உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کورونا ویکسین لگنے کے بعد اب تک 488 لوگوں کی موت ، 26 ہزار میں نظر آئے سنگین سائیڈ افیکٹ : سرکاری ڈیٹا

    کورونا ویکسین لگنے کے بعد اب تک 488 لوگوں کی موت ، 26 ہزار میں نظر آئے سنگین سائیڈ افیکٹ

    کورونا ویکسین لگنے کے بعد اب تک 488 لوگوں کی موت ، 26 ہزار میں نظر آئے سنگین سائیڈ افیکٹ

    Corona Vaccine Side Effects: اعداد و شمار پر غور کیا جائے تو موت کی تعداد کافی کم ہے ۔ ملک بھر میں سات جون تک 23 کروڑ سے زیادہ لوگوں کو ویکسین لگائی جاچکی ہے ۔ اس دوران 26200 اے ای ایف آئی کے کیسز سامنے آئے ہیں ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : ملک بھر میں ان دنوں کورونا وائرس وبا کو شکست دینے کیلئے ویکسین لگائی جارہی ہے ۔ اس درمیان سرکاری ڈیٹا کے حوالے سے سی این این نیوز 18 کو جانکاری ملی ہے کہ ویکسین لگنے کے بعد ملک بھر میں اب تک 488 افراد کی موت ہوگئی ہے جبکہ اس دوران 26 ہزار سے زائد لوگوں میں سنگین سائیڈ افیکٹ کی شکایتیں ملی ہیں ۔ سائنس کی زبان میں اس کو ایڈورس ایونٹ فالوئنگ امیونائزیشن ( اے ای ایف آئی ) کہا جاتا ہے ۔ بتادیں کہ اس طرح کے اعداد و شمار ہر ملک میں جمع کئے جاتے ہیں ۔ تاکہ ویکسین سے ہونے والے سائیڈ افیکٹ کو مستقبل میں کم کیا جاسکے ۔ یہ اعداد و شمار 16 جنوری سے سے لے کر 7 جون تک کے ہیں ۔

      ویسے اعداد و شمار پر غور کیا جائے تو موت کی تعداد کافی کم ہے ۔ ملک بھر میں سات جون تک 23 کروڑ سے زیادہ لوگوں کو ویکسین لگائی جاچکی ہے ۔ اس دوران 26200 اے ای ایف آئی کے کیسز سامنے آئے ہیں ۔ یعنی اگر فیصد میں دیکھا جائے تو یہ 0.01  فیصدی ہے ۔ بہ الفاظ دیگر اس کو اس طرح سمجھا جاسکتا ہے کہ 143 دنوں کے اندر 10 ہزار لوگوں میں سے صرف ایک آدمی پر ویکسین کا سنگین سائیڈ افیکٹ نظر آیا جبکہ ہر 10 لاکھ ویکسین لگانے والوں میں دو کی موت ہوئی ۔

      اب تک ملے اعداد و شمار کے مطابق بھارت بایوٹیک کی کوویکسین اور سیرم انسٹی ٹیوٹ آف انڈیا کی کووی شیلڈ ، ان دونوں ویکسین میں ۔۔۔۔۔ اے ای ایف آئی کیسز ملے ہیں ۔ ماہرین کا ماننا ہے کہ اعداد و شمار کو دیکھتے ہوئے موت کی تعداد اور اے ای ایف آئی کے معاملات دونوں کافی کم ہیں ۔ ایسے میں ماہرین ویکسین لگانے کا مشورہ دے رہے ہیں ۔ بتادیں کہ ہندوستان میں اب تک کورونا سے تین لاکھ سے زیادہ لوگوں کی موت ہوئی ہیں ۔ ایسے میں فی الحال ویکسین ہی کورونا کو مات دینے کا اصلی اور دمدار ہتھیار ہے ۔

      سرکاری اعداد و شمار کے مطابق اے ای ایف آئی کے کل معاملات میں سے تقریبا دو فیصدی اموات ہوئی ہیں ۔ مرنے والوں میں کل 301 مرد اور 178 خواتین شامل تھیں ۔ اس ڈیٹا میں دیگر نو لوگوں کے جنس کا ذکر نہیں ہے ۔ مرنے والوں میں 457 لوگوں کو کووی شیلڈ کی ڈوز دی گئی تھی جبکہ جن لوگوں کی موت ہوئی ، ان میں سے 20 کو کوویکسین دی گئی تھی ۔ کم سے کم گیارہ لوگوں کا ڈیٹا دستیاب نہیں تھا ۔

      خیال رہے کہ ملک میں کووی شیلڈ کی 21 کروڑ ڈوز لگائی گئی ہیں جبکہ کوویکسین کی اب تک صرف ڈھائی کروڑ ویکسین ہی لگائی گئی ہیں ۔ یعنی فیصد کے حساب سے دیکھیں تو یہ تعداد کافی کم ہے ۔
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: