உங்கள் மாவட்டத்தைத் தேர்வுசெய்க

    پلوامہ حملےکے بعد کشمیریوں نے کی دھمکی ملنے کی شکایت توسی آرپی ایف نے بڑھا دیامدد کے لئے ہاتھ

    پلوامہ دہشت گردانہ حملے میں 40 جوان شہید ہوگئے تھے۔

    جموں وکشمیرکے پلوامہ میں جمعرات کو سی آرپی ایف کے قافلے پرہوئے دہشت گردانہ حملے میں 40 جوان شہید ہوگئے۔ جوانوں کی اس شہادت کے بعد پورے ملک میں غم اورناراضگی کاماحول ہے۔

    • Share this:
      پلوامہ دہشت گردانہ حملے کے بعد جموں وکشمیرسے باہررہ رہے کشمیریوں کومبینہ طورپر دی جارہی دھمکیوں کی خبرکودیکھتے ہوئے سری نگرواقع سی آرپی ایف ہیلپ لائن نے ان کی مدد کے لئے ہاتھ بڑھایا ہے۔ سی آرپی ایف نے ٹوئٹ کرکے کہا کہ وہ کسی بھی طرح کے استحصال کے معاملے میں ان سے رابطہ کریں۔

      جموں وکشمیرکے پلوامہ میں جمعرات کو سی آرپی ایف کے قافلے پرہوئے دہشت گردانہ حملے میں 40 جوان شہید ہوگئے۔ جوانوں کی اس شہادت کے بعد پورے ملک میں غم اور ناراضگی کا ماحول ہے۔

      سی آرپی ایف کی'مددگار' ہیلپ لائن نے اس سلسلے میں ایک ٹوئٹ کرکےکہا ہے کہ اس وقت ریاست سے باہرکشمیری طلبہ اورعام لوگ اس کے ٹوئٹرہینڈل '@سی آرپی ایف مددگار' پر رابطہ کرسکتے ہیں۔ کسی بھی مشکل یا استحصال کے معاملے میں جلد ہی مدد کےلئے وہ 24 گھنٹے والے ٹول فری نمبر14411 یا 7082814411 پرایس ایم ایس کرسکتے ہیں۔

      واضح رہے کہ جموں وکشمیرکے پلوامہ میں جمعرات کوسی آرپی ایف کے قافلے پرہوئے دہشت گردانہ حملےمیں 40 جوان شہید ہوگئے۔ جوانوں کی اس شہادت کے بعد پورے ملک میں غم اورناراضگی کا ماحول ہے۔ اس درمیان ریاست کے کچھ لوگوں اورطلبا نے شکایت کی ہے انہیں ڈرایا اوردھمکایا جارہا ہے۔

      ایک سینئرافسرنےکہا کہ کوئی کشمیراس ٹول فری نمبرپرہمیں مدد کے لئے کال کرتا ہے تو اس پرفوری اقدامات کئےجائیں گے۔ انہوں نےکہا 'بھلے ہی دہشت گردانہ حملے میں ہم نے اپنے کئی ساتھی کھودیئے، لیکن جموں وکشمیرکے لوگوں اورخاص کرریاست کے باہررہ رہےلوگوں کی سیکورٹی بھی ہماری ذمہ داری ہے، ہم ہمیشہ ان کی مدد کےلئےکھڑے ہیں۔ وہیں اس درمیان کئی لوگ شہیدوں کے گھروالوں کی اقتصادی مدد کےلئے بھی آگےآئے ہیں، اس کےلئےمرکزی حکومت نے ہندوستان کے بہادرنے ایک ویب سائٹ لانچ کیا ہے، لیکن اس کے ذریعہ بھی کچھ لوگ دھوکہ دہی میں مصروف ہوگئے ہیں، جس کی وجہ سے وزارت داخلہ نے آج بیان جاری کیا ہے۔  یہ ویب سائٹ درج ذیل ہے۔





      مرکزی وزارت داخلہ کے آن لائن پورٹل کا انتظام دیکھ رہے افسران نے شہریوں سے 'ہندوستان کے ویر' کوچھوڑکرکسی دیگراسٹیج کے لئے شہید جوانوں کے لئے رقم نہیں دینے کی گزارش کی ہے۔ وزارت داخلہ نے کہا ہےکہ'ہندوستان کے ویرایک ٹرسٹ ہے، جس میں عوام مرکزی مسلح نیم فوجیوں - بی ایس ایف، سی آرپی ایف، سی آئی ایس ایف، آئی ٹی بی پی، این ڈی آرایف، این ایس جی، ایس ایس بی اورآسام رائفلس کے شہیدوں کے خاندانوں کومدد دے سکتی ہے، اس کا انتظام سی اے پی ایف کے ڈائریکٹرجنرل کی سمیتی کے ذریعہ کیا جاتا ہے'۔

      وزارت داخلہ نے یہ بھی کہا کہ'گزشتہ کچھ دنوں میں ویب سائٹ کے ذریعہ سے تعاون کرنے کی خواہشمند لوگوں کی زبردست ردعمل آیا ہے۔ ایم ایچ اے اس حمایت کے لئے شکرگزار ہے۔ حالانکہ بھاری ٹریفک کے سبب، کبھی کبھی ویب سائٹ کے سست ہوجانے کی اطلاع ملتی ہے'۔
      First published: