உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Railway Land Policy: آج کابینہ میں ریلوے اراضی اصلاحات پر بحث کا امکان، ریلوے کی نجکاری پر بھی ہوگی بات

    انڈین ریلوے (علامتی تصویر)

    انڈین ریلوے (علامتی تصویر)

    مرکزی کابینہ نے نومبر 2019 میں انتظامیہ کے کنٹرول کی منتقلی کے ساتھ ساتھ کمپنی میں حکومت کے 30.8 فیصد شیئر ہولڈنگ کی ڈس انویسٹمنٹ کو منظوری دی۔

    • Share this:
      ذرائع کا کہنا ہے کہ مرکزی کابینہ لینڈ لائسنسنگ فیس (ایل ایل ایف) میں کمی اور ریلوے اراضی کے لیز کی مدت میں 6 جولائی کو اضافہ کرنے کی تجویز پر غور کر سکتی ہے۔ ریلوے اراضی پالیسی (Railway Land Policy) میں ترمیم کے لیے کابینہ کی منظوری کنٹینر کارپوریشن آف انڈیا (Concor کونکور) کی اسٹریٹجک تقسیم کے عمل کو آسان بنائے گی۔ پالیسی میں تبدیلیاں کونکور کو نجی سرمایہ کاروں کے لیے مزید پرکشش بنائیں گی۔

      ذرائع کے مطابق یہ تجویز تین ہفتے قبل منظوری کے لیے کابینہ کو بھیجی گئی تھی اور آئندہ اجلاس میں اس پر غور کیا جائے گا۔ ایک اور ذریعے نے تصدیق کی ہے کہ کابینہ کا اجلاس 6 جولائی کو ویڈیو کانفرنسنگ کے ذریعے ہونے والا ہے، حالانکہ انہوں نے ایجنڈے کا انکشاف نہیں کیا۔

      حکومت ریلوے کی زمین کے صنعتی صارفین کے لیے ایل ایل ایف کو زمین کی قیمت کے تقریباً دو سے تین فیصد تک کم کرنے کا منصوبہ بنا رہی ہے جو کہ اب چھ فیصد ہے۔ ریلوے اراضی لیز کی مدت میں توسیع بھی تجویز کا ایک حصہ ہے۔ ذرائع نے مزید کہا کہ اختیارات میں سے ایک زمین کی لیز کی مدت کو پانچ سال سے بڑھا کر 35 سال یا اس سے زیادہ کرنا ہے۔

      یہ بھی پڑھئے: سفر حج پر 300 عازمین نے کیا ایسا کام، ہوگئے گرفتار، دو لاکھ کا لگا جرمانہ

      مجوزہ تبدیلیاں کونکورکی نجکاری کے لیے راہ ہموار کریں گی، کیونکہ اس سے اسٹریٹجک خریداروں کو طویل مدت کے لیے ہندوستانی ریلوے کو زمین کے کرائے کے طور پر بہت کم رقم ادا کرنے میں مدد ملے گی۔ یہ کونکورکے سرمایہ کاری کے مشیروں کی طرف سے پیش کردہ کلیدی تجاویز میں سے ایک تھی۔

      مزید پڑھیں: Pakistan News: پاکستان کے وزیردفاع کا بڑا بیان، عمران خان نے امریکہ سے مانگی معافی، ہمارے پاس اس کے پختہ ثبوت

      مرکزی کابینہ نے نومبر 2019 میں انتظامیہ کے کنٹرول کی منتقلی کے ساتھ ساتھ کمپنی میں حکومت کے 30.8 فیصد شیئر ہولڈنگ کی ڈس انویسٹمنٹ کو منظوری دی۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: