ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

لکھنؤ میں ایوانِ سر سید کی تعمیر کا عزم، سر سید احمد خاں کو بھارت رتن دینے کا مطالبہ

لکھنؤ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی اولڈ بوائز ایسو سی ایشن ( امیوبا ) کی جانب سے لکھنئو میں ایوانِ سر سید کی تعمیر کے اعلان کے ساتھ ساتھ ان تعلیمی اور سماجی تحریکات کو مکمل کرنے کا عہد بھی کیا گیا ہے جو مختلف اسباب کی بناء پر تعطل کا شکار رہی ہیں۔

  • Share this:
لکھنؤ میں ایوانِ سر سید کی تعمیر کا عزم، سر سید احمد خاں کو بھارت رتن دینے کا مطالبہ
لکھنؤ

لکھنؤ علی گڑھ مسلم یونیورسٹی اولڈ بوائز ایسو سی ایشن ( امیوبا ) کی جانب سے لکھنئو میں ایوانِ سر سید کی تعمیر کے اعلان کے ساتھ ساتھ ان تعلیمی اور سماجی تحریکات کو مکمل کرنے کا عہد بھی کیا گیا ہے جو مختلف اسباب کی بناء پر تعطل کا شکار رہی ہیں۔ امیوبا کے نو منتخب صدر معروف معالج و سماجی کارکن پروفیسر شکیل قدوائی نے کہا ہے کہ منصبِ صدارت ایک ایسی ذمہ داری ہے جسے پورا کرکے نہ صرف ملک ملت اور معاشرے کی خدمات انجام دی جاسکتی ہیں بلکہ سر سید احمد خان کے تشنہ خوابوں کو تعبیر بھی عطا کی جاسکتی ہے۔ ڈاکٹر شکیل یہ بھی کہتے ہیں کہ کہ صرف رسمی پروگراموں کے انعقاد اور ضیافتیوں کے اہتمام سے مطلوبہ مقاصد پورے نہیں ہوسکیں گے اور عملی اقدامات کے لئے محض حکومتوں کی طرف حسرت و اشتیاق سے دیکھتے رہنا اور کاسہ گدائی لے کے وزیروں کے دفاتر میں چکر لگاتے رہنا کافی نہیں بلکہ اسی مشن اور تحریک کو اپنانے کی ضرورت ہے جو سر سید نے اختیار کی تھی ہم لکھنئو میں ایوانِ سر سید کی تعمیر کے لئے ذاتی پیسہ بھی خرچ کریں گے۔


عوام سے چندا بھی کریں گے اور ساتھ ہی سرکاری سطح پر مراعات حاصل کرنے کی کوششیں بھی کی جائیں گی لیکن کسی بھی طرح اس مشن کو پورا کیا جائے گا۔اس باب میں امیوبا لکھنئو کی سکرٹری شہلا بھی یہی کہتی ہیں کہ تین سال کے اس عرصے میں ایوان سر سید کی تعمیر کو یقینی بنانے کے ساتھ ساتھ کچھ ایسے اقدامات کئے جائیں گے جو وقت کے تقاضوں کو بھی پورا کرسکیں اور ایسوسی ایشن کی جانب سے یہ تاثر بھی دیا جاسکے کہ اس اہم تنظیم کے لوگ ایک مقصد و مشن کے ساتھ سر سید کے راستوں پر سفر کر رہے ہیں۔


معروف سماجی کارکن حنا جعفری کہتی ہیں کہ اراکینِ ایسو سی ایشن کے جذبے سرد نہیں پڑے ہیں اور محدود وسائل میں بھی ایسے بہت سے کام کئے جاتے رہے ہیں جن سے سماج کے پسماندہ دبے کچلے اور غریب لوگوں کو سہولیات فراہم کی جاسکیں اور اب ڈاکٹر شکیل قدوائی کی صدارت و قیادت میں یہ کام زیادہ بہتر طریقے سے کیا جاسکے گا۔ کووڈ کے دوران ہم لوگوں نے مشترکہ طور پر جو کام کیا ہے وہ کسی سے پوشیدہ نہیں۔


مختلف تحریکوں سے وابستہ اور مختلف محاذوں پر کام کرنے والے ڈاکٹر وجاہت فاروقی نے واضح کیا کہ پروفیسر شکیل قدوائی کے پاس ایک نظریہ ہے ایک جذبہ اور مشن ہے لہٰذا ہمیں یقین ہے کہ تحریکات سر سید اپنے مقاصد کے حصول کے لئے خوش اسلوبی کے ساتھ نہ صرف آگے بڑھیں گی بلکہ نتیجہ خیز بھی ثابت ہوں گی اہم بات یہ بھی ہے کہ ایسو سی ایش کے تمام اراکین ان کے شانہ بشانہ قدم بہ قدم سفر کرنے کے لئے پرعزم نظر آتے ہیں نو منتخب صدر کے مطابق سر سید احمد خاں کو بھارت رتن دلوانے کی تحریکات کو بھی زندہ کرنے کے لئے اقدامات کئے جائیں گے اس باب میں قلم بھی اٹھائے جائیں گے۔

آوازیں بھی بلند کی جائیں گی اور قدم بھی آگے بڑھائے جائیں گے تاکہ سر سید کی غیر معمولی اور ہمیشہ رہنے والی خدمات کا اعتراف کیا جاسکے ۔۔۔امیوبہ کی ابتدائیہ نشست میں مذکورہ لوگوں کے ساتھ شاذیہ قدوائی شیخ محمد طارق سمیت کئی اور اہم لوگ بھی شریک ہوئے ۔
Published by: Sana Naeem
First published: Jan 19, 2021 12:30 PM IST