ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

بی جے پی لیڈران کو بچانے کیلئے راتوں رات کیا گیا جسٹس ایس مرلی دھر کا تبادلہ: کانگریس

دہلی ہائی کورٹ کے جج مرلی دھر کے آدھی رات کو تبادلے پر کانگریس نے بی جے پی حکومت کو آڑے ہاتھوں لیا ہے۔ کانگریس لیڈر رندیپ سنگھ سرجے والا نے پریس کانفرنس میں کہا کہ اشتعا ل انگیز بیانات دینے والے بی جے پی لیڈروں کو بچانے کے لئے جج مرلی دھر کا تبادلہ کیا گیا۔

  • Share this:

جسٹس ایس مرلی دھر کے دہلی ہائی کورٹ سے تبادلے پر تنازعہ پیدا ہوگیا ہے۔ وہیں اسی درمیان کانگریس کے ترجمان رندیپ سنگھ سرجے والا نے ایک پریس کانفرنس میں جسٹس ایس مرلی دھر کے تبادلے کو لیکر بی جے پی حکومت پر نشانہ سادھا ہے۔کانگریس نے حکومت پر سنگین الزام عائد کیا ہے۔ دہلی ہائی کورٹ کے جج مرلی دھر کے آدھی رات کو تبادلے پر کانگریس نے بی جے پی حکومت کو آڑے ہاتھوں لیا ہے۔ کانگریس لیڈر رندیپ سنگھ سرجے والا نے پریس کانفرنس میں کہا کہ اشتعا ل انگیز بیانات دینے والے بی جے پی لیڈروں کو بچانے کے لئے جج مرلی دھر کا تبادلہ کیا گیا۔

واضح رہے کہ اس سے پہلے جسٹس ایس مرلی دھر کے تبالے پر پرینکا گاندھی نے مرکزی حکومت پر شدید تنقید کی ہے۔ ایک ٹویٹ میں پرینکا گاندھی نے کہا کہ آدھی رات کو جسٹس مرلی دھر کا تبادلہ افسوس ناک اور شرمناک ہے۔ حکومت طاقت کے زور پر انصاف پسندوں کا منہ بند کرنا چاہتی ہے۔ خیال رہے کہ بدھ کے روز دہلی میں تشدد اور بی جے پی رہنماؤں کے اشتعال انگیز بیانات پر پولیس کو زبردست پھٹکار لگائی تھی اور بی جے پی کے تین لیڈروں کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کی ہدایت دی تھی۔



قابل غور ہے کہ دہلی ہائی کورٹ کے جج مُرلی دھر کا گزشتہ رات پنجاب ۔ہریانہ ہائی کورٹ میں تبادلہ کردیا گیا۔جسٹس مُرلی دھر کے تبادلہ کا نوٹیفکیشن بھی جاری کردیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق کچھ دِنوں قبل سُپریم کورٹ کی کالیجیئم نے جسٹس مُرلی دھر کے تبادلے پر فیصلہ لیا تھا۔ خیال رہے کہ دہلی تشدد معاملے میں زخمیوں کے علاج کے معاملے اور ایمبولینس کو محفوظ راستہ دیئے جانے کے سلسلے میں جسٹس مُرلی دھر نے آدھی رات کو سماعت کی تھی۔ اشتعال انگیز تقریر کے معاملے میں سماعت کے دوران بھی جسٹس مُرلی دھر نے دہلی پولیس کی سرزنش کی تھی اوراشتعال انگیز بیان دینے کے سلسلے میں بی جے پی کے تین لیڈروں کے خلاف ایف آئی آر درج کرنے کی ہدایت دی تھی۔
خیال رہے جسٹس مرلی دھر وہی جج ہیں جنہوں نے دہلی تشدد پر کل ہونے والی سماعت کے دوران اشتعال انگیز تقریر کرنے والے لیڈروں کے خلاف ایف آئی آر درج نہ کئے جانے کو لے کر مرکزی حکومت اور پولیس کو آڑے ہاتھوں لیا تھا۔
فسادمتاثرہ شمال مشرقی دہلی میں امن بحالی کی کوششیں جاری ہیں۔ شمال مشرقی دہلی میں کشیدگی کے درمیان کانگریس آج امن مارچ نکالنے جارہی ہے۔ کانگریس لیڈر راشٹر پتی بھون تک مارچ کرین گے اوردہلی کے فساد متاثرہ علاقوں میں امن بحالی کی کوششیں تیز ترکرنے کی مانگ کرین گے۔ کانگریس لیڈر صدرجمہوریہ رام ناتھ کووند کو میمورنڈم بھی سونپیں گے۔
First published: Feb 27, 2020 12:48 PM IST