ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

راہل گاندھی کی سیکورٹی میں چوک کا الزام، وزارت داخلہ نے دیا یہ جواب

خط میں کہا گیا ہے کہ راہل گاندھی کی سکیورٹی میں سنگین چوک ہوئی ہے اور اس تعلق سے مناسب کاروائی کی جانی چاہیے۔ راہل گاندھی کی زندگی کو خطرہ ہے اس لیے ان کی پختہ سکیورٹی کا انتظام ہونا چاہیے

  • Share this:
راہل گاندھی کی سیکورٹی میں چوک کا الزام، وزارت داخلہ نے دیا یہ جواب
راہل گاندھی، پرینکا گاندھی ودیگر کانگریس لیڈران: فائل فوٹو

کانگریس نے پارٹی کے صدر راہل گاندھی کی سکیورٹی میں چوک کا الزام عائد کرتے ہوئے مرکزی وزیر داخلہ راجناتھ سنگھ  کو خط لکھ کر مناسب کاروائی کا مطالبہ کیا ہے۔ کانگریس نے جمعرات کو راجناتھ  سنگھ کو خط لکھ کر کہا کہ اترپردیش میں پارلیمانی حلقہ امیٹھی میں پرچہ نامزدگی داخل کرنے کے بعد صحافیوں سے گفتگو کے دوران راہل گاندھی کے سر اور ماتھے پر سات بار ہرے رنگ کی لیزر شعائیں دیکھی گئیں جو ان کی سکیورٹی میں سنگین چوک ہے۔

خط میں کہا گیا ہے کہ راہل گاندھی کی سکیورٹی میں سنگین چوک ہوئی ہے اور اس تعلق سے مناسب کاروائی کی جانی چاہیے۔ راہل گاندھی کی زندگی کو خطرہ ہے اس لیے ان کی پختہ سکیورٹی کا انتظام ہونا چاہیے۔ راہل گاندھی کو ایس پی جی سکیورٹی ملی ہوئی ہے۔ کانگریس نے سابق وزیر اعظم اندرا گاندھی اور راجیو گاندھی کے قتل کا ذکر کرتے ہوئے کہا ہے کہ ان دونوں کی سکیورٹی کے بارے میں خفیہ اطلاعات تھیں تاہم سکیورٹی میں خامیوں کی وجہ ہی سے ان کی موت ہوئی۔

وہیں، بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) نے بدھ کے روز کانگریس کے صدر راہل گاندھی کی سکیورٹی میں چوک اور ان پر لیزر شعائیں ڈالے جانے کی شکایت پر کہا کہ وزارت داخلہ اس پر مناسب کاروائی کرے گی۔ بی جے پی کی قد آور رہنما اور وزیردفاع نرملا سیتا رمن نے پارٹی ہیڈکوارٹر میں ایک پریس کانفرنس میں کانگریس کے صدر راہل گاندھی کی سکیورٹی میں چوک کی شکایت کے بارے میں پوچھے جانے پر کہا کہ انھیں پورا بھروسہ ہے کہ راہل گاندھی کی سکیورٹی کے سلسلے میں کانگریس کی شکایت پر مرکزی وزارت داخلہ مناسب کاروائی کرے گی۔

ذرائع کے مطابق کانگریس نے خط میں کہا ہے کہ  پرچہ نامزدگی داخل کرنے کے بعد جب راہل گاندھی صحافیوں سے گفتگو کررہے تھے تو اسی  وقت ان کے سر کے حصے پر ہرے رنگ کی لیزر شعائیں کئی بار ڈالی گئی تھیں۔


دوسری طرف، وزارت داخلہ نے اس معاملہ میں کہا ہے کہ ایس پی جی نے جانکاری دی ہے کہ راہل گاندھی کی جان کو کوئی خطرہ نہیں ہے۔ جس ہری لائٹ کی بات ہو رہی ہے وہ کانگریس فوٹوگرافر کے موبائل کی تھی۔ ساتھ ہی وزارت داخلہ نے یہ واضح بھی کر دیا کہ ہمیں ابھی تک کانگریس سے کوئی خط نہیں ملا ہے۔

نیوز ایجنسی یو این آئی، اردو کے ان پٹ کے ساتھ
First published: Apr 11, 2019 04:42 PM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading