ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

اترپردیش : ڈاکٹروں نے اڑائی سماجی فاصلوں کی دھجیاں ، جانئے کیوں

یو پی میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی بڑھتی تعداد پر لگام لگانے کیلئے حکومت نے پرائیویٹ اسپتالوں ، نرسنگ ہوم اور کلینک میں جنرل او پی ڈی پر پابندی لگا رکھی ہے ۔

  • Share this:
اترپردیش : ڈاکٹروں  نے اڑائی سماجی فاصلوں کی دھجیاں ، جانئے کیوں
اترپردیش : ڈاکٹروں نے اڑائی سماجی فاصلوں کی دھجیاں ، جانئے کیوں

الہ آباد : کورونا وائرس کے پھیلاؤ کو روکنے کے لئے سماجی فاصلہ کی اہمیت پر سب سے زیادہ زور دیا جا رہا ہے ۔ لیکن اگر ڈاکٹروں کی طرف سے ہی سماجی فاصلوں کی دھجیاں اڑائی جانے لگے ، تو کورونا کے خلاف جاری جنگ کے کمزور ہونے کا اندازہ بخوبی لگایا جا سکتا ہے ۔ ایسا ہی کچھ نظارہ الہ آباد میں ان دنوں دیکھنے کو مل رہا ہے ، جہاں پرائیویٹ اپستال اور نرسنگ ہوم چلانے والے ڈاکٹر اپنا کاروبار پھر سے شروع کرنے کی جدو جہد کر رہے ہیں ۔


یو پی میں کورونا وائرس سے متاثرہ افراد کی بڑھتی تعداد پر لگام لگانے کیلئے حکومت نے پرائیویٹ اسپتالوں ، نرسنگ ہوم اور کلینک میں جنرل او پی ڈی پر پابندی لگا دی ہے ۔ اب صرف وہی نجی اسپتال اور کلینک ایمرجینسی خدمات دے سکتے ہیں ، جنہیں حکومت کی طرف سے انفیکشن پریوینشن پروٹوکول کی خصوصی تربیت دی گئی ہو ۔ اس تربیت کو حاصل کرنے کے بعد ڈاکٹروں اور نرسوں کو حکومت کی طرف سے سند دی جائے گی  ۔ اس سند حاصل کرنے والے ڈاکٹر ہی اپنے نجی اسپتالوں اور کلینک میں مریضوں کو ایمرجینسی خدمات مہیا کرا سکتے ہیں ۔


ڈاکٹروں کو یہ تربیت ریاست کے ہر ضلع میں قائم چییف میڈیکل افسر کے دفتر میں دی جائے گی ۔ لیکن اس خصوصی تربیت کو حاصل کرنے کے لئے ڈاکٹروں کو پہلے سی ایم او دفتر میں اپنا رجسٹریشن کرانا ہوگا ۔ حکومت کی طرف سے اس ہدایت کے جاری ہوتے ہی چیف میڈیکل افسر آفس کے باہر ڈاکٹروں کی بھاری بھیڑ جمع ہو گئی ۔ ڈاکٹروں کی بھیڑ کو قابو میں کرنے کے لئے سی ایم او آفس میں پہلے سے کوئی انتظام نہیں کیا گیا تھا ۔ دیکھتے ہی دیکھے یہ تعداد اتنی بڑھ گئی کہ سی ایم او آفس میں کھڑے ہو نے کی جگہ نہیں رہی ۔  اس مجمع میں شامل ہر ڈاکٹر سب سے پہلے اپنا رجسٹریشن کرا لینا چاہتا تھا ۔


دوسروں کے لئے گائڈ لائن جاری کرنے والا سی ایم او آفس ڈاکٹروں کے سامنے بالکل لاچار نظر آنے لگا ۔ جمع لگانے والے ڈاکٹروں نے صرف چند منٹوں میں ہی سماجی فاصلہ کی دھجیاں اڑا کر رکھ دیں ۔ اس افرا تفری کی وجہ سے  سی ایم او آفس کا نظام معطل ہو کر رہ گیا ۔ اس بد نظمی کے بارے میں جب چیف میڈیکل افسر ڈاکٹر جی ایس واجپئی سے رابطہ کیا گیا ، تو ان کا کہنا تھا کہ حالات کو فوری طور سے سنبھال لیا گیا ہے ۔ ان کا کہنا تھا کہ پرائیویٹ ڈاکٹروں کے رجسٹریشن کے بعد جلد ہی ان کو تربیت دینے کا کام شروع کر دیا جائے گا ۔ ڈاکٹر جی ایس واجپئی کا یہ بھی کہنا  تھا کہ ڈاکٹروں کی  ٹریننگ کے بعد شہر میں طبی خدمات کی صورت حال پہلے سے کافی بہتر ہو جائے گی ۔
First published: May 11, 2020 12:51 AM IST
corona virus btn
corona virus btn
Loading