ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

ٹھیکے پر مارپیٹ، دھمکی اور قتل کے اشتہار والے اس پوسٹر پر مچا ہنگامہ تو پولیس نے کی کارروائی

نوچنڈی تھانہ پولیس نے اس معاملے میں تحریر ملنے کے بعد پوسٹ وائرل کرنے والے فرضی نیوز رپورٹر کو حراست میں لیکر پوچھ تاچھ کی ہے۔ ایس ایس پی میرٹھ کا کہنا ہے کہ اس پوسٹر کا میرٹھ سے کوئی تعلق نہیں ہے ، ایک شخص نے اسے میرٹھ کا بتا کر پوسٹ کیا ہے جس کے خلاف کاروائی کی گئی ہے۔

  • Share this:
ٹھیکے پر مارپیٹ، دھمکی اور قتل کے اشتہار والے اس پوسٹر پر مچا ہنگامہ تو پولیس نے کی کارروائی
ٹھیکے پر مارپیٹ اور قتل کے اشتہار والے اس پوسٹر پر مچا ہنگامہ تو پولیس نے کی کارروائی

میرٹھ ۔ 55 ہزار میں قتل کی سپاری والا پوسٹر وائرل ہونے کے بعد میرٹھ پولیس نے اس پوسٹ کو سوشل میڈیا گروپس میں وائرل کرنے والے شخص کے خلاف کارروائی کی ہے۔ سوشل میڈیا پر کچھ دنوں سے وائرل کی جا رہی اس پوسٹر میں باقاعدہ دھمکی دینے، اسے لیکر زخمی کرنے، پیٹنے اور قتل کرنے کی ریٹ لسٹ جاری کی گئی ہے اور ساتھ میں رابطے کے لیے ایک موبائل نمبر بھی جاری کیا گیا ہے۔


اس پوسٹ کے سوشل میڈیا پر وائرل ہونے کے بعد پولیس نے معاملے کی جانچ کی ہے۔ وہیں ایک فرضی نیوز پورٹل کے ذریعہ سابق ایم ایل اے ونود حریت کے بیٹے کے نام پر اس پوسٹ کو وائرل کرنے والے کے خلاف سابق ایم ایل اے نے پولیس میں شکایت کی ہے جس پر کاروائی کرتے ہوئے نوچندی تھانہ پولیس نے ایک شخص کو حراست میں لیا ہے اور معاملے کی تحقیقات کر رہی ہے۔


گزشتہ تین چار دنوں سے واٹس ایپ گروپ پر ایک پوسٹ وائرل ہو رہی تھی جس میں ایک فرضی نیوز پورٹل کے ذریعے یہ وائرل کیا جا رہا تھا کہ بی ایس پی کے سابق ایم ایل اے ونود حریت کے بیٹے شری کانت نے وصولی ، مارپیٹ اور قتل کی سپاری کے اشتہار کا ایک پوسٹر وائرل کیا ہے۔ اس پوسٹ کے سامنے آنے کے بعد سابق ایم ایل اے ونود حریت نے جھوٹا قرار دیتے ہوئے ان کے بیٹے کو بدنام کرنے کی سازش کا الزام لگاتے ہوئے پوسٹ کو وائرل کرنے والے کے خلاف کارروائی کرنے کی پولیس میں شکایت کی ہے۔


نوچنڈی تھانہ پولیس نے اس معاملے میں تحریر ملنے کے بعد پوسٹ وائرل کرنے والے فرضی نیوز رپورٹر کو حراست میں لیکر پوچھ تاچھ کی ہے۔ ایس ایس پی میرٹھ کا کہنا ہے کہ اس پوسٹر کا میرٹھ سے کوئی تعلق نہیں ہے ، ایک شخص نے اسے میرٹھ کا بتا کر پوسٹ کیا ہے جس کے خلاف کاروائی کی گئی ہے۔
Published by: Nadeem Ahmad
First published: Oct 14, 2020 09:09 AM IST