ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

وسیم رضوی کے خلاف دھوکہ دہی معاملے میں سی بی آئی نے درج کی ایف آئی آر، محسن رضا بولے۔ دیکھتے جائیے کئی اور نام آئیں گے سامنے

مرکزی جانچ ایجنسی نے لکھنئو اور پریاگ راج میں درج معاملوں کو بنیاد بناتے ہوئے وسیم رضوی کے خلاف ایف آئی آر درج کی ہے۔ رضوی پر الزام ہے کہ انہوں نے شیعہ وقف بورڈ کا چئیرمین رہتے ہوئے وقف کی املاک کی خرید وفروخت میں گھوٹالہ کیا ہے۔

  • Share this:
وسیم رضوی کے خلاف دھوکہ دہی معاملے میں سی بی آئی نے درج کی ایف آئی آر، محسن رضا بولے۔ دیکھتے جائیے کئی اور نام آئیں گے سامنے
شیعہ سینٹرل وقف بورڈ کے سابق چئیرمین وسیم رضوی کی فائل فوٹو

لکھنئو۔ شیعہ سینٹرل وقف بورڈ کے سابق چئیرمین وسیم رضوی کی مشکلیں بڑھنے والی ہیں۔ وقف بورڈ کی املاک کی خرید وفروخت میں دھوکہ دہی کی شکایت کے بعد سی بی آئی نے رضوی کے خلاف دو ایف آئی آر درج کی ہیں۔ مرکزی جانچ ایجنسی کی انسداد بدعنوانی شاخ نے یہ کارروائی کی ہے۔ معلوم ہو کہ پریاگ راج اور کانپور میں وقف املاک کی خرید وفروخت کی گئی تھی۔ اسی میں دھوکہ دہی اور گڑبڑی کا الزام لگا تھا۔



وقف کی املاک بیچنے کو لے کر 8 اگست 2016 میں پریاگ راج کوتوالی میں ایف آئی آر درج کی گئی تھی۔ اس کے علاوہ 27 مارچ 2017 کو لکھنئو کے حضرت گنج میں کانپور واقع وقف کی املاک کو منتقل کرنے پر معاملہ درج کیا گیا تھا۔ مرکزی جانچ ایجنسی نے لکھنئو اور پریاگ راج میں درج معاملوں کو بنیاد بناتے ہوئے وسیم رضوی کے خلاف ایف آئی آر درج کی ہے۔ رضوی پر الزام ہے کہ انہوں نے شیعہ وقف بورڈ کا چئیرمین رہتے ہوئے وقف کی املاک کی خرید وفروخت میں گھوٹالہ کیا ہے۔

یوپی حکومت نے کی تھی سی بی آئی جانچ کی سفارش

لکھنئو میں درج ہوئے معاملے میں وقف بورڈ کے دیگر دو افسروں سمیت پانچ کو نامزد کیا گیا ہے۔ شیعہ وقف بورڈ کی املاک میں گڑبڑی کے دونوں معاملے سامنے آنے کے بعد اترپردیش حکومت نے ان معاملوں کی جانچ سی بی آئی سے کرانے کی سفارش کی تھی۔ مرکزی جانچ ایجنسی نے ابتدائی جانچ پڑتال کے بعد اب ان دونوں معاملوں میں ایف آئی آر درج کی ہے۔

دیکھتے جائیے کئی اور نام سامنے آئیں گے: محسن رضا

ادھر، اس پورے معاملے میں یوگی حکومت میں اقلیتی فلاح وبہبود کے ریاستی وزیر محسن رضا نے کہا کہ دراصل وقف بورڈوں میں بدعنوانی کی شکایتیں بہت پہلے سے کی جا رہی تھیں۔ سی بی آئی جانچ کی سفارش یوگی حکومت نے بہت پہلے ہی کر دی تھی۔ یہ ہزاروں کروڑ کا گھوٹالہ ہے۔ آگے آگے دیکھتے جائیے اس میں ابھی اور کئی نام سامنے آئیں گے۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Nov 20, 2020 10:33 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading