உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    بی جے پی ایم ایل اے کا متنازعہ بیان، کہا قانون بننے تک بچے پیدا کرتے رہیں ہندو بھائی

    پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے وکرم سینی نے صحت محکمہ کا سلوگن ، 'ہم دو ہمارے دو' پر نشانہ سادھا۔

    پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے وکرم سینی نے صحت محکمہ کا سلوگن ، 'ہم دو ہمارے دو' پر نشانہ سادھا۔

    مظفر نگر کے شیو چوک پر آبادی کے کنٹرول کے بارے میں منعقد ایک پروگرام میں بی جے پی رکن اسمبلی وکرم سینی نے کہا کہ ہندوؤں کو تب تک بچے پیدا کرنا بند نہیں کرنا چاہئے جب تک کہ ملک میں آبادی پر قابو پانے سے متعلق قانون نافذ نہ ہو جائے۔

    • Share this:
      مظفرنگر۔ مظفر نگر کے کھتولی اسمبلی حلقہ سے بی جے پی کے رکن اسمبلی وکرم سینی نے ایک متنازعہ بیان دیا ہے۔ دراصل مظفر نگر کے شیو چوک پر آبادی کے کنٹرول کے بارے میں ایک پروگرام منعقد ہوا۔ اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے بی جے پی رکن اسمبلی وکرم سینی نے کہا کہ ہندوؤں کو تب تک بچے پیدا کرنا بند نہیں کرنا چاہئے جب تک کہ ملک میں آبادی پر قابو پانے سے متعلق قانون نافذ نہ ہو جائے۔ اس سے پہلے بھی مظفر نگر کے کھتولی ایم ایل اے اس طرح کے متنازعہ بیانات دے چکے ہیں۔

      پروگرام سے خطاب کرتے ہوئے وکرم سینی نے صحت محکمہ کا سلوگن ، 'ہم دو ہمارے دو' پر نشانہ سادھا۔ انہوں نے کہا کہ یہ نعرہ پہلے بھی چلا تھا۔ 'ہم دو ہمارے دو'، ہم نے تو مان لیا لیکن ہمارے کچھ بھائی تو ایک پر ہی رک گئے ہیں۔ جبکہ کچھ تو 'ہم دو ہمارے 18 ' اور 'ہم پانچ ہمارے پچیس' ہو رہے ہیں۔ ایم ایل اے نے مزید کہا کہ یہ سب کے لئے ہونا چاہئے۔ یہ ملک ہر ایک کا ہے، اگر ملک سب کا ہے تو قانون بھی سب کے لئے ہونا چاہئے۔

      یہی نہیں، ایم ایل اے نے یہ بھی کہا کہ جب ہمارے دو بچے تھے تو میری بیوی نے کہا کہ ہمیں تیسرے بچہ کی ضرورت نہیں ہے، لیکن میں نے کہا کہ ہمارے چار سے پانچ بچے ہونے چاہئیں۔ ان کا یہ ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہا ہے۔
      First published: