ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

اترپردیش میں بی جے پی نے انتخابی بگل پھونکا ، امت شاہ کا کانگریس پر تیکھا نشانہ

الہ آباد : بی جے پی کے مجلس عاملہ کا اجلاس شروع ہو گیا ہے ۔ اجلاس میں حصہ لینے کے لئے وزیر اعظم نریندر مودی بھی الہ آباد پہنچ گئے ہیں ۔

  • Pradesh18
  • Last Updated: Jun 12, 2016 10:30 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
اترپردیش میں بی جے پی نے انتخابی بگل پھونکا ، امت شاہ کا کانگریس پر تیکھا نشانہ
الہ آباد : بی جے پی کے مجلس عاملہ کا اجلاس شروع ہو گیا ہے ۔ اجلاس میں حصہ لینے کے لئے وزیر اعظم نریندر مودی بھی الہ آباد پہنچ گئے ہیں ۔

الہ آباد : بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے گنگا جمنا اور سرسوتی دریا کے سنگم پر اترپردیش میں اگلے برس مکمل اکثریت والی حکومت بنانے کا آج عہد کرنے کے ساتھ ساتھ 2019 کے لوک سبھا انتخابات کے لئے بھی پارٹی کے کمر کسنے کا اعلان کر دیا.

وزیر اعظم نریندر مودی کی موجودگی میں پارٹی صدر امت شاہ نے بی جے پی قومی مجلس عاملہ کے افتتاحی اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے پارٹی کے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ نریندر مودی موبائل ایپ کے ساتھ عوام کے درمیان جاکر دو سال کے مودی حکومت کے کام کاج کی تشہیر کریں اور 2019 میں لوک سبھا کے انتخابات میں مکمل اکثریت سے مودی حکومت کو پھر سے اقتدار میں لانے کے لیے کمر کس لیں.  مجلس عاملہ کے افتتاحی سیشن میں اسٹیج پر وزیر اعظم اور پارٹی صدر کے ساتھ سابق نائب وزیر اعظم لال کرشن اڈوانی اور وزیر خزانہ ارون جیٹلی موجود تھے ۔

بی جے پی صدر نے کہا کہ ملک میں کانگریس تیزی سے شکست کھارہی ہے. اس پارٹی کے وفادار لوگ اب باہر جانے لگے ہیں. کانگریس کا ایسا حشر ترقی کی راہ میں رکاوٹ ڈالنے کی وجہ سے ہوا ہے. انہوں نے حال ہی میں ہوئے اسمبلی انتخابات میں بی جے پی کی اچھی کارکردگی کا ذکر کیا اور کہا کہ ایسا کانگریس سے لوگوں کی مایوسی کی وجہ سے نہیں بلکہ پارٹی کارکنوں کی محنت، حکومت کے کام کاج اور پارٹی قیادت کے طرز عمل سے ہو رہا ہے۔


میٹنگ کے افتتاحی سیشن کے بعد مرکزی مواصلات اور انفارمیشن ٹیکنالوجی وزیر روی شنکر پرساد نے پریس کانفرنس میں مسٹر شاہ کے حوالے سے کہا، "ملک میں بی جے پی کا عروج کانگریس سے لوگوں کے مایوس ہونے سے نہیں، بلکہ نظریے اور کارکنوں کی محنت، حکومت کے کام کاج اور قیادت کے طرز عمل سے ہو رہا ہے ۔

مسٹر پرساد کے مطابق بی جے پی صدر نے اپنے خطاب کا آغاز کرتے ہوئے کہا کہ اس سال دو فیصلہ کن واقعات ہوئے۔پہلا مودی حکومت کا دوبرس مکمل کرنا اور پانچ ریاستوں میں بی جے پی کی شاندار کارکردگی، جس میں آسام میں مکمل اکثریت والی حکومت کا قیام شامل ہے. انہوں نے کہا کہ آسام کے راستے شمال مشرق میں بی جے پی کے لئے دروازہ کھل گیا اور کیرالہ میں ایک نشست پر کامیابی اور ساتھیوں کے ساتھ 15 فیصد ووٹ ملا. مغربی بنگال میں ساتھیوں کے ساتھ 10 فیصد ووٹ ملے ۔
انہوں نے کہا کہ بی جے پی کے لیے یہ انتخابات ایک بہتر مستقبل کیلئے خوشگوار آغاز ثابت ہوئے ہیں. بی جے پی اب اڑیسہ، آندھرا پردیش، تلنگانہ، تمل ناڈو اور کیرالہ ۔کیرومنڈل ریاستوں میں اپنی رسائی بڑھائے گی۔ انہوں نے بی جے پی کی انتخابی کامیابیوں کا سہرا مودی حکومت کے دو سال کے کام کاج کے سر باندھا اور کہا کہ وزیر اعظم مسٹر مودی نے ملک کو پالیسی کی معذوری سے باہر نکالا اور ایک فیصلہ کن حکومت دی. انہوں نے کہا کہ حکومت میں فیصلہ سازی کا عمل بالکل واضح ہے. فیصلے سیاسی قیادت کرتی ہے اور نوکر شاہی ایمانداری سے اس پر عمل کرتی ہے.
مودی حکومت کے دو سال پورے ہونے پر ملک کے 250 مقامات پر ترقی اتسو کے انعقاد کو جمہوری جوابدہی کا نیا پیمانہ قرار دیتے ہوئے کہا، "یہ عوامی روابط کی حیرت انگیز مثال ہے جہاں مرکزی وزیر اور بی جے پی کے عہدیدار عوام کے درمیان جا رہے ہیں." انہوں نے کہا کہ اس حکومت نے سابقہ حکومت کے دورکے تمام مسائل کو ختم کر دیا ہے. ملک میں گاؤں اور شہروں کی ترقی، اصلاحات اور عوامی فلاح و بہبود کے درمیان توازن قائم کیا گیا ہے. دفاعی پالیسی اور خارجہ پالیسی کے ٹکراؤ کو ختم کیا ہے.
First published: Jun 12, 2016 04:33 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading