ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

سنبت پاترا نے حافظ سعید سے کیا اپوزیشن کا موازنہ، گری راج نے بتایا ’اسامہ نواز‘۔

مرکزی وزیر گری راج سنگھ اور بی جے پی کے ترجمان سنبت پاترا نے اپوزیشن پارٹیوں کو لے کر متنازعہ بیان دیا ہے۔ بی جے پی کے سینئر لیڈر گری راج سنگھ نے اپوزیشن کو دہشت گرد اسامہ بن لادن سے جوڑتے ہوئے ’اسامہ نواز‘ قرار دیا ہے۔

  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
سنبت پاترا نے حافظ سعید سے کیا اپوزیشن کا موازنہ، گری راج نے بتایا ’اسامہ نواز‘۔
مرکزی وزیر گری راج سنگھ اور بی جے پی کے ترجمان سنبت پاترا نے اپوزیشن پارٹیوں کو لے کر متنازعہ بیان دیا ہے۔ بی جے پی کے سینئر لیڈر گری راج سنگھ نے اپوزیشن کو دہشت گرد اسامہ بن لادن سے جوڑتے ہوئے ’اسامہ نواز‘ قرار دیا ہے۔

نئی دہلی: مرکزی وزیر گری راج سنگھ اور بی جے پی کے ترجمان سنبت پاترا نے اپوزیشن پارٹیوں کو لے کر متنازعہ بیان دیا ہے۔ بی جے پی کے سینئر لیڈر گری راج سنگھ نے اپوزیشن کو دہشت گرد اسامہ بن لادن سے جوڑتے ہوئے ’اسامہ  نواز‘  قرار دیا ہے۔


گری راج سنگھ نے ٹوئٹ کرتے ہوئے این ڈی اے کے خلاف اپوزیشن جماعتوں کے اتحاد پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ماووادی، نسل پرست اور اسامہ نواز متحد ہوگئے ہیں۔ انہوں نے پیر کو ٹوئٹ کرتے ہوئے کہا کہ ماو نواز، نسل پرست، سامراجی اور اسامہ نواز سبھی جمہوری اتحاد (این ڈی اے) کے خلاف متحد ہوگئے ہیں، لیکن ترقی کی اورل گنگا میں بہتے ہوئے این ڈی اے کی ناو متعین رفتار سے 2019 کا پڑاو ضرور پار کرے گی۔


اس سے قبل بی جے پی ترجمان سنبت پاترا نے بھی متحد ہورہے اپوزیشن کو لے کر کچھ ایسا ہی متنازعہ بیان دیا تھا۔ انہوں نے ممبئی حملوں کا ماسٹر مائنڈ حافظ سعید کا ایک ویڈیو ٹوئٹ کرکے کہا تھا کہ یہ صرف اب تک نہ بن سکا عظیم اتحاد ہی نہیں ہے، جو 2019 میں مودی کو وزیراعظم بننے سے روکنا چاہتا ہے۔ ایسے کئی اور لوگ بھی ہیں، جو ایسا چاہتے ہیں۔ یہاں حافظ سعید کھلے عام نریندر مودی کا خون بہانے کی بات کررہا ہے۔


 

وہیں اس معاملے پر تنازعہ ہونے کے بعد انہوں نے ایک اور ٹوئٹ کرکے کہا کہ بے شک یہ کوئی موازنہ نہیں۔ کالے دھن اور بدعنوانی کے خلاف مودی جی کا حملہ اپوزیشن کو ایک ساتھ لے آیا۔ دوسری طرف دہشت گردی پر ان کے (مودی کے) حملے اور سرجیکل اسٹرائیک نے حافظ سعید کو مایوسی کی طرف پہنچا دیا ہے۔ اس سے ثابت ہوتا ہے کہ مودی حکومت صحیح سمت میں آگے بڑھ رہی ہے۔  





بی جے پی لیڈروں کے تبصرہ کو دہلی کی سابق وزیراعلیٰ اور سینئر کانگریس لیڈر شیلا دکشت نے انتہائی مایوس کن قرار دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سیاست میں بھی عزت کی ایک لائن ہے جسے کسی کو پار نہیں کرنا چاہئے۔ ہمیں یہ یاد رکھنا چاہئے کہ ہماری لڑائی سیاسی ہے، کوئی ذاتی دشمنی نہیں ہے۔ اپنے ہاتھوں سے مینڈیٹ کھسکتا دیکھ کر وہ بوکھلاہٹ میں ایساتبصرہ کررہے ہیں۔
واضح رہے کہ ایسا پہلی بار نہیں ہے جب گری راج سنگھ یاسنبت پاترا نے کوئی متنازعہ بیان دیا ہو۔ گزشتہ لوک سبھا الیکشن کے دوران گری راج سنگھ نے کہا تھا کہ جو نریندر مودی کی حمایت نہیں کرتے، انہیں پاکستان چلے جانا چاہئے۔ ان کے اس بیان کی زبردست تنقید ہوئی تھی اور اپوزیشن نے بھی اس بیان کو لے کر طویل وقت تک مودی حکومت پر تنقید کی تھی۔
First published: Jun 04, 2018 05:09 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading