உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Farmers Protest : کسانوں کے چکہ جام کی وجہ سے دہلی کے کئی بارڈر بلاک ، ڈائیورٹ کئے گئے روٹ

    Farmers Protest : کسانوں کے چکہ جام کی وجہ سے دہلی کے کئی بارڈر بلاک ، ڈائیورٹ کئے گئے روٹ

    Farmers Protest : کسانوں کے چکہ جام کی وجہ سے دہلی کے کئی بارڈر بلاک ، ڈائیورٹ کئے گئے روٹ

    کسانوں کے آندولن کو دیکھتے ہوئے دہلی ٹریفک پولیس نے کئی روٹ بند کردئے ہیں ۔

    • Share this:
      مرکزی حکومت کے نئے زرعی قوانین کے خلاف کسانوں کا آندولن مسلسل گیارہویں دن جاری ہے ۔ اس درمیان دہلی پولیس نے کسانوں کے چکہ جام کی وجہ سے کئی روٹ ڈائیورٹ کردئے ہیں ۔ دہلی ٹریفک پولیس کے مطابق کسانوں کے احتجاج کی وجہ سے چلہ بارڈر آمدورفت کیلئے بند ہے ۔ اس علاوہ غازی آباد سے دہلی کی طرف آنے والے این ایچ 24 کو غازی پور بارڈر پر بند کردیا گیا ہے ۔ یہی نہیں دہلی ٹریفک پولیس نے مکربہ اور جی ٹی کے روڈ سے بھی ٹریفک ڈائیورٹ کردیا ہے ۔ وہیں باہری رنگ روڈ ، جی ٹی کے روڈ ، این ایچ 44 سے بچنے کا مشورہ دیا ہے ۔

      اس کے علاوہ دہلی ٹریفک پولیس نے سندھو ، اوچندی ، پیاو منیاری ، منگیش بارڈر بند اور این ایچ 44 کے بھی دونوں طرف بند سے ہونے کی جانکاری دی ہے ۔ اس کے ساتھ دہلی ٹریفک پولیس نے لوگوں کو مشورہ دیا ہے کہ لامپور ، صفیہ آباد ، سبولی ، این ایچ آٹھ ، بھوپڑا ، اپسرہ سیما ، پیریفیرل ایکسپریس وے کے متبادل راستے منتخب کریں ۔



      علاوہ ازیں دہلی اور نوئیڈا بارڈر ( کالندی کنج) پر کسانوں کو روکنے کیلئے کثیر تعداد میں پولیس اہلکار تعینات کرکے بیریکیڈنگ لگادی گئی ہے ۔ جب پولیس نے کسانوں کو بیریکیڈنگ سے آگے نہیں بڑھنے دیا تو وہ سڑک پر بیٹھ کر احتجاج کررہے ہیں ۔ اس دوران وہ مودی اور یوگی حکومت کے خلاف نعرے بازی کررہے ہیں ۔

      جانکاری کے مطابق یہاں بھی ٹریفک سست رفتار سے چل رہی ہے ۔ جبکہ دہلی کو دیگر ریاستوں سے جوڑنے والے بارڈر بند ہونے کی وجہ سے مسافروں کو کافی پریشانیوں کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: