உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    رمضان میں دہشت گردوں پر فائرنگ نہ کرنے پر بولے ڈی جی پی"ہمیں جوبہتر لگے گا وہ کریں گے"۔

    فائل فوٹو

    فائل فوٹو

    رکزی حکومت نے جموں وکشمیر میں رمضان کے دوران نو آپریشن یعنی دہشت گردوں پر گولیاں نہیں چلانے کا اعلان کیا ہے۔ جموں وکشمیر کے ڈی جی پی ایس پی ویدھ نے اس فیصلے کو مثبت بتایا ہے۔ حالانکہ ڈی جی پی کا کہنا ہے کہ دہشت گردوں کے منصوبوں کو ناکام کرنے کے لئے انہیں جو صحیح اور مناسب لگے گا وہی کریں گے۔

    • Share this:
      سری نگر: مرکزی حکومت نے جموں وکشمیر میں رمضان کے دوران نو آپریشن یعنی دہشت گردوں پر گولیاں نہیں چلانے کا اعلان کیا ہے۔ جموں وکشمیر کے ڈی جی پی ایس پی ویدھ نے اس فیصلے کو مثبت بتایا ہے۔ حالانکہ ڈی جی پی کا کہنا ہے کہ دہشت گردوں کے منصوبوں کو ناکام کرنے کے لئے انہیں جو صحیح اور مناسب لگے گا وہی کریں گے۔

      اتوار کو میڈیا سے بات کرتے ہوئے ڈی جی پی ایس پی ویدھ نے یہ باتیں کہیں۔ انہوں نے کہاکہ ہمیں امید ہے کہ مرکز کے اس فیصلے سے لوگوں کی زندگی پر مثبت اثر پڑے گا۔ اسی ماہ شروع ہورہی امرناتھ یاترا کو لے کر انہوں نے کہا کہ مرکز کے اس فیصلے کے بعد ہمیں امید ہے کہ امرناتھ یاترا کو پرامن طریقے سے کرایاجاسکے گا۔ وادی میں بھی ایک بہتر ماحول قائم کرنے میں مدد ملے گی۔

      واضح رہے کہ ڈی جی پی ایس پی ویدھ سے پہلے ہندوستانی فوج نے بھی وادی میں یکطرفہ سیز فائر کے فیصلے کو صحیح بتاتے ہوئے اس کی تعریف کی۔

      وہیں دہشت گرد تنظیم لشکر طیبہ کے حالیہ حملے پر ڈی جی پی نے کہاکہ لکشر طیبہ کا بیان اس کی اپنی سوچ ہے اور ہم وہی کریں گے جو ہمیں صحیح لگتا ہے۔ دراصل 16 مئی کو لشکرطیبہ نے مرکز کی سیز فائر فیصلے کی مخالفت کی تھی۔ لشکر نے کہا تھا کہ دہشت گردی پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہوسکتا۔ حملے رمضان میں بھی جاری رہیں گے۔

      کچھ دن قبل وزارت داخلہ نے ٹوئٹ کرکے جانکاری دی ہے کہ مرکزی حکومت نے سیکورٹی اہلکاروں کوحکم دیا ہے کہ رمضان کے مبارک ماہ میں سیکورٹی فورسیز کوئی فوجی آپریشن نہ کریں۔ یہ فیصلہ مرکزی حکومت نے پرامن حالات میں یقین رکھنے والے مسلمانوں کو دیکھتے ہوئے لیا ہے۔ اس فیصلے سے انہیں رمضان کے دوران کوئی پریشانی کا سامنا نہیں کرنا پڑے گا اور وہ پرامن طریقے سے رہ سکیں گے۔

      وزارت داخلہ نے ٹوئٹ کرکے یہ بھی کہاکہ اسلام سے دہشت گردی اور تشدد کو الگ کرناضروری ہے۔ وزارت داخلہ نے کہا ہے کہ جب تک معصوم عوام پر کوئی دہشت گردانہ حملہ نہ ہو تب تک فائرنگ نہ کریں۔ وزارت نے یہ بھی کہا ہے کہ یہ فیصلہ مسلم بھائی، بہنوں کی حفاظت کے لئے لیا گیا ہے تا کہ وہ رمضان کے دوران امن وسکون سے رہ سکیں۔

       
      First published: