உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    Omicron: اومی کرون انفیکشن کے خلاف کورونا ویکسین غیر کارکرد؟ کیسے رہیں محفوظ

    اطلاعات کے مطابق ابتدائی تحقیق سے پتہ چلتا ہے کہ زیادہ تر ممالک میں دی جانے والی ویکسین انتہائی متعدی اومی کرون ویرینٹ کے خلاف ناکافی ہے یا کوئی دفاع پیش نہیں کرتی ہے۔ تاہم یہ پایا گیا کہ موجودہ ویکسین شدید اومی کرون ویرینٹ سے تحفظ فراہم کرسکتی ہے۔

    اطلاعات کے مطابق ابتدائی تحقیق سے پتہ چلتا ہے کہ زیادہ تر ممالک میں دی جانے والی ویکسین انتہائی متعدی اومی کرون ویرینٹ کے خلاف ناکافی ہے یا کوئی دفاع پیش نہیں کرتی ہے۔ تاہم یہ پایا گیا کہ موجودہ ویکسین شدید اومی کرون ویرینٹ سے تحفظ فراہم کرسکتی ہے۔

    اطلاعات کے مطابق ابتدائی تحقیق سے پتہ چلتا ہے کہ زیادہ تر ممالک میں دی جانے والی ویکسین انتہائی متعدی اومی کرون ویرینٹ کے خلاف ناکافی ہے یا کوئی دفاع پیش نہیں کرتی ہے۔ تاہم یہ پایا گیا کہ موجودہ ویکسین شدید اومی کرون ویرینٹ سے تحفظ فراہم کرسکتی ہے۔

    • Share this:
      عالمی وبا کورونا وائرس (Covid-19) کے خلاف ویکسین اس وقت ہی تیار کی گئی، جب پوری دنیا SARs-COV-2 وائرس کے مضمرات سے لڑ رہی تھی۔ ویکسن انتہائی غیر یقینی وقت کے دوران ہی ایک بچاؤ ثابت ہوئی اور اب بھی بہت سے لوگ اسی پر بھروسہ کرتے ہیں۔

      تاہم نئے کورونا ویرینٹ اومی کرون (Omicron) کے ظہور کے ساتھ ماہرین کو ویکسین کی افادیت پر قدرے شبہ ہے۔ اومی کرون ویرینٹ، کورونا کی نہایت ہی تبدیل شدہ قسم ہے اگرچہ اس کی شدت زیادہ ہے لیکن اس کے خلاف ویکسین کارکرد ہے۔ خیال کیا جاتا ہے کہ وہ ویکسین سے پیدا ہونے والی قوت مدافعت سے بچ جائے گا، جو کہ مکمل طور پر ویکسین شدہ افراد میں بھی اومی کرون کیسز کی تعداد میں اضافے کے پیچھے بنیادی وجوہات میں سے ایک ہے۔

      اطلاعات کے مطابق ابتدائی تحقیق سے پتہ چلتا ہے کہ زیادہ تر ممالک میں دی جانے والی ویکسین انتہائی متعدی اومی کرون ویرینٹ کے خلاف ناکافی ہے یا کوئی دفاع پیش نہیں کرتی ہے۔ تاہم یہ پایا گیا کہ موجودہ ویکسین شدید اومی کرون ویرینٹ سے تحفظ فراہم کرسکتی ہے۔ جبکہ فائزر اور موڈرنا ویکسین تیسری بوسٹر خوراک کی مدد سے اومی کرون سے انفیکشن کو روکنے میں کچھ کامیابی دکھائی، لیکن بدقسمتی سے یہ دونوں mRNA ویکسین زیادہ تر ممالک میں دستیاب نہیں ہیں۔

      اس کے برعکس AstraZeneca، Johnson & Johnson اور چین اور روس میں تیار کردہ کورونا وائرس کی ویکسین کے بارے میں کہا جاتا ہے کہ وہ اومی کرون انفیکشن کو روکنے کے لیے کچھ نہیں کر سکتیں۔ یہ محققین کے مطابق نہ صرف معاشرے کے سب سے زیادہ کمزور لوگوں کے لیے ایک بڑا خطرہ بن سکتا ہے، بلکہ مستقبل میں اس کی مزید مختلف حالتوں (Mutations) کے سامنے آنے کا سبب بھی بن سکتا ہے۔ انفیکشن کے عالمی اضافے کی روشنی میں ماہرین نے لوگوں پر زور دیا ہے کہ وہ ہر وقت چوکس اور باخبر رہیں۔

      قومی، بین الاقوامی اور جموں وکشمیر کی تازہ ترین خبروں کےعلاوہ تعلیم و روزگار اور بزنس کی خبروں کے لیے نیوز18 اردو کو ٹویٹر اور فیس بک پر فالو کریں ۔
      Published by:Mohammad Rahman Pasha
      First published: