ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

کانگریس کا الزام، اروناچل حکومت گرانے کے لئے ایک بزنس مین سے بی جے پی نے کرائی ڈیل

نئی دہلی۔ اروناچل پردیش میں پھر سے کانگریس حکومت کو بحال کرنے کے سپریم کورٹ کے فیصلے پر کانگریس نے پریس کانفرنس کر حکومت سے جوابدہی طے کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

  • IBN Khabar
  • Last Updated: Jul 13, 2016 03:34 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
کانگریس کا الزام، اروناچل حکومت گرانے کے لئے ایک بزنس مین سے بی جے پی نے کرائی ڈیل
نئی دہلی۔ اروناچل پردیش میں پھر سے کانگریس حکومت کو بحال کرنے کے سپریم کورٹ کے فیصلے پر کانگریس نے پریس کانفرنس کر حکومت سے جوابدہی طے کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

نئی دہلی۔ اروناچل پردیش میں پھر سے کانگریس حکومت کو بحال کرنے کے سپریم کورٹ کے فیصلے پر کانگریس نے پریس کانفرنس کر حکومت سے جوابدہی طے کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔ کانگریس راجیہ سبھا ممبر پارلیمنٹ اور سابق مرکزی وزیر کپل سبل نے کہا کہ سپریم کورٹ کا فیصلہ تاریخی ہے۔ سبل نے اروناچل پردیش کے گورنر کو برطرف کرنے کا مطالبہ بھی کیا۔ سبل نے کہا کہ ہمارا دوسرا مطالبہ ہے کہ جو بھی مرکزی وزیر اس فیصلے میں شامل تھے وہ معافی مانگیں اور صفائی دیں۔


سبل نے اس پورے معاملے میں کسی بزنس مین کا ذکر کرتے ہوئے معاملے کی غیر جانبدارانہ تحقیقات کی بھی مانگ کی۔ انہوں نے کہا، ہمارا تیسرا مطالبہ ہے کہ جس بزنس مین کا ٹیپ ریکارڈ ہوا ہے اس میں لین دین کی تحقیقات ہو۔ کیونکہ ٹیپ میں دعوی کیا جا رہا ہے کہ وزیر اعظم اور وزیر داخلہ کی منظوری ملی ہے۔ سبل نے کہا کہ ہم یہ مسئلہ ایوان میں اٹھائیں گے اور وزیر اعظم اور وزیر داخلہ کو جواب دینا ہوگا۔


کپل سبل نے بی جے پی کے کانگریس مکت نعرے پر بھی طنز کسا۔ انہوں نے کہا، 'ایک اور بات آپ کے سامنے رکھنا چاہتا ہوں کہ ان کا مقصد ہے کانگریس مكت بھارت۔ جن ریاستوں میں ہماری گنی چنی حکومتیں ہیں ان کو گرانے میں لگے ہیں۔ کچھ لوگوں کو اپنے حق میں کر لیتے ہیں اور گورنر کو جاکر کہتے ہیں حکومت اقلیت میں ہے۔ انہیں معلوم ہے کہ صدر راج نافذ نہیں ہو سکتا کیونکہ راجیہ سبھا میں اکثریت نہیں ہے اور اس درمیان حکومت میں تبدیلی کرتے ہیں۔


 

 
First published: Jul 13, 2016 03:34 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading