உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کتنا خطرناک ہے کورونا کا ڈیلٹا پلس ویریئنٹ ، جانئے ایکسپرٹ نے کیا کہا ؟

    کتنا خطرناک ہے کورونا کا ڈیلٹا پلس ویریئنٹ ، جانئے ایکسپرٹ نے کیا کہا ؟

    کتنا خطرناک ہے کورونا کا ڈیلٹا پلس ویریئنٹ ، جانئے ایکسپرٹ نے کیا کہا ؟

    Coronavirus Delta Plus Variant: بایو کیمسٹری محکمہ کے ایسوسی ایٹ پروفیسر شوبھردیپ کرماکر نے کہا کہ ہر ایک ویریئنٹ الگ طرح کے کلینیکل رسپانس کے ساتھ آتا ہے ۔ گزشتہ ویریئنٹ میں آکسیجن لیول کم ہورہا تھا ، لیکن ہمیں نہیں معلوم کہ ڈیلٹا پلس ویریئنٹ کیا لے کر آئے گا ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : کورونا کا ڈیلٹا پلس ویریئنٹ  (Corona Delta Plus Variant) کتنا خطرناک ہوگا ، فی الحال اس بارے میں ڈاکٹرس کو بھی کوئی جانکاری نہیں مل پارہی ہے ۔ ایمس کے ڈاکٹر شوبھردیپ کرماکر نے کہا کہ ڈیلٹا پلس میں اضافی میوٹینٹ K417N ہے ، جو ڈیلٹا  (B.1.617.2) کو ڈیلٹا پلس میں بدل دیتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ ایسی قیاس آرائیاں کی جارہی ہیں کہ یہ میوٹینٹ زیادہ متعدی ہے اور یہ الفا انفیکشن کے موازنہ میں 35 ۔ 60 فیصد زیادہ متعدی ہے ۔ لیکن ہندوستان میں اس کی تعداد بہت کم ہے ۔ یہ ابھی تشویش کا سبب نہیں ہے اور اس کے انفیکشن کے معاملات ابھی کم ہیں ۔

      بایو کیمسٹری محکمہ کے ایسوسی ایٹ پروفیسر شوبھردیپ کرماکر نے کہا کہ ہر ایک ویریئنٹ الگ طرح کے کلینیکل رسپانس کے ساتھ آتا ہے ۔ گزشتہ ویریئنٹ میں آکسیجن لیول کم ہورہا تھا ، لیکن ہمیں نہیں معلوم کہ ڈیلٹا پلس ویریئنٹ کیا لے کر آئے گا ۔ بتادیں کہ ملک میں کورونا کے اس نئے ویریئنٹ کے نئے معاملات دیکھنے کو مل رہے ہیں ۔ مہاراشٹر میں کورونا کے زیادہ متعدی ویریئنٹ ڈیلٹا پلس کے ابھی تک 21 معاملات سامنے آچکے ہیں ۔ وہیں کیرالہ کے دو اضلاع پلکڑ اور پتھنم ٹھٹی سے جمع کئے گئے نموں میں سارس سی او وی ٹو ڈیلٹا پلس ویریئنٹ کے کم سے کم تین معاملات پائے گئے ہیں ۔

      وائرس کا یہ نیا ویریئنٹ ڈیلٹا پلس ہندوستان میں سب سے پہلے آئے ڈیلٹا یا  ‘B.1.617.2’  شکل میں تبدیلی سے بنا ہے ۔ ہندوستان میں انفیکشن کی دوسری لہر آنے کی ایک وجہ ڈیلٹا بھی تھا۔

      گزشتہ ہفتہ مرکزی حکومت نے کہا تھا کہ کورونا وائرس کا ڈیلٹا پلس ویریئنٹ ابھی تک تشویشناک نہیں ہے اور ملک میں اس کی موجودگی کا پتہ لگانا ہوگا اور اس پر نظر رکھنی ہوگی ۔ نیتی آیوگ کے رکن ( ہیلتھ ) ڈاکٹر وی کے پال نے نامہ نگاروں سے کہا کہ ڈیلٹا پلس نام کا وائراس کا نیا ویریئنٹ سامنے آیا ہے اور یہ یوروپ میں مارچ مہینے سے ہے ۔ کچھ دن پہلے ہی اس کے بارے میں جانکاری عام ہوئی ہے ۔

      پال نے کہا کہ اس کو ابھی تشویشناک کے طور پر کٹیگرائزڈ نہیں کیا گیا ہے ۔ تشویش والا ویریئنٹ وہ ہوتا ہے ، جس میں ہمیں پتہ چلے کہ اس کے پھیلاو میں اضافہ سے انسانیت کیلئے منفی اثرات ہوتے ہیں ۔ ڈیلٹا پلس ویریئنٹ کے بارے میں اب تک ایسا کچھ معلوم نہیں ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: