உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    سی سی ٹی وی معاملہ: انل بیجل کی رہائش گاہ پروزرا اورممبران اسمبلی کے ساتھ دھرنے پر بیٹھے کیجریوال

    دہلی میں سی سی ٹی وی کیمرے لگانے کے معاملے پر پیر کو دہلی کی عام آدمی پارٹی کی حکومت اور لیفٹیننٹ گورنر کے درمیان لڑائی تیز ہوگئی۔ پیر کو وزیراعلیٰ اروند کجریوال، ان کے کابینی وزرا اور ممبران اسمبلی ایل جی دفتر کے پاس دھرنے پر بیٹھے تھے

    دہلی میں سی سی ٹی وی کیمرے لگانے کے معاملے پر پیر کو دہلی کی عام آدمی پارٹی کی حکومت اور لیفٹیننٹ گورنر کے درمیان لڑائی تیز ہوگئی۔ پیر کو وزیراعلیٰ اروند کجریوال، ان کے کابینی وزرا اور ممبران اسمبلی ایل جی دفتر کے پاس دھرنے پر بیٹھے تھے

    دہلی میں سی سی ٹی وی کیمرے لگانے کے معاملے پر پیر کو دہلی کی عام آدمی پارٹی کی حکومت اور لیفٹیننٹ گورنر کے درمیان لڑائی تیز ہوگئی۔ پیر کو وزیراعلیٰ اروند کجریوال، ان کے کابینی وزرا اور ممبران اسمبلی ایل جی دفتر کے پاس دھرنے پر بیٹھے تھے

    • Share this:
      نئی دہلی: دہلی میں سی سی ٹی وی کیمرے لگانے کے معاملے پر پیر کو دہلی کی عام آدمی پارٹی کی حکومت اور لیفٹیننٹ گورنر کے درمیان لڑائی تیز ہوگئی۔ پیر کو وزیراعلیٰ اروند کجریوال، ان کے کابینی وزرا اور ممبران اسمبلی ایل جی دفتر کے پاس دھرنے پر بیٹھے تھے۔ وہ ایل جی سے مطالبہ کررہے تھے کہ وہ بی جے پی کے دبائو میں آکر یہ کام نہ ملتوی کریں۔

      ایل جی انل بیجل کے دفتر میں تعینات پولیس افسران نے دھرنے پر بیٹھے وزیراعلیٰ اروند کجریوال اور ان کے رفقا کو بتایا کہ وہ اور ان کے وزرا انل بیجل سے ملاقات کرسکتے ہیں، لیکن آپ ممبران اسمبلی کو ان کے ساتھ جانے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

      اس کے کچھ ہی وقت کے بعد کجریوال ، ان کے وزرا، ممبران اسمبلی اور پارٹی کے حامی انل بیجل کے دفتر سے صرف 100 میٹر دور احتجاج پر بیٹھ گئے۔ کجریوال نے کہاکہ ایل جی ممبران اسمبلی سے ملنا نہیں چاہتے ہیں، وہ صرف مجھ سے اور کابینی وزرا سے ملنا چاہتے ہیں۔ ایل جی کو ممبران اسمبلی سے ملنا ہوگا۔ میں ان سے، وزرا اور ممبران اسمبلی کے ساتھ ملاقات کروں گا۔

      احتجاجی مظاہرہ سے قبل آپ کے لیڈروں نے سول لائنس علاقے میں کجریوال کے سرکاری رہائش گاہ سے بیجل کے دفتر تک مارچ نکالا اور گزارش کی کہ بی جے پی کے دباو میں آکر سی سی ٹی وی کا کام نہ روکیں۔

      آپ لیڈر نے مہاتما گاندھی کے پسندیدہ بھجن "رگھوپتی راگھو راجا رام" گایا اور ایل جی کی بہتری کے لئے دعائیں کیں۔ بیجل کے دفتر کے پاس احتجاجی مظاہرہ کی وجہ سے علاقے میں گاڑیوں کی آمدورفت میں رکاوٹ آئی۔ دوسری جانب احتجاجی مظاہرہ کو دیکھتے ہوئے بڑی تعداد میں پولیس فورس کو تعینات کیا گیاتھا۔

      کجریوال نے نائب وزیراعلیٰ منیش سسودیا اور پی ڈبلیو ڈی وزیر ستیندر جین اور آپ کے ممبران اسمبلی سمیت ان کے وزرا کے معاونین نے پولیس سیکورٹی کے تحت 3 بجے اپنا مارچ شروع کیا۔

      دو کلو میٹر کے مارچ کے دوران انہوں نے ایل جی اور بی جے پی کے خلاف نعرے لگائے۔ اس دوران کجریوال نے بی جے پی پر حملہ کیا اور الزام لگایا کہ وہ دہلی میں سی سی ٹی وی کیمرے نہیں لگنے دینا چاہتے ہیں اور اس لئے ایل جی کے دفتر کے ذریعہ اس اسکیم کو روک دیا گیاہے۔

       

       
      First published: