உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    اکھلیش اور مختار میں 40 منٹ تک ہوئی بات چیت اور حل ہوگئے اختلافات : افضال انصاری

    سماج وادی پارٹی میں وزیر اعلی اکھلیش یادو اور پارٹی کے ریاستی صدر شیو پال یادو کے درمیان آج  جو رسہ کشی کی صورتحال ہے، اس کی وجوہات میں سے ایک وجہ قومی ایکتا دل کا ایس پی میں انضمام بھی تھا ۔

    سماج وادی پارٹی میں وزیر اعلی اکھلیش یادو اور پارٹی کے ریاستی صدر شیو پال یادو کے درمیان آج جو رسہ کشی کی صورتحال ہے، اس کی وجوہات میں سے ایک وجہ قومی ایکتا دل کا ایس پی میں انضمام بھی تھا ۔

    سماج وادی پارٹی میں وزیر اعلی اکھلیش یادو اور پارٹی کے ریاستی صدر شیو پال یادو کے درمیان آج جو رسہ کشی کی صورتحال ہے، اس کی وجوہات میں سے ایک وجہ قومی ایکتا دل کا ایس پی میں انضمام بھی تھا ۔

    • Pradesh18
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی : سماج وادی پارٹی میں وزیر اعلی اکھلیش یادو اور پارٹی کے ریاستی صدر شیو پال یادو کے درمیان آج  جو رسہ کشی کی صورتحال ہے، اس کی وجوہات میں سے ایک وجہ قومی ایکتا دل کا ایس پی میں انضمام بھی تھا ۔ مختار انصاری کی شبیہ کی وجہ سے اس سے انضمام پر اکھلیش یادو نے پہلے ناراضگی ظاہر کی ، لیکن اچانک کچھ ایسا ہوا کہ انضمام کو ان کی طرف سے بھی منظوری دے دی گئی ۔ آخر کیا تھی وہ وجہ جس کی وجہ سے اکھلیش یادو قومی ایکتا دل کے ایس پی میں انضمام پر راضی ہوئے ۔ ہمارے ساتھی آئی بی این خبر کو دیئے انٹرویو میں اس بات کا انکشاف خود قومی ایکتا دل کے جنرل سکریٹری اور مختار انصاری کے بھائی افضال انصاری نے کیا ۔

      سوال: آپ کے بھائی مختار انصاری کی دبنگ اور مافیا والی شبیہ کی وجہ سے ہی اکھلیش یادو قومی ایکتا دل کے ایس پی میں انضمام سے ناراض تھے تو پھر اچانک انضمام کیسے ہوگیا ؟

      جواب: 18 ستمبر سے لے کر آج تک کی تاریخ میں بتا دیجئے کہ اکھلیش یادو نے مختار انصاری یا پھر ہمارے خاندان کے بارے میں کچھ بھی کہا ہو ۔ اب ان کی غلط فہمی دور ہو چکی ہے ۔ اصل میں سارا معاملہ یہ تھا کہ کچھ لوگوں نے ان کے سامنے ہماری شیبہ دبنگ اور مافیا کے طور پر پیش کی تھی ، اسی لئے کچھ غلط فہمیاں تھیں ۔

      سوال: وہ کون لوگ ہیں ، جو آپ کی اس طرح کی شبیہ وزیر اعلی کے سامنے پیش کر رہے ہیں؟

      جواب : وہ سرمایہ دار ، جاگیردار، مافیا اور دبنگ ہیں جو غریبوں کے ساتھ جانوروں سے بھی زیادہ برا سلوک کرتے ہیں ۔ غریبوں کے حق میں ہماری لڑائی ایسے ہی لوگوں سے ہے ۔ جب ہم بڑے بڑے مافیا سے لڑیں گے ، تو آپ اندازہ لگا سکتے ہیں کہ ہمیں کیا کچھ سننے کو ملے گا ۔

      سوال : وزیر اعلی اکھلیش یادو سے تعلقات استوار کیسے ہوئے اور غلط فہمیاں کیسے دور ہوئیں؟

      جواب : یہ گزشتہ ماہ کی کوئی 17 یا 18 ستمبر کی بات ہے ۔ یوپی اسمبلی میں سابق وزرائے اعلی سے متعلق کوئی نمائش لگی ہوئی تھی ۔ اکھلیش یادو اس کا افتتاح کرنے آئے ہوئے تھے ۔ اسی دوران 10 بجے سے لے کر 10 بج کر 40 منٹ تک وزیر اعلی اکھلیش یادو اور ہمارے بھائی مختار انصاری کے درمیان بات چیت ہوئی ۔ بات چیت کے دوران انہوں نے پوری بات بتائی ۔ بات چیت کے بعد ان کی ساری غلط فہمیاں دور ہو گئیں ۔ آج آپ ان سے ہمارے بارے میں پوچھ سکتے ہیں ۔ ہم پہلے بھی انہیں اپنا لیڈر مانتے تھے اور آج بھی مانتے ہیں ۔

      سوال : کیا اسمبلی انتخابات میں ٹکٹ کو لے کر اکھلیش یادو سے کوئی معاہدہ ہوا ہے؟

      جواب : ایس پی میں قومی ایکتا دل کا انضمام ہوگیا ہے ، کوئی اتحاد نہیں ۔ اس لیے ٹکٹوں کا تو کوئی معاملہ ہی نہیں ہے ۔ وہ جب بھی ٹکٹ دیں گے اور جہاں سے بھی دیں گے ، ہم ایس پی کے بینر تلے ان کی قیادت میں الیکشن لڑیں گے ۔
      First published: