ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

میڈیکل کالج کے اسٹاف کی ایسی لاپرواہی کہ بدل دی کورونا مریضوں کی ڈیڈ باڈی

میرٹھ میڈیکل کالج کی ایک اور بڑی لاپرواہی کا معاملہ سامنے آیا ہے جہاں لالہ لاجپت رائے میڈیکل کالج اسٹاف نے کورونا مثبت مریضوں کی موت کے بعد ان کے اہل خانہ کو ڈیڈ باڈی بدل کر سپرد کر دی۔ اہل خانہ جب آخری رسومات ادا کرنے کے لیے شمشان پہنچے تب اس معاملے کا انکشاف ہوا۔

  • Share this:
میڈیکل کالج کے اسٹاف کی ایسی لاپرواہی کہ بدل دی کورونا مریضوں کی ڈیڈ باڈی
میڈیکل کالج کے اسٹاف کی ایسی لاپرواہی کہ بدل دی کورونا مریضوں کی ڈیڈ باڈی

میرٹھ میڈیکل کالج کی ایک اور بڑی لاپرواہی کا معاملہ سامنے آیا ہے جہاں لالہ لاجپت رائے میڈیکل کالج اسٹاف نے کورونا مثبت مریضوں کی موت کے بعد ان کے اہل خانہ کو ڈیڈ باڈی بدل کر سپرد کر دی۔ اہل خانہ جب آخری رسومات ادا کرنے کے لیے شمشان پہنچے تب اس معاملے کا انکشاف ہوا۔ غازی آباد کے مودی نگر سے تعلق رکھنے والے گربچن اور میرٹھ کے یشپال کو دو روز قبل میڈیکل میں داخل کرایا گیا تھا۔ دو مریض کورونا انفیکشن سے متاثر تھے۔ گزشتہ روز میڈیکل میں ان کی موت ہو گئی اور اس کے بعد میڈیکل کالج اسٹاف نے ضروری کارروائی انجام دیتے ہوئے ان کے اہل خانہ کو ڈیڈ باڈی سپرد کر دی۔ لیکن جب آخری رسومات کی ادائیگی کے لیے میت کو لے جایا جا رہا تھا تو اس معاملے کا انکشاف ہوا  اور میڈیکل اسٹاف کی لاپرواہی اُجاگر ہو گئی۔ اب اس معاملے میں ڈی ایم نے جانچ کا حکم دیتے ہوئے کارروائی کی یقین دہانی کرائی ہے۔


دراصل غازی آباد کے مودی نگر سے تعلق رکھنے والے بزرگ پرا لیسس پیشنٹ گربچان کو 3 ستمبر کو میرٹھ میڈیکل کالج میں داخل کرایا گیا تھا جہاں ان کا کورونا ٹیسٹ مثبت آیا تھا۔ وہیں 4 تاریخ کو میرٹھ کے کنکر کھیڑا علاقے کے رہنے والے يشپال کو بھی داخل کرایا گیا تھا۔ دونوں مریض کورونا مثبت تھے جن کی 5 ستمبر کو موت ہو گئی۔


میڈیکل اسٹاف نے کاغذی کارروائی پوری کرنے کے بعد باڈی دونوں مریضوں کے گھر والوں کے سپرد کر دی۔ کورونا کی دہشت کی وجہ سے  یاشپال کے اہل خانہ نے تو چہرہ دیکھے بغیر ہی میت کی آخری رسوم ادا  بھی کر دی لیکن گربچن کے اہل خانہ نے آخری رسوم ادا کرنے سے قبل جب چہرہ دیکھا تو ان کے ہوش اُڑ گئے۔ گھر والوں نے میڈیکل کالج اسٹاف کو اس کی جانکاری دی۔ میڈیکل انتظامیہ نے اسٹاف کی لاپرواہی کا اعتراف کرتے ہوئے جانچ کا حکم دیا ہے اور لاپرواہی برتنے والوں کے خلاف کاروائی کی یقین دہانی کرائی ہے۔

Published by: Nadeem Ahmad
First published: Sep 07, 2020 08:53 AM IST