ہوم » نیوز » جموں وکشمیر

بانڈی پورہ کے اس سرحدی علاقے میں ریلائنس جیو نے پہلی مرتبہ شروع  کی موبائل سروس،  سال کے آخر تک سترہ 17 ٹاور کئےجائیں گے نصب

بانڈی پورہ کے سرحدی علاقے گریز میں اس سال کے آخر تک سترہ مقامات پر موبائل ٹاور نصب کئے جائیں گے۔ واضح رہے بانڈی پورہ کے اس سرحدی علاقے میں ریلائنس جیو نے دو سال قبل اپنی سروس شروع کی تھی اور یوں ریلائنس جیو اس سرحدی علاقے میں موبائل انٹرنیٹ فراہم کرنے والی پہلی کمپنی بن گئی تھی۔

  • Share this:
بانڈی پورہ کے اس سرحدی علاقے میں ریلائنس جیو نے پہلی مرتبہ  شروع  کی موبائل سروس،  سال کے آخر تک سترہ 17 ٹاور کئےجائیں گے نصب
بانڈی پورہ کے سرحدی علاقے گریز میں اس سال کے آخر تک سترہ مقامات پر موبائل ٹاور نصب کئے جائیں گے۔

بانڈی پورہ کے سرحدی علاقے گریز میں اس سال کے آخر تک سترہ مقامات پر موبائل ٹاور نصب کئے جائیں گے۔ واضح رہے دو وادیوں گریز اور تُلیل میں مواصلاتی نظام نہ ہونے کے برابر ہے۔ مواصلاتی نظام کی عدم دستیابی کا اندازہ اس بات سے لگایا جاتا ہے کہ علاقے میں لوگوں کو آج کے دور میں بھی فوج کی جانب سے نصب کئے گئے وی پی ٹی (ولیج پبلک ٹیلی فون) کا استعمال کرنا پڑتا ہے۔ تاہم حوصلہ افزا بات یہ ہے کہ گریز میں ریلائنس جیو نے پہلی بار اس سرحدی علاقے میں موبائل سروس شروع کی جس دوران جیو نے گریز میں تین موبائل ٹاور نصب کئے گئے جب کہ تُلیل کے پہلے گاوں برنائی میں جیو کی جانب سے تعمیر کیا گیا ٹاور لگ بھگ مکمل ہوگیا ہے چناچہ علاقے میں موثر مواصلاتی نظام نہ ہونے کی وجہ سے علاقے کے لوگوں کو شدید مشکلات کا سامنا ہے۔

ادھر گریز و تُلیل کے لوگوں کو مناسب مواصلاتی نظام فراہم کرنے کے لئے ضلع انتظامیہ بانڈی پورہ اور ریلائنس جیو کے مقامی عہدیداروں کے درمیان ایک میٹنگ ہوئی جس دوران یہ طے پایا کہ اس سال کے آخر تک گریز اور تُلیل میں سترہ مقامات پر جیو موبائل ٹاور نصب کئے جائیں گے اور یوں اس دور دراز علاقے کے لوگوں کو بھی مناسب مواصلاتی نظام فراہم ہوگا یہاں یہ بات قابل زکر ہے کہ ریلائنس جیو پہلی ایسی مواصلاتی کمپنی ہے جس نے گریز میں لوگوں کو موبائل انٹرنیٹ سروس فراہم کی۔


واضح رہے بھاری برف باری کی وجہ سے گریز علاقہ چھ ماہ تک باقی ملک سے کٹ کر رہ جاتا ہے اور مواصلاتی نظام نا ہونے کی وجہ سے لوگوں کے مشکلات میں ناقابل بیان اضافہ ہوجاتا ہے ادھر انتظامیہ اور ریلائنس جیو کے درمیان ہوئی میٹنگ میں یہ بھی طے پایا ہے کہ ٹاور نصب کرنے کے معاملے میں تیزی لائی جائے گی کیونکہ نومبر کے مہینے سے ہی گریز میں برف باری کا سلسلہ شروع ہوسکتا ہے اور پھر علاقے میں تمام تر تعمیراتی کام چھ ماہ تک بند ہوجاتے ہیں۔

Published by: Sana Naeem
First published: Jul 26, 2020 03:46 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading