ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

انوپم کھیر کا مارچ فار انڈیا، کہا، ہمارے ملک میں نہیں ہے عدم برداشت کا ماحول

نئی دہلی۔ ہندستان میں عدم برداشت کے معاملے پر ملک میں جاری بحث کے درمیان بالی ووڈ بھی منقسم ہو گیا ہے۔

  • IBN7
  • Last Updated: Nov 07, 2015 11:40 AM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
انوپم کھیر کا مارچ فار انڈیا، کہا، ہمارے ملک میں نہیں ہے عدم برداشت کا ماحول
نئی دہلی۔ ہندستان میں عدم برداشت کے معاملے پر ملک میں جاری بحث کے درمیان بالی ووڈ بھی منقسم ہو گیا ہے۔

نئی دہلی۔ ہندستان میں عدم برداشت کے معاملے پر ملک میں جاری بحث کے درمیان بالی ووڈ بھی منقسم ہو گیا ہے۔ ایک خیمہ مسلسل ایوارڈ واپس کر رہا ہے تو اب اداکار انوپم کھیر کی قیادت میں دوسرا خیمہ اس کی مخالفت میں سڑک پر اتر آیا ہے۔ انوپم کھیر آج دہلی کے نیشنل میوزیم سے راشٹرپتی بھون تک مارچ نکال رہے ہیں۔ یہاں پر کئی فلمساز اور عام لوگ اکھٹا ہوئے ہیں۔


مارچ کو لے کر انوپم کھیر نے کہا کہ ہم دنیا کو یہ پیغام پہنچانا چاہتے ہیں کہ ہمارے ملک کی جو تصویر خراب کرنے کی کوشش کی جا رہی ہے وہ غلط ہے۔ ہمارا ملک روادار ہے۔ آزاد ہندوستان میں چھوٹی موٹی چیزیں ہوتی ہیں۔ ہندستان ایک عظیم ملک ہے اور ہمیں اس پر فخر ہے۔ کچھ ایسے لوگ جن کے اپنے مفاد ہیں، اس کی شبیہ خراب کرنے کی کوشش کرتے ہیں۔


انوپم کھیر نے کہا کہ میں پوری دنیا کے تمام ہندوستانیوں کا شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں جنہوں نے ہماری حمایت کی ہے۔ میں نیشنل میوزیم سے راشٹرپتی بھون تک مارچ نکال رہا ہوں۔ کئی سارے ادیبوں اور شاعروں کے ساتھ ہماری میٹنگ ہوئی ہے۔ ہر ملک میں صورت حال اوپر-نیچے ہوتی رہتی ہے لیکن اس کا مطلب یہ نہیں ہے کہ ملک عدم روادار ہو گیا ہے۔ میں اس کے خلاف ہوں۔  آج بھی ہمارا یوم آزادی ہے۔15 اگست 1947 کے بعد روزانہ یوم آزادی منانا چاہئے۔


انوپم کھیر نے نیشنل میوزیم پہنچ کر اپنے خطاب میں کہا کہ جب آپ ملک سے باہر جاتے ہیں تو آپ سے پوچھا جاتا ہے کہ آپ کی قومیت کیا ہے۔ میں شکریہ ادا کرنا چاہتا ہوں میڈیا کا جس نے ہمارے مقصد کو لوگوں تک پہنچانے کا کام کیا ہے۔ آج میڈیا اور سوشل میڈیا کی طاقت سے ہم کسی پریس کانفرنس یا کسی سیاسی پارٹی کے محتاج نہیں ہیں۔ جو لوگ ہمارے ملک میں عدم برداشت بتا رہے ہیں، انہیں بتانے کے لئے ہم اکٹھا ہوئے ہیں کہ ہمارا ملک عدم برداشت والا ملک نہیں ہے۔

انوپم کھیر نے لوگوں سے اپیل کی کہ جب بھی جائیں پانی کی بوتلیں اور ردی کی ٹوکری اٹھا کر لے کر جائیں تاکہ کسی کو یہ کہنے کا موقع نہیں ملے کہ یہ لوگ مارچ کر کے تو چلے گئے لیکن وزیر اعظم کے سوچھ بھارت ابھیان کا دھیان نہیں رکھا۔

اس مارچ میں انوپم کھیر کے ساتھ مدھر بھنڈارکر، اشوک پنڈت، مالنی اوستھی اور راجا بندیلا کے علاوہ بھی بالی ووڈ سے منسلک بہت سے لوگ شامل ہیں۔ انوپم کھیر کا کہنا ہے کہ جو لوگ ایوارڈ واپس کر رہے ہیں وہ ایک گینگ ہے جو مودی کے خلاف ہے اور اگر ایسا نہیں ہوتا تو یو پی اے حکومت کے دوران بھی ایوارڈ لوٹائے گئے ہوتے۔
First published: Nov 07, 2015 11:39 AM IST