اپنا ضلع منتخب کریں۔

    کانگریس اعلی کمان کے رڈار پر ہیں دھوکے باز اراکین اسمبلی

    کانگریس لیڈر غلام نبی آزاد ۔ فائل فوٹو

    کانگریس لیڈر غلام نبی آزاد ۔ فائل فوٹو

    لکھنؤ : اتر پردیش میں حال ہی میں ہوئے راجیہ سبھا اور قانون ساز کونسل انتخابات میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ کانگریس کے تقریبا نصف درجن ممبران اسمبلی نے کراس ووٹنگ کی ہے ۔

    • IANS
    • Last Updated :
    • Share this:
      لکھنؤ : اتر پردیش میں حال ہی میں ہوئے راجیہ سبھا اور قانون ساز کونسل انتخابات میں یہ بات سامنے آئی تھی کہ کانگریس کے تقریبا نصف درجن ممبران اسمبلی نے کراس ووٹنگ کی ہے ۔ پارٹی ذرائع کے مطابق  یہ معاملہ سامنے آنے کے بعد پارٹی کے اندر ہی خفیہ طریقے سے جانچ کرائی گئی ، جس میں یہ بات سامنے آئی ہے کہ تقریبا ایک درجن ممبران اسمبلی نے الیکشن میں کراس ووٹنگ کی تھی ۔ اس رپورٹ کے بعد اب اعلی کمان نے دھوکے باز ممبران اسمبلی کو رڈار پر لے لیا ہے ۔

      پارٹی کے ذرائع نے بتایا کہ پارٹی کے اندر اس اتفاق ہے کہ ان ممبران اسمبلی کو الیکشن میں سبق سکھایا جائے ۔ اتر پردیش میں مئی میں ہوئے راجیہ سبھا اور ایم ایل سی انتخابات میں کانگریس کے چھ اراکین اسمبلی کے کراس ووٹنگ کا معاملہ سامنے آیا تھا ۔

      کانگریس کے ایک سینئر لیڈر نے بتایا کہ راجیہ سبھا اور قانون ساز کونسل انتخابات کے بعد یہ باتیں سامنے آئیں تھیں کہ تین مسلم ممبران اسمبلی بلند شہر ضلع کے سيانا سے دلنواز خاں، امیٹھی کی تتوهی سے محمد مسلم اور رام پور کے سوار سے نواب کاظم علی نے بی ایس پی جبکہ تین غیر مسلم ممبران اسمبلی کشی نگر کے كھڈا سے وجے دوبے ، بستی کے ردھولی سے سنجے جیسوال ، بہادر گڑھ کے نان پارا سے مادھوری ورما نے بی جے پی کے حق میں ووٹ دیا تھا ۔

      سینئر لیڈر نے بتایا کہ کانگریس کی خفیہ جانچ میں پارٹی کے خلاف ووٹ ڈالنے والے ممبران اسمبلی کی تعداد 11 سامنے آ رہی ہے ۔  پارٹی ذرائع نے بتایا کہ باقی پانچ اراکین اسمبلی کے خلاف بھی ہائی کمان جلد کارروائی کرے گا ۔ پارٹی ذرائع کے مطابق جن چھ ممبران اسمبلی کو کراس ووٹنگ کے الزام میں پارٹی سے نکالا گیا ہے ان کے بارے میں یہ واضح ہو گیا کہ تھا انہوں نے قانون ساز کونسل اور راجیہ سبھا دونوں کے لئے پارٹی کے خلاف ووٹ دیا تھا ۔

      یوپی انچارج غلام نبی آزاد ان ممبران اسمبلی کی گھیرا بندی میں مصروف ہیں ۔ پارٹی کے ریاستی ترجمان سریندر راجپوت نے بتایا کہ انتخابات کے بعد یہ بات سامنے آئی تھی کہ کچھ ممبران اسمبلی نے راجیہ سبھا میں کراس ووٹنگ کی ہے ۔ اس کے بعد پارٹی نے ان کے خلاف کارروائی بھی کی ۔ لیکن جہاں تک بات قانون ساز کونسل میں کچھ ممبران اسمبلی کے کراس ووٹنگ کی ہے ، تو پارٹی کے اندر اس کی جانچ چل رہی ہے ، جو بھی اس میں قصور وار پایا جائے گا ، اس کے خلاف سخت کارروائی کی جائے گی ۔
      First published: