٹ تک بھاری شور شرابے کے بعد حزب اختلاف کے رہنما وجیندر گپتا کو مارشل کے ذریعے ایوان سے باہر کر دیا گیا۔

  • UNI
  • Last Updated: Nov 30, 2015 06:19 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
دہلی اسمبلی میں حزب اختلاف کے رہنما کو مارشل کے ذریعے ایوان سے باہر کیا گیا
نئی دہلی۔ بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے ممبر اسمبلی اوم پرکاش شرما کے عام آدمی پارٹی (آپ) کی خاتون ممبران اسمبلی کے خلاف کئے گئے مبینہ تبصرہ کے بارے میں دہلی اسمبلی میں آج جم کر ہنگامہ ہوا اور دونوں طرف سے قریب 25 منٹ تک بھاری شور شرابے کے بعد حزب اختلاف کے رہنما وجیندر گپتا کو مارشل کے ذریعے ایوان سے باہر کر دیا گیا۔

نئی دہلی۔  بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے ممبر اسمبلی اوم پرکاش شرما کے عام آدمی پارٹی (آپ) کی خاتون ممبران اسمبلی کے خلاف کئے گئے مبینہ تبصرہ کے بارے میں دہلی اسمبلی میں آج جم کر ہنگامہ ہوا اور دونوں طرف سے قریب 25 منٹ تک بھاری شور شرابے کے بعد حزب اختلاف کے رہنما وجیندر گپتا کو مارشل کے ذریعے ایوان سے باہر کر دیا گیا۔


ایوان کی کارروائی شروع ہونے پر چاندنی چوک سے آپ کی رکن اسمبلی الکا لامبا نے اپنا موبائل فون دکھاتے ہوئے اس میں مسٹر شرما کی طرف سے کئے گئے مبینہ تبصرہ کا معاملہ اٹھایا اور ایوان کے درمیان میں آکر كارروايي کا مطالبہ کرنے لگیں۔ اسپیکر رام نواس گوئل کے بار بار اصرار کرنے کے باوجود محترمہ لامبا اور آپ کی کچھ دیگر خواتین رکن اسمبلی بھی ایوان کے وسط میں آکر مسٹر شرما کے خلاف کارروائی کا مطالبہ کرنے لگیں۔  دوسری طرف حزب اختلاف کے رہنما وجیندر گپتا نے الزام لگایا کہ اپوزیشن کے ممبران اسمبلی کو سازش کے تحت تشدد کا نشانہ بنایا جا رہا ہے۔ اپوزیشن کے ساتھ جانبدارانہ رویہ اور سیاست کے تحت کام کیا جا رہا ہے۔ تقریباً 25 منٹ تک دونوں طرف سے بھاری شور شرابے کے بعد مسٹر گوئل نے مسٹر گپتا کو چار بجے تک ایوان سے باہر چلے جانے کے لئے کہا۔ مسٹر گپتا باہر نہیں گئے بلکہ اپنی سیٹ سے اٹھ کر ایوان کے بيچوں بيچ آکر احتجاج کرنے لگے۔ اس پر اسپیکر نے مارشل کو انہیں ایوان سے باہر لے جانے کی ہدایت دی۔


واضح رہے کہ گزشتہ ہفتے منگل کو دارالحکومت میں رین بسیروں کی حالت کے بارے میں مسٹر شرما کی محترمہ لامبا کے خلاف کئے گئے مبینہ تبصرہ پر ہنگامہ ہوا تھا اور مسٹر شرما کو سیشن سے معطل کردیا گیا تھا۔ مسٹر شرما نے اپنے معطلی کے خلاف آج اپنے اسمبلی حلقہ کے لوگوں کے ساتھ اسمبلی پر مظاہرہ کیا اور اسی میں ایک پوسٹر پر کئے گئے مبینہ تبصرہ پر محترمہ لامبا نے اپنا احتجاج کیا تھا۔ گزشتہ ہفتہ ہونے والے اس واقعہ کی تحقیقات کا کام دہلی اسمبلی کی اخلاقیات کمیٹی کے حوالے کر دیا گیا ہے۔ مسٹر گوئل نے بتایا کہ کمیٹی کی ایک میٹنگ 27 نومبر کو ہو چکی ہے اور آج شام اس کی میٹنگ پھر ہوگی۔

First published: Nov 30, 2015 06:17 PM IST