உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    COVID-19: ہندوستان کے پاس ہوگی دنیا کی پہلی ڈی این اے کورونا ویکسین ، تیسرے مرحلہ کا ٹرائل جاری

    ہندوستان کے پاس ہوگی دنیا کی پہلی ڈی این اے کورونا ویکسین ، تیسرے مرحلہ کا ٹرائل جاری

    ہندوستان کے پاس ہوگی دنیا کی پہلی ڈی این اے کورونا ویکسین ، تیسرے مرحلہ کا ٹرائل جاری

    Coronavirus DNA Vaccine Zydus Cadila : وزیر صحت نے بتایا کہ اگر ویکسین سبھی ٹرائل میں پاس ہوجاتی ہے اور اس کو ملک میں استعمال کی منظوری ملتی ہے تو یہ کورونا وائرس کی روک تھام کیلئے دنیا کا پہلا ڈی این اے پر مبنی ٹیکہ اور ملک میں دسیتاب چوتھا ٹیکہ ہوگا ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : کورونا وائرس کے خلاف جنگ میں ہندوستان کو ہتھیار کے طور پر جلد ہی ایک اور ویکسین ملنے والی ہے ۔ مرکزی وزیر صحت منسکھ مانڈویا نے منگل کو راجیہ سبھا میں بتایا کہ جائیڈس کیڈیلا کمپنی کی کورونا ویکسین جائیکوو۔ ڈی کے تیسرے مرحلہ کا کلینیکل ٹرائل جاری ہے ۔ یہ کورونا وائرس کے خلاف ایک پلاسمڈ ڈی این اے ویکسین ہے ۔ مانڈویا نے ایوان کو بتایا کہ اگر ویکسین سبھی ٹرائل میں پاس ہوجاتی ہے اور اس کو ملک میں استعمال کی منظوری ملتی ہے تو یہ کورونا وائرس کی روک تھام کیلئے دنیا کا پہلا ڈی این اے پر مبنی ٹیکہ اور ملک میں دسیتاب چوتھا ٹیکہ ہوگا ۔

      وزیر صحت نے کہاکہ ملک میں کورونا کے ویکسین پروڈکشن کی استعداد بڑھانے کی کوششیں کی جا رہی ہیں اور جیسے جیسے پروڈکشن بڑھے گا ویسے ویسے ٹیکے لگانے کی شرح بڑھے گی۔ ابھی تقریباً 50 لاکھ یومیہ کی رفتار سے ویکسین لگائے جا رہے ہیں۔ بعد میں اسے 60 لاکھ اور 75 لاکھ کی جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ کورونا وائرس سے متعلق دواؤں کا پروڈکشن بڑھایا گیا ہے اور بلیک فنگس کی دوا کا پروڈکشن بڑھانے کے علاوہ درآمد بھی کی گئی ہے۔

      انہوں نے کہا کہ سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا نے ماہانہ 11 کروڑ ٹیکوں کا پروڈکشن شروع کر دیا ہے اور حکومت سےیہ سبھی ٹیکے مل رہے ہیں۔ ہندوستان بایوٹیک سےبھی کہا گیا ہے کہ پروڈکشن بڑھائے۔ جولائی ماہ میں ملک میں ڈھائی کروڑ افراد کو مزید اگست تین کروڑ سے زیادہ افراد کو کورونا کے ٹیکے لگائے جائیں گے۔

      وزیر صحت نے مزید کہا کہ کورونا وبا کی تیسری لہر کو روکنے کے لیے تمام فریقوں کے ساتھ مل کر ہر ممکن تیاری کی گئی ہے اور اس کے لیے پہلے ہی 23 ہزار کروڑ روپے کے پیکج کا اعلان کیا گیا ہے ۔ منسُکھ مانڈویا نے کہا کہ مرکزی حکومت نے پیکج کا جو اعلان کیا ہے، اس سے ریاستوں کو مدد کی جائے گی۔ انہوں نے ریاستوں سے اپنے منصوبوں کو جلد سے جلد مرکز کو بھیجنے کی درخواست کی تاکہ فوراً رقم مہیا کروائی جا سکے۔

      انہوں نے کہا کہ مرکزی حکومت کے پیکج سے ضلع اسپتالوں میں بچوں کے لیے وارڈ، آئی سی یو کی سہولت، دوا کی دستیابی اور ایمبولینس کی سہولت مہیا کروائی جائے گی۔ یہ رقم نو ماہ میں خرچ کی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ کووڈ-19 کی دوسری لہر کے دوران ملک میں وسیع پیمانے پر میڈیکل آکسیجن کا مطالبہ بڑھا تھا اور اسی کا خیال کرکے مرکزی حکومت نے پورے ملک میں 1573 آکسیجن پلانٹ لگانے کا فیصلہ کیا ہے۔ ان میں سے 316 پلانٹ شروع ہو گئے ہیں۔ باقی پلانٹس اگست تک نصب کر دیے جائیں گے ۔ انہوں نے عوامی نمائندوں سے کہا کہ وہ بھی ان پلانٹس پر نظر رکھیں۔

      وزیر صحت نے کورونا سے لوگوں کی موت پر اظہار افسوس کرتے ہوئے کہا کہ مرکزی حکومت موت کے کسی اعداد و شمار کو نہیں چھپا رہی ہے بلکہ ریاستوں سے موت کے اعداد و شمار ملے ہیں، انھیں بتایا جا رہا ہے۔ کسی بھی ریاست سے کہا کہ اعداد و شمار کم نہ کریں۔

      نیوز ایجنسی یو این آئی کے ان پٹ کے ساتھ ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: