ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

سکھ مخالف فسادات میں مجرم قرار دئیے گئے سجن کمار نے کانگریس سے دیا استعفیٰ

پیر کو دہلی ہائی کورٹ نے 1984 سکھ مخالف فسادات سے جڑے معاملے میں کمار کو مجرم ٹھہراتے ہوئے انہیں تاعمر قید کی سزا سنائی تھی

  • Share this:
سکھ مخالف فسادات میں مجرم قرار دئیے گئے سجن کمار نے کانگریس سے دیا استعفیٰ
کانگریس لیڈر سجن کمار کی فائل فوٹو: گیٹی امیجیز۔

کانگریس لیڈر سجن کمار نے منگل کو پارٹی صدر راہل گاندھی کو خط لکھ کر پارٹی کی ابتدائی رکنیت سے استعفی دے دیا ہے۔ پیر کو دہلی ہائی کورٹ نے 1984 سکھ مخالف فسادات سے جڑے معاملے میں کمار کو مجرم ٹھہراتے ہوئے انہیں تاعمر قید کی سزا سنائی تھی۔


انہوں نے خط میں راہل گاندھی کو لکھا، ' ہائی کورٹ کی طرف سے میرے خلاف دئے گئے حکم کے پیش نظر میں انڈین نیشنل کانگریس کی ابتدائی رکنیت سے فوری طور پراستعفی دیتا ہوں‘۔


پیر کو ہی کورٹ نے سکھ مخالف فساد میں کمار کو مجرم قرار دیا تھا اور عمر قید کی سزا سنائی تھی۔ 34 سال بعد آئے فیصلہ میں سجن کمار کو سازش رچنے، تشدد کرنے اور فساد بھڑکانے کا کورٹ نے مجرم پایا تھا۔ عدالت کے فیصلے کے مطابق، سجن کمار کو 31 دسمبر تک خودسپردگی کرنی ہے۔


ہائی کورٹ کا یہ فیصلہ نچلی عدالت کے فیصلے کو چیلنج دینے والی درخواستوں پر آیا ہے۔ دراصل اس معاملے میں نچلی عدالت نے فیصلہ سناتے ہوئے کانگریس لیڈر سجن کمار کو بری کر دیا تھا۔ اس کے بعد نچلی عدالت کے فیصلہ کو چیلنج دینے کے لئے ہائی کورٹ میں کئی عرضیاں داخل کی گئی تھیں۔
First published: Dec 18, 2018 01:28 PM IST