ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

بچوں کی بجائے بالغوں کی ٹیکہ کاری پر حکومت کا زور ، ڈاکٹر وی کے پال نے بتایا کیوں؟

ملک کی کووڈ ٹاسک فورس کے سربراہ ڈاکٹر وی کے پال (Dr. VK Paul) نے کہا کہ اس وقت بچوں سے زیادہ بالغوں کی ٹیکہ کاری پر زور ہونا چاہئے ۔ حالانکہ کچھ دنوں پہلے این آئی ایم ڈی ایم کی رپورٹ میں کورونا کی تیسری لہر کے پیش نظر بچوں میں سنگین خطروں کی بات کہی گئی تھی ۔

  • Share this:
بچوں کی بجائے بالغوں کی ٹیکہ کاری پر حکومت کا زور ، ڈاکٹر وی کے پال نے بتایا کیوں؟
بچوں کی بجائے بالغوں کی ٹیکہ کاری پر حکومت کا زور ، ڈاکٹر وی کے پال نے بتایا کیوں؟ ۔ فائل فوٹو ۔

نئی دہلی : ملک میں کورونا وائرس کی تیسری لہر کے بچوں پر اثر کو لے کر جاری تشویش کے درمیان کووڈ ٹاسک فورس کے سربراہ ڈاکٹر وی کے پال نے بالغوں کی ٹیکہ کاری پر زور دیا ہے ۔ ڈاکٹر وی کے پال کا کہنا ہے کہ بچوں کی بجائے اس وقت اصل توجہ بالغوں کی ٹیکہ کاری پر ہونی چاہئے ۔ انہوں نے زور دیا کہ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن بھی بچوں کی ٹیکہ کاری کی سفارش نہیں کررہا ہے ۔


ڈاکٹر پال کا یہ بیان سرکار کی ہی ایک رپورٹ سے میل نہیں کھا رہا ہے ۔ بتادیں کہ کچھ دنوں پہلے نیشنل انسٹی ٹیوٹ آف ڈیزاسٹر مینجمنٹ کے ماہرین نے ایک چونکانے والی رپورٹ پیش کی تھی ۔ رپورٹ میں کہا گیا تھا کہ اگر بچے بڑی تعداد میں کورونا وائرس سے متاثر ہوتے ہیں تو ان کیلئے چائلڈ میڈیکل سروسیز جیسے ڈاکٹر ، میڈیکل اسٹاف ، وینٹی لیٹر اور ایمبولینس جیسی سہولیات نہیں ہیں ۔


کوویکسین کو ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن سے منظوری پر ڈاکٹر پال نے کہا کہ ہمیں ڈبلیو ایچ او کو سائنس کی بنیاد پر فیصلہ لینے کیلئے وقت دینا چاہئے ۔ ہم امید کرتے ہیں کہ فیصلہ جلد آجائے گا ۔ جن لوگوں نے کو ویکسین لگوائی ہے ، ان کیلئے سفر کی کچھ بندشیں ہیں ۔ ان کیلئے ڈبلیو ایچ او کی رضامندی اہم ہے ۔


جائیڈس کیڈیلا کی ویکسین پر انہوں نے بتایا کہ اس کی قیمت کو لے کر بحث کی جارہی ہے اور اس پر جلد ہی فیصلہ کیا جائے گا ۔ انہوں نے کہا کہ ہم اس ویکسین کو نیشنل ویکسینیشن پروگرام میں شامل کرنا چاہتے ہیں ۔

کورونا انفیکشن پھیلانے والے سی او وی 2 وائرس یعنی کووڈ 19 کی جینوم سیکوینسنگ کے ایک سال کے اندر ہی سائنسدانوں نے کورونا ویکسین کو بنا لیا ۔ اسی مدت میں ان کا ٹرائل ہوا اور اس کو لوگوں کو لگایا بھی جانے لگا ۔ ڈاکٹر وی کے پال نے کہا کہ اس سے اس بات کا امکان بڑھ گیا ہے کہ لوگوں کی پوری طرح ٹیکہ کاری کرکے کورونا انفیکشن سے بچاو ہوسکتا ہے ۔
Published by: Imtiyaz Saqibe
First published: Sep 14, 2021 06:21 PM IST