உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    کووی شیلڈ کی دونوں ڈوز کے درمیان کا وقفہ ہوگا کم ، جلد ہوسکتا ہے فیصلہ : ذرائع

    کووی شیلڈ کی دونوں ڈوز کے درمیان کا وقفہ ہوگا کم ، جلد ہوسکتا ہے فیصلہ : ذرائع

    کووی شیلڈ کی دونوں ڈوز کے درمیان کا وقفہ ہوگا کم ، جلد ہوسکتا ہے فیصلہ : ذرائع

    کووڈ 19 ورکنگ گروپ کے چیئرمین ڈاکٹر این کے اروڑہ نے کہا تھا کہ کووی شیلڈ ویکسین کی دونوں ڈوز کے درمیان وقفہ کو کم کیا جاسکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ وقفہ 45 سال یا پھر اس سے زیادہ عمر کے لوگوں کیلئے ہی کم کیا جائے گا ۔

    • Share this:
      نئی دہلی : کورونا کی تیسری لہر کے اندیشہ کے درمیان کووی شیلڈ ویکسین کی دونوں خوراکوں کے درمیان وقفہ کو کم کیا جاسکتا ہے ۔ ایک افسر نے بتایا کہ کووی شیلڈ کے دو دوز کے درمیان وقفہ کو کم کرنے کے بارے میں غور وخوض کیا جارہا ہے ۔ اس سلسلہ میں ابھی نیشنل ٹیکنیکل ایڈوائزری گروپ آن امیونائزیشن ان انڈیا میں بھی گفتگو ہونی ہے ۔ موجودہ وقت میں جہاں کووی شیلڈ کی دو ڈوز کے درمیان وقفہ تین مہینے ہے ، وہیں اب بحث ہے کہ اس کو کم کیا جاسکتا ہے ۔ ذرائع کے مطابق اس سلسلہ میں حتمی فیصلہ لینے سے پہلے این ٹی اے جی آئی میں بھی اس پر گفتگو ہوگی ۔

      اس ماہ کی شروعات میں کووڈ 19 ورکنگ گروپ کے چیئرمین ڈاکٹر این کے اروڑہ نے کہا تھا کہ کووی شیلڈ ویکسین کی دونوں ڈوز کے درمیان وقفہ کو کم کیا جاسکتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ یہ وقفہ 45 سال یا پھر اس سے زیادہ عمر کے لوگوں کیلئے ہی کم کیا جائے گا ۔ یہ فیصلہ سائنسی ثبوتوں کی بنیاد پر کیا جائے گا ۔ فی الحال سبھی بالغوں کو کووی شیلڈ ویکسین کی پہلی ڈوز لینے کے بعد دوسری ڈوز 12 سے 16 ہفتہ کے وقفہ پر لگائی جارہی ہے ۔

      ایکسپرٹس کا کہنا تھا کہ پہلی ڈوز سے اینٹی باڈیز زیادہ جنریٹ ہوتی ہیں ۔ ایسے میں دوسری ڈوز تاخیر سے دی جانی چاہئے تاکہ پہلی ڈوز اپنا کام کرسکے ۔ حالانکہ مرکزی حکومت کی جانب سے وقفہ بڑھائے جانے کے کچھ دنوں بعد ہی ایک نئی اسٹڈی آئی تھی ، جس میں کہا گیا تھا کہ کووی شیلڈ کی پہلی ڈوز سے زیادہ اینٹی باڈیز بننے کا اندازہ پوری طرح سے صحیح نہیں تھا ۔

      ریاستوں، مرکز کے زیر انتظام علاقوں کو کورونا کی 58.76 کروڑ سے زائد ڈوز دی گئی

      ادھر صحت اور خاندانی بہبود کی وزارت نے جمعرات کو کہا کہ ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں کو اب تک 58.76 کروڑ سے زائد کووڈ -19 ٹیکے کی ڈوز مہیا کروائی گئی ہے۔  وزارت نے اپنے بیان میں کہا کہ حکومت ہند اور براہ راست خرید کے ذریعے اب تک ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں کو 57656410 ٹیکے کی ڈوز دی گئی ہے۔

      انہوں نے کہا کہ 1.03 کروڑ سے زائد (10339970) ڈوز ابھی اور دی جانی ہیں۔ علاوہ ازیں ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں کے پاس ابھی کورونا کی 3.77 کروڑ سے زائد یعنی 37709291 ڈوز ریاستوں اور مرکز کے زیر انتظام علاقوں کے پاس دستیاب ہے۔

      نیوز ایجنسی یو این آئی کے ان پٹ کے ساتھ ۔

       
      Published by:Imtiyaz Saqibe
      First published: