உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    مودی حکومت کا فیصلہ ، مسلم شخص کا منہ کالا کرکے بازار میں گھمانے والے بجرنگ دل لیڈر سے ہٹایا این ایس اے

    میرٹھ : مرکزی حکومت نے بجرنگ دل کے لیڈر وویک پریمی پر سے نیشنل سیکورٹی ایکٹ (این ایس اے) ہٹانے کا فیصلہ کیا ہے۔ خیال رہے کہ پریمی نے ایک مسلم شخص کا منہ کالا کر اس کو شاملی کے بھرے بازار میں گھمایا اور مارا پیٹا تھا، جس کے بعد اس کو این ایس اے لگا کر جون 2015 میں جیل بھیج دیا گیا۔

    میرٹھ : مرکزی حکومت نے بجرنگ دل کے لیڈر وویک پریمی پر سے نیشنل سیکورٹی ایکٹ (این ایس اے) ہٹانے کا فیصلہ کیا ہے۔ خیال رہے کہ پریمی نے ایک مسلم شخص کا منہ کالا کر اس کو شاملی کے بھرے بازار میں گھمایا اور مارا پیٹا تھا، جس کے بعد اس کو این ایس اے لگا کر جون 2015 میں جیل بھیج دیا گیا۔

    میرٹھ : مرکزی حکومت نے بجرنگ دل کے لیڈر وویک پریمی پر سے نیشنل سیکورٹی ایکٹ (این ایس اے) ہٹانے کا فیصلہ کیا ہے۔ خیال رہے کہ پریمی نے ایک مسلم شخص کا منہ کالا کر اس کو شاملی کے بھرے بازار میں گھمایا اور مارا پیٹا تھا، جس کے بعد اس کو این ایس اے لگا کر جون 2015 میں جیل بھیج دیا گیا۔

    • News18
    • Last Updated :
    • Share this:

      میرٹھ : مرکزی حکومت نے بجرنگ دل کے لیڈر وویک پریمی پر سے نیشنل سیکورٹی ایکٹ (این ایس اے) ہٹانے کا فیصلہ کیا ہے۔ خیال رہے کہ پریمی نے ایک مسلم شخص کا منہ کالا کر اس کو شاملی کے بھرے بازار میں گھمایا اور مارا پیٹا تھا، جس کے بعد اس کو این ایس اے لگا کر جون 2015 میں جیل بھیج دیا گیا۔


      مرکزی حکومت کے اس فیصلے کے سے وویک پریمی کی جیل سے باہر آنے کی راہ آسان ہو جائے گی ، کیونکہ جیسے ہی وہ دیگر معاملات میں ضمانت کے لئے درخواست دائر کرے گا ، اس کو ضمانت مل جائے گی۔ اس سلسلے میں وزارت داخلہ نے حکم کی کاپی ریڈیوگرام کے ذریعہ 31 دسمبر کو ریاست کے داخلہ سکریٹری، شاملی ضلع مجسٹریٹ، پریمی اور مظفرنگر جیل سپرنٹنڈنٹ کو بھیج دی ہے۔


      قابل ذکر ہے کہ اس واقعہ کا ویڈیو وائرل ہونے کے بعد اس وقت کے ضلع مجسٹریٹ نے پریمی کے خلاف این ایس اے لگا یا تھا۔ ویڈیو میں پریمی ایک آدمی کو سرےراه زدوکوب کرتا نظر آ رہا تھا ، جس کے بعد علاقے میں فرقہ وارانہ کشیدگی پیدا ہو گئی تھی۔


      پریمی اور دیگر بجرنگ دل کے کارکنوں کا الزام تھا کہ محمد ریاض ایک گائے کے بچھڑے کو چراکر لے جا رہا تھا۔ ان کا الزام تھا ریاض بچھڑا کو سلاٹر ہاؤس لے جایا جا رہا تھا۔ ریاض کو پولیس کے حوالے کر دیا گیا تھا ، جہاں سے کورٹ نے اسے جیل بھیج دیاتھا۔


      ریاض کے جیل بھیجے جانے کے بعد پولیس نے پریمی اور اس کے پانچ ساتھیوں کے خلاف انڈین پینل کوڈ کی کئی دفعات کے تحت مقدمہ درج کرکے اسے جیل بھیج دیا تھا۔

      First published: