உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    علی گڑھ پھر سے کورونا وائرس کی زد میں ، 2 نئے مریضوں کے ملنے کے بعد 3 کلو میٹر کا علاقہ سیل

    علی گڑھ پھر سے کورونا وائرس کی زد میں، 2 نئے مریضوں کے ملنے کے بعد 3 کلو میٹر کا علاقہ سیل

    علی گڑھ پھر سے کورونا وائرس کی زد میں، 2 نئے مریضوں کے ملنے کے بعد 3 کلو میٹر کا علاقہ سیل

    اترپردیش کا ضلع علی گڑھ ابھی تک کورونا سے پاک اضلاع کی فہرست میں شامل تھا ، مگر آج اچانک دو مریضوں کے کورونا پازیٹیو ملنے کے بعد ضلع انتظامیہ حرکت میں آگئی ہے ۔

    • Share this:
    ملک میں کورونا کے معاملات بڑھتے ہی جارہے ہیں  ۔ اترپردیش کا ضلع علی گڑھ ابھی تک کورونا سے پاک اضلاع کی فہرست میں شامل تھا ، مگر آج اچانک دو مریضوں کے کورونا پازیٹیو ملنے کے بعد ضلع انتظامیہ حرکت میں آگئی ۔ علی گڑھ کے باشندگان اُمید کررہے تھے کہ آج انتظامیہ انھیں لاک ڈاؤن میں کچھ راحت دے سکتی ہے ، لیکن دوپہر بعد آئی دو مریضوں کی جانچ رپورٹ نے ان کی سبھی اُمیدوں پر پانی پھیر دیا اوراب علی گڑھ انتظامیہ مزید سختی برت رہی ہے اور مذکور علاقوں کو سیل کردیا گیا ہے ۔

    تفصیلات کے مطابق تھانہ کوتوالی کے تحت علاقہ عثمان پاڑہ گالی بھاٹان کے رہنے والے 55 سالہ معراج الدین کئی دنوں سے بیمار چل رہے تھے ۔ اہل خانہ انہیں جواہر لعل نہرو میڈیکل کالج اسپتال لے گئے ، جہاں ان کی جانچ ہوئی اور ان کو کورونا پازیٹو پایا گیا ۔ فوراً ہی ضلع انتظامیہ کو مطلع کرتے ہوئے انہیں انتہائی نگہداشت والے یونٹ میں رکھا گیا ہے ۔ دوسرا کیس تھانہ دہلی گیٹ کے تحت علاقہ نیوری الہداد پور کے 31 سالہ ذاکر کا ہے ۔ بتایا جاتا ہے کہ مذکورہ مریض میں کورونا جیسی کوئی علامت نہیں تھی ۔ دو مریض ملنے کے بعد ضلع انتظامیہ نے احتیاط کے طور پر قدیم شہر میں مزید فورس تعینات کردی ہے اور لوگوں کی آمد و رفت پر شکنجہ کسنے کے لئے بیریکیڈنگ کی جارہی ہے ۔ ساتھ ہی تین کلو میٹر دائرہ کے علاقہ کو پوری طرح سے سیل کرنے کی تیاری کی جارہی ہے ۔

    ضلع مجسٹریٹ چندر بھوشن سنگھ نے بتایا کہ دونوں کورونا پازیٹیو ملنے کے بعد ضلع انتظامیہ نے جنگی پیمانہ پر کارروائی شروع کردی ہے ۔ محکمہ صحت کے ناڈل افسر چیف ڈیولپمنٹ افسر (سی ڈی او) کی نگرانی میں دونوں علاقوں تھانہ کوتوالی اور تھانہ دہلی گیٹ کے متعلقہ علاقوں کو 3 کلو میٹر سیل کرنے کی کارروائی جاری ہے اور دونوں ہی علاقوں میں نگر نگم اور شعبہ پنچایتی راج کے ذریعہ سینیٹائزیشن کا کام کیا جارہا ہے ۔

    ضلع مجسٹریٹ چندر بھوشن سنگھ نے مزید کہا کہ 27 اپریل تک کوئی بھی سرکاری دفتر نہیں کھولے جائیں گے ۔ انھوں نے کہا کہ دیہی علاقوں میں جن کاموں کی مشروط اجازت دی گئی ہے ، ان میں اینٹھ بھٹا وغیرہ شامل ہیں ۔ تاہم  انھیں بھی سماجی فاصلہ اور صفائی وغیرہ کے ضابطوں کو ملحوظ رکھنا ہوگا ۔ انڈسٹریل ایریا اور تالا نگری میں زیادہ تر کاریگر شہری علاقوں سے تعلق رکھتے ہیں ، اس لئے وہاں ابھی 27  تک کوئی چھوٹ نہیں دی جائے گی ۔
    Published by:Imtiyaz Saqibe
    First published: