ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ایک ہزار کے بعد اب 500 کے پرانے نوٹ بھی بند، بینکوں میں ہی بدلے جا سکیں گے

نوٹ بندی سے منسلک دوسری اہم خبر یہ ہے کہ ایک ہزار اور پانچ سو کے پرانے نوٹ گزشتہ رات سے مکمل طور پر بند ہو گئے ہیں۔

  • News18.com
  • Last Updated: Dec 03, 2016 08:49 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ایک ہزار کے بعد اب 500 کے پرانے نوٹ بھی بند، بینکوں میں ہی بدلے جا سکیں گے
نوٹ بندی سے منسلک دوسری اہم خبر یہ ہے کہ ایک ہزار اور پانچ سو کے پرانے نوٹ گزشتہ رات سے مکمل طور پر بند ہو گئے ہیں۔

نئی دہلی۔ نئے مہینے کا پہلا ویک اینڈ ہے لیکن اس ویک اینڈ پر مستی کرنے کی شاید نہ تو لوگوں کے پاس فرصت ہوگی اور نہ ہی جیب میں گرمی ہو گی۔ کیونکہ کیش کی قطاریں اب تک کم نہیں ہوئی ہیں۔ اکا دکا اے ٹی ایم کام کر رہے ہیں جن پر بھی لوگوں کی طویل قطاریں ڈرانے والی ہیں۔ مطلب یہ ہے کہ چھٹی کا دن ملک کو اے ٹی ایم کی قطار میں گزارنا پڑ سکتا ہے۔


وہیں، نوٹ بندی سے منسلک دوسری اہم خبر یہ ہے کہ ایک ہزار اور پانچ سو کے پرانے نوٹ گزشتہ رات سے مکمل طور پر بند ہو گئے ہیں۔ چاہے ٹول پلازہ ہوں یا پٹرول پمپ کہیں بھی پرانے نوٹ اب نہیں چل پائیں گے۔ یعنی ملک میں پرانے نوٹوں کا چلن اب غیر قانونی ہو گیا۔ لوگوں کے پاس جو ایک ہزار اور پانچ سو کے پرانے نوٹ باقی ہیں، وہ اب صرف بینکوں میں ہی بدلے جا سکتے ہیں۔


گزشتہ رات سے ہی پٹرول پمپوں نے پرانے نوٹ لینے بند کر دیئے۔ تو وہیں نوٹ بندی کے بعد سے ہی ملک بھر کے نیشنل ہائی وے پر ٹول پلازہ اب تک مفت تھے، لیکن گزشتہ رات سے لوگوں کو اب ٹول ناكوں پر ٹول ٹیکس دینا پڑ رہا ہے۔


تو وہیں انکم ٹیکس محکمہ نے جن دھن اکاؤنٹس میں کالے دھن کے کھیل کا انکشاف کیا ہے۔ 6 ریاستوں کے جن دھن اکاؤنٹس کی جانچ کے بعد پتہ لگا ہے کہ ان کے اکاؤنٹس میں ایک کروڑ 64 لاکھ کی بے حساب رقم جمع کرائی گئی تھی۔ بہار میں تو صرف ایک ہی اکاؤنٹ میں 40 لاکھ روپے جمع کرائے گئے۔ محکمہ انکم ٹیکس جن دھن اکاؤنٹس میں ہوئے لین دین پر خاص نظر رکھے ہوئے ہے۔
First published: Dec 03, 2016 08:48 AM IST