உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    جموں وکشمیر میں بلدیاتی اور پنچایتی انتخابات طے شدہ تاریخوں پر ہوں گے: چیف سکریٹری کا اعلان

    جموں وکشمیر کے چیف سکریٹری سبھرا منیم: فائل فوٹو

    جموں وکشمیر کے چیف سکریٹری سبھرا منیم: فائل فوٹو

    نیشنل کانفرنس اور پی ڈی پی کی دھمکی کے بعد بھی مرکزی حکومت، گورنراور چیف سکریٹری پر ابھی کوئی اثرنہیں ہوا ہے۔

    • News18 Urdu
    • Last Updated :
    • Share this:
      کولگام:  جموں وکشمیر کے چیف سکریٹری بی وی آرسبھرامنیم نے کہا کہ ریاست میں بلدیاتی اور پنچایتی انتخابات شیڈول کے مطابق منعقد کئے جائیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ریاست میں بلدیاتی اور پنچایتی انتخابات کرانے کا فیصلہ رواں برس جولائی میں لیا گیا۔

      چیف سکریٹری نے پیر کے روز یہاں منعقدہ عوامی دربار کے حاشئے پر نامہ نگاروں کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہا ’انتخابات کرانے کا فیصلہ جولائی میں لیا گیا۔ بلدیاتی انتخابات کے ووٹر لسٹ اور ڈرافٹ شائع کئے جا چکے ہیں۔ فائنل بھی ہوچکا ہے۔ حلقوں کی از سرنو حد بندی اور ریزر ویشن کا عمل بھی مکمل ہوچکا ہے۔ چیف الیکٹورل افسر (سی ای او) چند دنوں کے اندرنوٹیفکیشن جاری کرسکتے ہیں‘۔
      انہوں نے کہا ’انتخابات کی تاریخیں آپ کو پہلے ہی معلوم ہیں۔ 5 نومبر کے آس پاس پنچایتوں کے انتخابات ہونے والے ہیں۔ سی ای او باضابطہ تاریخوں کا اعلان کریں گے۔ پہلے بلدیاتی انتخابات کا نوٹیفکیشن جاری ہوگا‘۔  
      اس موقع پر ریاستی گورنر ستیہ پال ملک کے مشیر کے وجے کمار بھی موجود تھے۔ وجے کمار نے انتخابات کے لئے کئے جانے والے سیکورٹی انتظات پر کہا ’یہ مجموعی پلان کا حصہ ہے۔ ضرورت کے حساب سے اس کا جائزہ لیا جارہا ہے‘۔

      یہ بھی پڑھیں:    فاروق عبداللہ کی وارننگ "دفعہ 35 اے پرمرکزی حکومت واضح کرے موقف، ورنہ لوک سبھا الیکشن کا کریں گے بائیکاٹ"۔
      خیال رہے کہ ریاست کی دو مقامی اور اہم سیاسی جماعتوں نیشنل کانفرنس اور پی ڈی پی نے بلدیاتی اور پنچایتی انتخابات میں اپنی جماعتوں کی شرکت کو حکومت ہندوستان کے دفعہ 35 اے پر موقف اور اسے مکمل تحفظ دینے کی شرط سے مشروط کردیا ہے۔ کشمیری مزاحمتی قائدین سید علی گیلانی، میرواعظ مولوی عمر فاروق اور محمد یاسین ملک بلدیاتی اور پنچایتی انتخابات کے بائیکاٹ کی پہلے ہی کال دے چکے ہیں۔

      یہ بھی پڑھیں:    جموں و کشمیر : فاروق عبد اللہ کے بعد اب محبوبہ مفتی کا اعلان ، پنچایت انتخابات میں نہیں ہوں گے شریک
      واضح رہے کہ گورنر کی صدارت میں 31 اگست کو ہوئی ریاستی کونسل کی میٹنگ میں ریاست میں بلدیاتی اور پنچایتی انتخابات کےانعقاد کومنظوری دی گئی ۔ ریاستی کونسل نے فیصلہ لیا کہ میونسپل اداروں کے انتخابات چارمرحلوں میں کرائے جائیں گے اور پولنگ کی تاریخیں یکم اکتوبر 2018 سے 5اکتوبر 2018 تک ہوں گی۔ اسی طرح پنچایتوں کے انتخابات 8مرحلوں میں کرائے جائیں گے اور ان کی تاریخیں 8 نومبر 2018 سے لے کر 4دسمبر 2018 تک ہوں گی۔
      First published: