உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    نوٹ بندی کے خلاف اپوزیشن جماعتوں میں اختلافات کے درمیان کانگریس کا 'جن آکروش دیوس' آج

    نریندر مودی حکومت کی جانب سے 500 اور 1000 روپے کے پرانے نوٹوں کو بند کرنے کے فیصلے کے بعد کانگریس نے پیر کو 'جن آکروش دیوس منانے کا اعلان کیا ہے۔

    نریندر مودی حکومت کی جانب سے 500 اور 1000 روپے کے پرانے نوٹوں کو بند کرنے کے فیصلے کے بعد کانگریس نے پیر کو 'جن آکروش دیوس منانے کا اعلان کیا ہے۔

    نریندر مودی حکومت کی جانب سے 500 اور 1000 روپے کے پرانے نوٹوں کو بند کرنے کے فیصلے کے بعد کانگریس نے پیر کو 'جن آکروش دیوس منانے کا اعلان کیا ہے۔

    • Pradesh18
    • Last Updated :
    • Share this:
      نئی دہلی۔ نریندر مودی حکومت کی جانب سے 500 اور 1000 روپے کے پرانے نوٹوں کو بند کرنے کے فیصلے کے بعد کانگریس نے پیر کو 'جن آکروش دیوس منانے کا اعلان کیا ہے۔ اس دوران ملک بھر میں کانگریس کی جانب سے احتجاجی ریلیاں منعقد کی جائیں گی۔ نوٹ بندی کے فیصلے کے بعد اگرچہ اپوزیشن پارٹیوں کے درمیان منفرد اتحاد دیکھنے کو ملا ہے، لیکن مخالفت جتانے کے طور طریقوں کو لے کر ان میں اختلافات بھی ابھر آئے ہیں۔

      کانگریس نے نوٹ بندی کے فیصلے کو 'سیاسی قدم' قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس کے لئے تیاری نہیں کی گئی۔ کانگریس نے غلط معلومات پھیلانے کے لئے بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کی مذمت کرتے ہوئے اتوار کو یہ صاف کر دیا کہ اس نے پیر کو بھارت بند یا ملک گیر بند کا اعلان نہیں کیا ہے، بلکہ نوٹ بندی کو لے کر احتجاج کرنے کے لئے 'جن آکروش دیوس 'منایا جائے گا۔

      کانگریس کے سینئر لیڈر جے رام رمیش نے کہا کہ ہم نے بھارت بند کا اعلان نہیں کیا۔ بی جے پی نے غلط معلومات پھیلائی ہے جسے معلومات نہیں ہے۔

      سی پی ایم اور سی پی آئی سمیت بائیں بازو کی جماعتوں نے پیر کو نوٹ بندی کے خلاف اپنا احتجاج درج کرانے کے لئے مغربی بنگال میں 12 گھنٹے کے بند کا اعلان کیا ہے جبکہ ممتا بنرجی کی قیادت والی ترنمول کانگریس اس بند میں شامل نہیں ہو گی اور صرف احتجاج کرے گی۔
      First published: