ہوم » نیوز » شمالی ہندوستان

لکھنؤ میں پرینکا گاندھی کی سیکورٹی میں کوئی چوک نہیں ہوئی: سی آر پی ایف

سی آر پی ایف نے جاری ایک بیان میں واضح کیا کہ گزشتہ 28 اور 29 دسمبر کو لکھنؤ دورہ کے دوران واڈرا سیکورٹی ایجنسی کو اطلاع دیئے بغیر مقرر پروگراموں سے ہٹ کر دوسرے مقامات پر بھی گئیں جس کی وجہ سے پہلے سے سیکورٹی میں تال میل (اے ایس ایل ) نہیں ہو سکا۔

  • UNI
  • Last Updated: Dec 30, 2019 05:36 PM IST
  • Share this:
  • author image
    NEWS18-Urdu
لکھنؤ میں پرینکا گاندھی کی سیکورٹی میں کوئی چوک نہیں ہوئی: سی آر پی ایف
پرینکا گاندھی

نئی دہلی۔ کانگریس جنرل سکریٹری پرینکا گاندھی واڈرا کے لکھنؤ دورے پر ہو رہی بیان بازی اور الزام تراشیوں کے بیچ سنٹرل ریزرو پولیس فورس (سی آر پی ایف) نے واضح کیا ہے کہ کانگریس لیڈر کی حفاظت میں کوئی چوک نہیں ہوئی ہے بلکہ خود انہوں نے سیکورٹی کے قوانین کی خلاف ورزی کی ہے۔ سی آر پی ایف نے جاری ایک بیان میں واضح کیا کہ گزشتہ 28 اور 29 دسمبر کو لکھنؤ دورہ کے دوران واڈرا سیکورٹی ایجنسی کو اطلاع دیئے بغیر مقرر پروگراموں سے ہٹ کر دوسرے مقامات پر بھی گئیں جس کی وجہ سے پہلے سے سیکورٹی میں تال میل (اے ایس ایل ) نہیں ہو سکا۔

اس کے علاوہ واڈرا نے ایسی گاڑی میں سفر کیا جو بلٹ پروف نہیں تھی اور اس میں نجی سیکورٹی اسسٹنٹ بھی نہیں تھے۔ یہی نہیں انہوں نے ایک اسکوٹی پر لفٹ لے کر بھی سفر کیا۔

سی آر پی ایف نے کہا ہے کہ اس کے باوجود کانگریس کی لیڈر کو مناسب سیکورٹی فراہم کی گئی۔ سی آر پی ایف نے کہا ہے کہ واڈرا کو ان کے ذریعہ سیکورٹی کے قوانین کی خلاف ورزی کی معلومات دے دی گئی ہے۔



بیان میں کہا گیا ہے کہ سی آر پی ایف کو واڈرا کے لکھنؤ دورے کی معلومات میں صرف اتنا بتایا گیا تھا کہ وہ لکھنؤ میں ریاستی کانگریس کے دفتر میں کانگریس کے یوم تاسیس سے متعلق ایک پروگرام میں شامل ہوں گی۔ اس پروگرام سے پہلے سے سیکورٹی میں تال میل یعنی اے ایس ایل کا عمل مکمل کرلیا گیا تھا۔ ان کے ذاتی عملے نے دیگر پروگراموں کے بارے میں سیکورٹی ایجنسی کو خبر نہیں دی تھی۔
First published: Dec 30, 2019 05:36 PM IST