ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

کانگریس کے 7 اراکین لوک سبھا سے معطل، بجٹ اجلاس میں نہیں لے سکیں گے حصہ

معطل کئے گئے اراکین میں گوروگوگوئی، ٹی این پرتاپن، ڈین کوریاکوس، بینی بہنان، منیکم ٹیگور، گرجیت سنگھ اوجلا اور راج موہن انیتھن شامل ہیں۔

  • UNI
  • Last Updated: Mar 05, 2020 04:33 PM IST
  • Share this:
کانگریس کے 7 اراکین لوک سبھا سے معطل، بجٹ اجلاس میں نہیں لے سکیں گے حصہ
کانگریس کے 7 اراکین لوک سبھا سے معطل

نئی دہلی۔ لوک سبھا میں معدنیات ریگولیشن (ترمیمی) بل، 2020 منظور کرانے کے دوران اسپیکر کی میز سے ایوان میں کام کاج سے متعلق کاغذات اٹھا کر پھاڑ دینے کے الزام میں کانگریس کے سات اراکین کو جمعرات کو پورے بجٹ اجلاس کے لئے معطل کردیا گیا۔ تین بار کارروائی ملتوی کئے جانے کے بعد تین بجے ایوان کی کارروائی شروع ہوئی تو صدر نشیں ڈپٹی اسپیکر میناکشی لیکھی نے کانگریس کے گورو گوگوئی، ٹی این پرتاپن، ڈین کوریاکوس، بینی بہنان، منیکم ٹیگور، گرجیت سنگھ اوجلا اور راج موہن انیتھن کو نامزد کیا۔ پارلیمانی امور کے وزیر پرہلاد جوشی نے ان اراکین کو بجٹ اجلاس کے بقیہ اجلاس کی مدت کے لئے معطل کرنے کی تجویز پیش کی جسے ایوان نے صوتی ووٹ سے منظور کردیا۔ اس کے بعد صدر نشیں نے ان تمام اراکین کو معطل کرنے کی ہدایت دی اور انہیں فوری طورپر ایوان سے باہر جانے کے لئے کہا۔ ساتھ ہی انہوں نے ایوان کی کارروائی آج پورے دن کے لئے ملتوی کر دی۔


صدر نشیں ڈپٹی اسپیکر میناکشی لیکھی


اس سے پہلے اپوزیشن کے ہنگامہ کی وجہ سے دو بار کارروائی ملتوی کئے جانے کے بعد دوپہر دو بجے جب کارروائی شروع ہوئی تو حکومت نے شور و غل کے درمیان بغیر بحث کے اس بل کو منظور کرانے کی کوشش کی۔ اس دوران کانگریس کے کچھ اراکین نے صدر نشیں رما دیوی سے ایوان میں کام کاج سے متعلق کاغذات چھین کر پھاڑ دیئے اور کارروائی دوپہر تین بجے تک کے لئے ملتوی کرنی پڑی۔




دوپہر بعد تین بجے کارروائی پھر سے شروع ہوئی تو صدر نشیں میناکشی لیکھی نے کہاکہ ملک کی پارلیمانی تاریخ میں ایسا پہلے کبھی نہیں ہوا ہے کہ اسپیکر کی میز سے ایوان میں کام کاج سے متعلق کاغذات پھاڑ دیئے جائیں۔ انہوں نے اس واقعہ کو افسوسناک قرار دیتے ہوئے کانگریس کے سات اراکین کو نامزد کیا اور ایوان نے انہیں معطل کرنے کی تجویز صوتی ووٹ سے منظور کردی۔
First published: Mar 05, 2020 04:16 PM IST