ہوم » نیوز » No Category

ڈی ڈی سی اے پر جنگ تیز، جیٹلی کے خلاف کمیشن کو مرکز نے غیر قانونی قرار دیا

نئی دہلی : مرکزی حکومت نے ڈی ڈی سی اے مقدمات کی تحقیقات کے لئے دہلی حکومت کی طرف سے قائم کردہ انکوائری کمیشن کو غیر آئینی اور غیر قانونی قرار دے دیا ہے۔ مرکز کے اس فیصلے سے دونوں حکومتوں کے درمیان جاری تنازع کے مزید گهرانے کا خدشہ بڑھ گیا ہے۔

  • Agencies
  • Last Updated: Jan 08, 2016 03:17 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
ڈی ڈی سی اے پر جنگ تیز، جیٹلی کے خلاف کمیشن کو مرکز نے غیر قانونی قرار دیا
نئی دہلی : مرکزی حکومت نے ڈی ڈی سی اے مقدمات کی تحقیقات کے لئے دہلی حکومت کی طرف سے قائم کردہ انکوائری کمیشن کو غیر آئینی اور غیر قانونی قرار دے دیا ہے۔ مرکز کے اس فیصلے سے دونوں حکومتوں کے درمیان جاری تنازع کے مزید گهرانے کا خدشہ بڑھ گیا ہے۔

نئی دہلی : مرکزی حکومت نے ڈی ڈی سی اے مقدمات کی تحقیقات کے لئے دہلی حکومت کی طرف سے قائم کردہ انکوائری کمیشن کو غیر آئینی اور غیر قانونی قرار دے دیا ہے۔ مرکز کے اس فیصلے سے دونوں حکومتوں کے درمیان جاری تنازع کے مزید گهرانے کا خدشہ بڑھ گیا ہے۔


دہلی کے لیفٹیننٹ گورنر کے دفتر کی جانب سے جاری کئے گئے ایک خط میں کہا گیا ہے کہ حکومت ہند کے وزارت داخلہ نے کہا ہے کہ دہلی حکومت کے ویجلینس ڈائریکٹوریٹ کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن غیر آئینی اور غیر قانونی ہے ۔ لہذا قانونی طور پر اس کا کوئی اثر نہیں ہوگا۔


خیال رہے کہ دہلی سکریٹریٹ پر ایک ماہ قبل چھاپہ ماری کے بعد اروند کیجریوال کی قیادت والی عام آدمی پارٹی کی حکومت اور مرکزی حکومت کے درمیان محاذ آرائی عروج پر پہنچ گئی تھی اور اسی دوران دہلی اور ضلع کرکٹ ایسوسی ایشن (ڈی ڈی سی اے ) مقدمات کی تحقیقات کے دہلی حکومت کے فیصلے کو نامنظور کیا گیا ہے۔


کیجریوال نے الزام لگایا تھا کہ چھاپہ ماری کا مقصد ایسے دستاویزات پر قبضہ کرنا تھا ، جس میں ڈی ڈی سی اے میں مبینہ بدعنوانی کی تفصیلات درج تھیں۔ انہوں نے کہا کہ یہ دستاویزات مبینہ طور پر اس دوران کے تھے جب وزیر خزانہ ارون جیٹلی ڈی ڈی سی اے کے سربراہ تھے۔


کیجریوال نے اس کے بعد سابق سالیسٹر جنرل گوپال سبرامنیم کی صدارت میں ایک انکوائری کمیشن قائم کرنے کا فیصلہ کیاتھا ، جس پرسبرامنیم نے کہا تھا کہ دہلی حکومت کو اس طرح کی انکوائری کمیشن کی تشکیل کا حق ہے۔

First published: Jan 08, 2016 03:17 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading