உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Karol Bagh: پی جی میں سیکورٹی گارڈنےکی لڑکیوں کےساتھ بدتمیزی! سی سی ٹی وی فوٹیج میں ہواریکارڈ

    سخت ترین کارروائی کی جائے۔

    سخت ترین کارروائی کی جائے۔

    دریں اثنا دہلی کمیشن برائے خواتین (DCW) نے کارروائی کا مطالبہ کیا ہے اور دہلی پولیس سے اس معاملے میں ایف آئی آر درج کرنے اور ملزم کو گرفتار کرنے کو کہا ہے۔ اس نے پولیس کو ہدایت دی ہے کہ وہ 18 اگست کی شام 4 بجے تک تازہ ترین کارروائی کی رپورٹ پیش کرے۔

    • Share this:
      نئی دہلی کے ایک نجی ہاسٹل کی ایک چونکا دینے والی سی سی ٹی وی فوٹیج سامنے آئی ہے۔ جس میں ایک سیکیورٹی گارڈ ہاسٹل کی لڑکیوں کو مارتا اور چھیڑتا ہوا نظر آرہا ہے۔ یہ فوٹیج سوشل میڈیا پر گردش کر رہی ہے۔ یہ واقعہ 13 اگست کو کرول باغ (Karol Bagh) علاقہ میں واقع گولڈز ولا پی جی (Golds Villa PG) میں پیش آیا۔

      اس واقعے کے بعد متاثرہ نے اگلے دن پی جی خالی کر دیا۔ ویڈیو میں گارڈ لڑکیوں کو گھسیٹتے ہوئے دیکھا جا رہا ہے، جس کے بارے میں خیال کیا جاتا ہے کہ وہ نشے کی حالت میں تھا۔ یہ گھسیٹتے ہوئے راہداری کی طرف بڑھ رہا تھا۔ سی سی ٹی وی فوٹیج کی بنیاد پر پولیس نے اس معاملے میں سوموٹو درج کر لیا ہے۔

      ایک سینئر پولیس اہلکار نے کہا کہ چونکہ شکایت کنندہ مکمل طور پر بیان دینے کے خلاف ہے، اس لیے قانونی رائے لی گئی اور قانونی رائے کے مطابق اور ویڈیو فوٹیج کی روشنی میں اس معاملے میں پولیس کی جانب سے ازخود ایف آئی آر درج کی جا رہی ہے۔


      یہ بھی پڑھیں: 

      لارین گوٹیب نے رلیشن شپ کو لیکر کیا بڑا انکشاف، بوائے فرینڈ کے ساتھ شیئر کی کس کرتی ہوئی تصاویر

      دریں اثنا دہلی کمیشن برائے خواتین (DCW) نے کارروائی کا مطالبہ کیا ہے اور دہلی پولیس سے اس معاملے میں ایف آئی آر درج کرنے اور ملزم کو گرفتار کرنے کو کہا ہے۔ اس نے پولیس کو ہدایت دی ہے کہ وہ 18 اگست کی شام 4 بجے تک تازہ ترین کارروائی کی رپورٹ پیش کرے۔

      یہ بھی پڑھیں: 

      BJP پارلیمانی بورڈ میں بڑی تبدیلی، نتن گڈکری-شیوراج سنگھ چوہان کی چھٹی، ان نئے چہروں کو کیا گیا شامل

      کمیشن کو ایک پریشان کن واقعہ کی اطلاع دی گئی ہے۔ ایف آئی آر فوری درج کی جائے اور ملزمان کو گرفتار کیا جائے۔ دہلی کمیشن برائے خواتین کی چیئرپرسن سواتی مالیوال (Swati Maliwal) نے کہا کہ اس ایکٹ کی خلاف ورزی پریشان کن ہے اور سخت ترین کارروائی کی ضرورت ہے۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: