ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

راہل انتہاپسندوں سے سانٹھ گانٹھ کرکے پنجاب کو غیر مستحکم کررہے ہیں: بادل

نئی دہلی۔ پنجاب کے نائب وزیراعلی پرکاش سنگھ بادل نے کانگریس کے نائب صدر راہل گانادھی پر سیاسی فائدے کے لئے انتہاپسندوں کے ساتھ سانٹھ گانٹھ کرکے ریاست میں عدم استحکام پیدا کرنے کا الزام لگایا ہے۔

  • UNI
  • Last Updated: Nov 21, 2015 04:42 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
راہل انتہاپسندوں سے سانٹھ گانٹھ کرکے پنجاب کو غیر مستحکم کررہے ہیں: بادل
نئی دہلی۔ پنجاب کے نائب وزیراعلی پرکاش سنگھ بادل نے کانگریس کے نائب صدر راہل گانادھی پر سیاسی فائدے کے لئے انتہاپسندوں کے ساتھ سانٹھ گانٹھ کرکے ریاست میں عدم استحکام پیدا کرنے کا الزام لگایا ہے۔

نئی دہلی۔  پنجاب کے نائب وزیراعلی سکھبیر سنگھ  بادل نے کانگریس کے نائب صدر راہل گانادھی پر سیاسی فائدے کے لئے انتہاپسندوں کے ساتھ سانٹھ گانٹھ کرکے ریاست میں عدم استحکام پیدا کرنے کا الزام لگایا ہے۔


مسٹر بادل نے آج یہاں ایک پریس کانفرنس میں کہا کہ کانگریس کے لیڈروں نے گزشتہ 10 نومبر کو امرتسر سے ایک ریلی میں علیحدگی پسند اور انتہاپسند عناصر کے ساتھ اسٹیج کا اشتراک کیا۔ اس ریلی میں خالصتان بنانے کے سلسلے میں قرارداد بھی پاس کی گئی۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب کے کانگریس لیڈروں نے اس ریلی کے انعقاد میں ایسے عناصر کی بھرپور مدد کی اور اس کے لئے انہیں مسٹر گاندھی کی پوری حمایت حاصل تھی۔ انہوں نے کہا کہ کانگریس کے لیڈروں نے جن لوگوں کے ساتھ ریلی میں شرکت کی، ان کے پاکستان اور اس کی خفیہ ایجنسی آئی ایس آئی کے ساتھ تعلقات ہیں۔


کانگریس کو ملک مخالف پارٹی قرار دیتے ہوئے انہوں نے مطالبہ کیا کہ الیکشن کمیشن کی منظوری منسوخ کردینی چاہئے اور وزارت داخلہ کو اس پارٹی کی سرگرمیوں پر نظر رکھنی چاہئے۔ انہوں نے کہا کہ اپنے ان مطالبات پر زور دینے کے لئے وہ ابھی صدر جمہوریہ سے ملنے جارہے ہیں اور اس کے بعد وزیرداخلہ سے بھی ملاقات کریں گے۔ مسٹر بادل نے الزام لگایا کہ مسٹر گاندھی اور کانگریس ان انتہا پسند عناصر کے ساتھ  مل کر ریاست میں ایک بار پھر دہشت کا ماحول پیدا کرنا چاہتی ہے۔


مسٹر بادل نے الزام لگایا کہ کانگریس اور اس کے رہنماؤں کی تاریخ 'تقسیم کرو اور راج کرو' کا رہا ہے، سابق وزیر اعظم اندرا گاندھی نے مقدس گولڈن ٹیمپل میں ٹینکوں سے حملہ کیا تو ان کے بیٹے اور سابق وزیر اعظم راجیو گاندھی نے 1984 میں معصوم سکھوں کا قتل عام کرایا۔ا ب مسٹر راہل گاندھی علیحدگی پسند اور دہشت گرد عناصر کے ساتھ مل کر ریاست میں عدم استحکام پیدا کرنا چاہتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ شرومنی اکالی دل (امرتسر) کے رہنما سمرن جيت سنگھ مان نے بھی اس ریلی کے بعد کہا تھا کہ کانگریس کو پہلے سے پتہ تھا کہ اس ریلی کا ایجنڈا الگ خالصتان بنانے کا مطالبہ کرنا ہے۔ اس کے باوجود کانگریس نے اس کی مکمل حمایت کی۔


مسٹر بادل نے کہا کہ اس ریلی میں کانگریس کے ممبران اسمبلی اور ریاستی یونٹ کے رہنماؤں نے کھل کر اپنی بات رکھی۔اسٹیج پر خالصتان کے پرچم لگے تھے اور اے کے - 47 رائفلوں کے فوٹو بھی لگے تھے۔ کانگریس کے لیڈروں نے ہی اسٹیج پر بولنے والے علیحدگی پسند لیڈروں کو بتایا کہ انہیں تقریر میں کیا کہنا ہے۔ انہوں نے الزام لگایا کہ کانگریس ملک مخالف پارٹی بن گئی ہے۔ اس کی سرگرمیوں سے صرف پنجاب میں ہی عدم استحکام پیدا نہیں ہو گا بلکہ پورے ملک میں وحدت و سالمیت کو خطرہ پیدا ہوجائے گا۔ کانگریس ایک بار پھر پنجاب کو دہشت گردی کے اندھیرے میں دھکیلنا چاہتی ہے۔


مسٹر بادل نے کہا کہ چاروں طرف سے تنقید ہونے کے بعد کانگریس اپنے آپ کو اس ریلی سے الگ کرنے کی کوشش کر رہی ہے۔ اگر کانگریس کا حقیقت میں اس ریلی سےکوئی تعلق نہیں تھا تو اسے اس میں حصہ لینے والے اپنے رہنماؤں کو پارٹی سے نکال دینا چاہئے۔ سوالات کے جواب میں انہوں نے کہا کہ پنجاب حکومت نے اس سارےواقعات کو کافی سنجیدگی سے لیا ہے اور اس کی تحقیقات کے بعد قصورواروں کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی۔ ایک دیگر سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ شرومنی اکالی دل نے کبھی کسی دہشت گرد کی رہائی کا مطالبہ نہیں کیا۔

First published: Nov 21, 2015 04:38 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading